کیا جہانگیرترین کی لندن میں نوازشریف سے ملاقات ہوئی؟

"دونوں کے درمیان براہ راست تو ملاقات فی الحال نہیں ہوئی لیکن کچھ شخصیات کے ذریعے ان دونوں کے درمیان نہ صرف رابطہ ہوا ہے بلکہ پیغام بھی بھیجے گئے ہیں۔”- رانا ثناء اللہ

نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے ن لیگی رہنما رانا ثناء اللہ نے جہانگیر خان ترین اور نواز شریف کے درمیان ہوئے رابطوں پر بات بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوازشریف اور جہانگیرترین کے درمیان براہ راست تو ملاقات فی الحال نہیں ہوئی لیکن کچھ شخصیات کے ذریعے ان دونوں کے درمیان نہ صرف رابطہ ہوا ہے بلکہ پیغام بھی بھیجے گئے ہیں۔

رانا ثناء اللہ نے مزید کہا کہ نواز شریف اس وقت ملک سے باہر اپنا علاج تو کروا رہے ہیں لیکن ساتھ ساتھ اس حکومت کا علاج بھی کر رہے ہیں۔

رانا ثنا اللہ کا کہنا تھا ہے کہ اس حکومت نے اپنے ساتھ اتنا کچھ کرلیا ہے کہ اپوزیشن کے خلاف تحریک چلانے کے لئے بہت مدد مل چکی ہے۔ اتنے ایشوز کھٹے ہو چکے ہیں کہ اپوزیشن اس کے خلاف تحریک چلا سکتی ہے۔

مریم نواز سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے رانا ثناء اللہ نے کہا کہ جب پارٹی قیادت چاہے گی مریم نواز ایکٹو ہوجائیں گی۔

دوسری جانب جہانگیرترین کے ترجمان نے کہا ہے کہ جھوٹوں کے آئی جی رانا ثناء اللّه نے انٹرویو کے دوران پہلے جہانگیر ترین اور نواز شریف میں ملاقات کی تصدیق یا تردید کرنے سے انکار کیا۔ پھر رانا عظیم کے اصرار پر یہ پھلجھڑی چھوڑ دی کہ ملاقات نہیں ہوئی لیکن کچھ لوگوں کی وساطت سے رابطہ ہوا

جہانگیرترین کے ترجمان کے مطابق نہ جہانگیر ترین نے نواز شریف سے پہلے رابطہ/ملاقات کی کوشش کی ہے اور نہ آئندہ ایسا کرنے کا کوئی ارادہ ہے۔ آدھا سچ دکھانا، سنسنی پھیلانا اور بے پر کی اڑانا میڈیا کا وطیرہ بن چکا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >