میرا دوست بیرون ملک سے ڈاکے کے پیسے مجھے بھیجے وہ غیر قانونی نہیں،شاہدخاقان

نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ آپ مجھے پراسیکیوٹ نہیں کرسکتے، پھر آپکو پورے پاکستان کو پراسیکیوٹ کرنا پڑے گا۔

شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ آپ قانون لاگو کردیں کہ پبلک آفس ہولڈر باہر سے پیسے نہیں منگواسکتا، وہ ٹی ٹی نہیں لاسکتا،اسکے لئے ٹی ٹی ہی غیرقانونی کردیں۔ قانون یہ ہے کہ باہر سے جو پیسہ پاکستان آتا ہے وہ جائز ہے، ہم نے اسکو لمٹ کیا۔آپ باہر سے آنیوالے پیسے کو غیرقانونی قرار دیدیں

جس پر کاشف عباسی نے کہا کہ توقع تو یہی ہے کہ آپ جواب دیں گے کہ پیسہ کہاں سے آیا

جس پر شاہد خاقان عباسی نے جواب دیا کہ میں جواب دیدوں گا کہ مجھے میرے دوست نے بھیجے ہیں، وہ غیرقانونی نہیں ہوتا، اگر وہ اس ملک میں ڈاکہ ڈالتا ہے اور مجھے پیسے بھیجتا ہے تو یہ غیرقانونی نہیں ہوتا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ اگر حکومت اپنا رویہ درست کرلے تو ہم اس حکومت کو پانچ سال دینے کو بھی تیار ہیں، اے پی سی کا مقصد حکومت گرانا نہیں ہے، حکومت جن لوگوں کو پاکستان لیکر آئی ، انہیں کو ذلیل ورسوا کرکے واپس بھیج دیا۔

  • پہلے میں پاکستان سے پیسے لوٹتا ہوں اور بھیڑ بھیجتا ہو تو وہ وہاں قانونی ہو جاتے ہیں پھر میرا دوست وہ لوٹی ہوئی دولت واپس پاکستان لاتا ہے تو وہ بھی غیر قانونی نہیں …. پر جناب اسی کو مہذب دینا والے منی لانڈرنگ کہتے ہیں

  • A most absurd argument.

    This man was PM and he is coming up with ridiculously unethical take on money laundering.

    In 1992, Nawaz Sharif passed Economic Protection Act that legalised money laundering from Pakistan.

    Last, is it OK for a former PM to say, financial crimes in another country are fine?


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >