شراب لائسنس کے اجراء میں کون کون ملوث؟ کہانی سامنے آگئی

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار پر شراب لائسنس کے اجراکا الزام،، لیکن اس معاملے میں کون کون ملوث ہے، راز فاش ہوگیا۔۔

روزنامہ جنگ کی رپورٹ کے مطابق لاہور کے ہوٹل کو شراب کے لائسنس کے اجرا کے حوالے سے سرکاری دستاویزات میں ظاہر کیا گیا ہے کہ اس داستان میں کون ملوث ہے۔

ایکسائز و ٹیکسیشن پنجاب کے ڈائریکٹر جنرل اکرم اشرف گوندل جو وزیر اعلیٰ پنجاب کے خلاف نیب کے وعدہ معاف گواہ بن گئے ہیں وہ انہیں پرنسپل سیکرٹری اور چیف سیکرٹری کے ذریعہ وزیر اعلیٰ پنجاب کو منظوری کے لئے سمریاں بھیج کر ملوث کرتے رہے۔

روزنامہ جنگ کے مطابق سرکاری کاغذات سے ظاہر ہو تا ہے وزیر اعلیٰ نے کوئی بات ضبط تحریر نہ لا کر مذکورہ سمریز سے خود کو فاصلے پر رکھا، وعدہ معاف گواہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ نے نیب کو بتایا کہ بزدار کے دفتر سے نصف درجن بار لائسنس کے اجرا کے لئے کہا گیا۔

وزیراعلیٰ نے گوندل کی جانب سے بھیجی گئی دو سمریز کا صاف صاف جواب نہیں دیا،اس وقت کے پرنسپل سیکریٹری ڈاکٹر راحیل صدیقی اور چیف سیکریٹری نے سمریاں اس ہدایت کے ساتھ واپس کر دیں کہ لائسنس کے اجرا کے معاملے کو مناسب فورم پر پالیسی اور قانون کے مطابق نمٹا جائے،ایک گر بچن سنگھ جو یونی کارن پریسٹیج ہوٹل کا ڈائریکٹر یا افسر نہیں، لائسنس کے لئے دو درخواست گزاروں میں شامل تھا اسے لائسنس جاری کیا گیا۔

  • Check the excise and taxation officer background might be he is friend or part of noni leag mafias and they make a plan Buzdar involvement. I don’t know which institute people can trust because majority not performing well ? and how we can improve performance of our institutions so people can trust . If Buzdar did anything wrong PTI not supporting at all .

  • Ess DG Gondol ke G per jotay maray jain Sub pata chal jay ga. jab pakray janay ka waqat aya tu Gowaha ban geya ha. Licence detay waqat Keyoon ne bataya ? Jab pakray jatay hain tu zameer jag jata ha. Bc Lanti kardar.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >