وزیراعلی عثمان بزداراور پرویزالٰہی کے درمیان ملاقات ملتوی ہونے کی اندرونی کہانی

وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار اور ق لیگ کے وفد کے درمیان ملاقات اچانک ملتوی کردی گئی۔۔ اصل کہانی کیا ہے؟ وجہ جانئے

گزشتہ روز وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اور چوہدری پرویز الٰہی کی قیادت میں ق لیگ کے وفد کی وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات طے تھی، ملاقات کیلئے پہلے دوپہر 3 بجے، پھر 4 بجے اور پھر شام 5 بجے کا وقت مقرر کیا گیا اور پھر اچانک ملاقات ملتوی کردی گئی۔نجی ٹی وی چینل کے مطابق ملاقات میں ایجنڈا اور شیڈول طے نہ ہوسکا۔

نجی ٹی وی چینل نے اپنے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ ملاقات وزیراعظم عمران خان کا فون آنے کے بعد ملتوی کی گئی اور وزیراعظم کی جانب سے وزیراعلیٰ پنجاب کو اگلے پیغام تک ملاقات کا شیڈول طے نہ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ایک اور نجی چینل کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ ق لیگ کو کچھ مطالبات پورے نہ ہونے پر تحفظات ہیں اور پرویزالٰہی کی عثمان بزدار سے ملاقات کا مقصد یہی مطالبات ہیں۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل ق لیگ نے ہنگامی اجلاس طلب کیا تھاجس میں حکومتی اتحادی پر بات کی گئی تھی۔اجلاس میں یہ ایشو اٹھایا گیا کہ حکومت سے اتحاد تو ہے لیکن حکومت ہم سے مشاورت نہیں کرتی اور جب حکومت کوئی اہم قدم اٹھائے نہ ہم سے رابطہ کیا جاتا ہے اور نہ ہی ہمیں اعتماد میں لیا جاتا ہے۔

مسلم لیگ ق کے اجلاس میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا بھرپور ساتھ دینے کا فیصلہ کیا گیا اور یہ کہا گیا اگر عثمان بزدار کو تبدیل کیا گیا تو پرویز الٰہی انکے متبادل ہونے چاہئیں جبکہ آئندہ اجلاس میں ایم پی ایز کو بھی مدعو کر کے معاملات سامنے رکھےجائیں۔

خیال رہے کہ چوہدری برادران نیب کیسز کی وجہ سے بھی پریشان ہیں اور اس ر حکومت سے بھی شکوہ کرتے نظر آتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >