مولانا طارق جمیل کے نزدیک موٹروے زیادتی کیسز کی وجہ کیا ہے؟

موٹروے زیادتی جیسے کیسز کی وجہ کیا ہے؟مولانا طارق جمیل کا چند سیکنڈ کا کلپ شئیر کرکے لوگوں کو گمراہ کرنے کی کوشش

موٹروے زیادتی جیسے کیسز کی وجہ کیا ہے؟ مولانا طارق جمیل صاحب نے اپنی 13 منٹ کی ویڈیو میں اس پر کھل کر روشنی ڈالی لیکن کچھ افراد جو اپنے آپکو روشن خیال کہتے ہیں وہ 27 سیکنڈ کا کلپ نکال کر لے آئے جس میں وہ یہ تاثر دینے کی کوشش کررہے ہیں کہ مولانا صاحب کے نزدیک موٹروے جیسے سانحات کا سبب مخلوط نظام تعلیم ہے۔

ایک سوشل میڈیا اکاؤنٹ نے مولانا طارق جمیل کا 27 سیکنڈ کا ایک کلپ شئیر کیا جس میں ممتاز عالم دین مولانا طارق جمیل نے کہا کہ اس کی وجہ ہمارے وہ تعلیمی ادارے ہیں جہاں لڑکے اور لڑکیاں اکٹھے تعلیم حاصل کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان اداروں میں کردار سازی پر توجہ نہیں دی، مولانا نے کہا کہ مخلوط نظام تعلیم نے بے حیائی کو پروان چڑھایا ہے۔

ہمارے کالجوں میں لڑے، لڑکیاں اکٹھے پڑھتے ہیں، جب پٹرول اور آگ اکٹھی ہوگی تو آگ نہ لگے یہ کیسے ہوگا، مخلوط تعلیم نے بے حیائی کو پھیلایا ہے اس میں کوئی شک نہیں، مولانا طارق جمیل

Posted by NayaDaur on Friday, September 18, 2020

مولانا طارق جمیل نے کہا کہ اگر آگ اور پٹرول کو ایک جگہ اکٹھا رکھنے کی کوشش کی جائے تو یہ کیسے ممکن ہے کہ اس جگہ پر آگ نہ لگے۔

لیکن مولانا طارق جمیل صاحب نے اس موضوع پر 13 منٹ گفتگو کی ، اس کلپ میں مولانا طارق جمیل نے عدلیہ اور قانون پر بھی بات کی کہ اسے بدلنے کی ضرورت ہے، اسکے علاوہ قوم کی اخلاقی پستی، دین اسلام سے دوری، بے راہروی پر بھی بات کی۔ انہوں نے قانون سازوں پر بھی تنقید کی کہ جن کا کام قانون سازی ہے وہ آپس میں ہی لڑتے رہتے ہیں۔

اپنی 13 منٹ کی ویڈیو میں مولانا طارق جمیل قانونی موشگافیوں پر بھی بات کرتے ہیں عدالتوں میں ہونیوالے ظلم پر بھی بات کرتے ہیں کہ کیسے مجرم سخت سزا سے بچ نکلتے ہیں۔ مولانا طارق جمیل یہ بھی کہتے ہیں کہ ایسے واقعات کی روک تھام کا حل قانون کی بالادستی ہے اور قانون کی بالادستی قائم کرنا حکومت وقت، عدلیہ، پولیس کا کام ہے۔

مولانا طارق جمیل صاحب کہتے ہیں کہ بچوں کا پہلا سکول والدین ہوتے ہیں، وہ بچوں کی تربیت سے غافل ہیں، وہ اسی پر خوش ہیں کہ بچے سکول جائیں، واپس آئیں ٹیوشن پڑھیں۔ کھانا کھائیں اور سوجائیں ۔ ہمارے سکولز کاروباری ادارے ہیں ، تربیت ساز نہیں۔

یاد رہے کہ موٹروے پر کچھ روز قبل خاتون کو اس کے بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور ملزمان جاتے ہوئے خاتون سے لوٹ مار کر کے فرار ہوئے گئے اس کیس کے مرکزی ملزموں کو تاحال گرفتار نہیں کیا جا سکا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>