شہبازگل نے خرم دستگیر کے والد کے کونسے واقعہ کا تذکرہ کیا جس پر وہ غصہ میں آگئے؟

ڈاکٹر شہباز گل اور خرم دستگیر کے درمیان تلخ کلامی۔۔ خرم دستگیر کے والد کا قصہ کیا ہے جس کا شہبازگل کے تذکرہ کرنے پر خرم دستگیر غصے میں آگئے؟

گزشتہ روز ڈاکٹر شہبازگل اور خرم دستگیر خان کے درمیان معید پیرزادہ کے شو میں تلخ کلامی ہوئی۔۔ ڈاکٹر شہباز گل نے خرم دستگیر خان کے مبینہ غیرقانونی پٹرول پمپ کا تذکرہ چھیڑا تو خرم دستگیر خان ذاتیات پر اتر آئے اور کہا کہ ان پر تو خواتین کر جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزامات ہیں یونیورسٹی میں۔

جس پر ڈاکٹر شہبازگل نے کہا کہ میں نے تو ذاتیات کی بات نہیں کی، اگر ایسی بات ہے تو ضرور شروع کریں ، جنسی ہراسگی تو آپکے گھر سے شروع ہوئی ہے۔ میں ذاتیات کی بات کروں گا تو جنسی ہراسگی کے کیسز آپکے اور آپکے لیڈروں کے گھر سے نکل آئیں گے۔میں نے آپکے پٹرول پمپ پر بات کی ہے ، میں ے تو کوئی ذاتی بات نہیں کی۔

ڈاکٹر شہباز گل نے مزید کہا کہ مجھے تو سب پتہ ہے کہ کس کی شادی کب ہوئی؟ بچے کب پیدا ہوئے؟اگر آپ ذاتیات پہ بات کریں گے تو میں آپکے والد کے بھی کپڑے اتاردوں گا جو کتیا کو ساتھ لیکر سیاست کرتے تھے۔۔ جس پر خرم دستگیر غصے میں آگئے اور کہا کہ بند کریں یہ باتیں۔۔

ڈاکٹر شہباز گل نے واقعہ سنانا شروع کیا تو 92 نیوز نے ڈاکٹر شہبازگل کی آواز میوٹ کردی۔۔

اس پر سوشل میڈیا صارفین سوال اٹھارہے ہیں کہ خرم دستگیر کےو الد اور کتیا کا قصہ کیا ہے؟ یہ واقعہ ایوب خان کے صدارتی الیکشن کا ہے جب محترمہ فا طمہ جناح ایوب خان کے مقابلے میں الیکشن لڑرہی تھیں یہ واقعہ ڈاکٹر طاہرالقادری اور ہارون رشید نے بھی شئیر کیا تھا۔

طاہرالقادری اور ہارون رشید کے مطابق واقعہ کچھ یوں ہے کہ جب ایوب خان کا صدارتی الیکشن ہورہا تھا تب خرم دستگیر خان کے والد ایوب خان کی سپورٹ کررہے تھے، محترمہ فاطمہ جناح کا انتخابی نشان لالٹین تھا۔

طاہرالقادری کے مطابق خرم دستگیر کے والد نے ایک کتیا کے گلے میں لالٹین ڈالی اور اسے گلیوں سے گھماتا رہا اور اس جانور کو فاطمہ جناح کہہ کر بلاتا رہا اور کہتا رہا کہ دیکھو فاطمہ جناح الیکشن کمپین کررہی ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل فرخ حبیب بھی اس واقعے کا تذکرہ ایک شو میں کرچکے ہیں جس میں خرم دستگیر خان بھی شریک تھے، خرم دستگیر خان نے واقعے پر اینکر سے شدید احتجاج کیا

 

 

  • اب تو چاہیے اس کے گلےمیں ایک مرا ہوا کتالٹکا کے اس کو گلیوں میں گھمایا جائے پر یہ مرے ہوے کتے کی بے عزتی ہو گی۔

    ُُ

  • yeh log bewqoofon ka tola hey- mujhey yad hey sabira aor shatila key camps meyn qatıl e am per islamabad hotel mey eilk meeting thee-lanatulla aleh Ziaul haq key yeh wazeer they -dastgeer sahib ney pooret hal ko quadiAzam ki shairi sunaiy thee aor poora hal qeqhey laga reha reha tha.

  • اسکا باپ ایک حرام زادہ اور ایک طوئف کا ناجائز بیٹا ہے اور یہ خاندانی کنجر سپلائر تھا ہیں یہ کشمیری بٹ مگر سپلائی کے پیشے کی وجہ سے لوگ انکو خاں کہتے ہیں اسکاحرام زادہ باپ مدَر ملت کی توہین کرنے والا خنزیر اور طوائف کا ناپاک خون ہے اسی واسطے اس حرامزادے خنزیر زادے نے مادر ملت کی توہین کی تھی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >