معید یوسف کے انٹرویو کو کوریج دینے پر حامد میر کی میڈیا اور پیمرا پر تنقید

قومی سلامتی کے مشیر معید یوسف کے بھارتی چینل پر انٹرویو کے کلپس چلانا اور کوریج دینا صحافی حامد میر کو ناگوار گزرا۔اس انٹرویو میں معید یوسف نے بھارتی دہشتگردی، دہشتگردوں کی پشت پناہی اور کشمیریوں پر مظالم کو ایکسپوز کیا تھا۔

بھارتی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے معید یوسف کا کہنا تھا کہ پاکستان کے پاس بھارت کی طرف سے دہشت گردوں کی مالی امداد کے ثبوت ہیں۔اے پی ایس پشاور حملے کا ماسٹر مائنڈ حملے کے وقت بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ سے رابطے میں تھا۔پاکستان کے پاس بھارت سے کی گئی فون کالز کے ثبوت بھی ہیں۔

معید یوسف نے مزید کہا تھا کہ ’را‘ نے ایک پڑوسی ملک میں سفارت خانے کے ذریعے چینی قونصلیٹ، گوادر فائیو اسٹار ہوٹل اور پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر کراچی میں حملہ کروایا۔چینی قونصلیٹ حملے میں ملوث اسلم اچھو کے پرائمس اسپتال نیو دہلی میں علاج کے ثبوت موجود ہیں۔سمجھوتا ایکسپریس جیسی دہشت گردی میں ملوث ہندو پرست دہشت گردوں کو بھارتی عدالتوں نے رہا کر دیا۔

معید یوسف نے بھارتی چینل پر بیٹھ کر ایک بڑے اینکر کے سامنے بھارت کی دہشتگردی کے شواہد سامنے رکھے جس پر بھارتی اینکر کچھ نہ بول پایا لیکن حامد میر اس انٹرویو پر بول پڑے اور کہا کہ پیمرا نے پاکستانی چینلز پر بھارتی خبروں سمیت خبروں پر پابندی عائد کررکھی ہے۔

حامد میر کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی چینلز بھارتی تجزیہ کاروں یا سیاستدانوں کو اپنے شوز میں مدعو نہیں کرسکتے ہیں لیکن معید یوسف نے کرن تھاپڑ کو انٹرویو دیا اور پاکستانی میڈیا نے اسے بڑے فخریہ انداز سے چلایا

دوسری جانب حامد میر خود انڈین مواد پر پابندی کے باوجود پیمرا قوانین کی خلاف ورزی کرتے رہے۔ پیمرا نے 6 مارچ 2019 کو بھارتی مواد پر پابندی لگائی تو حامد میر نے خلاف ورزی کرتے ہوئے بھارتی اینکر جیوتی ملہوترا کو اپنے انٹرویو میں مدعو کیا۔

حامد میر کے اس ٹویٹ پر سوشل میڈیا صارفین نے سخت ردعمل دیا اور کہا کہ بھارت کو ایکسپوز کرنے پر آپکو کیوں تکلیف ہورہی ہے؟ کیا آپ کو معید یوسف کا بھارت کا اصل چہرہ ایکسپوز کرنا برا لگا؟

سوشل میڈیا صارفین کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس بندے نے صحافت کے نام پر جتنا ملک کو نقصان پہنچایا ھے،وہ بڑے بڑے دشمن بھی نہ پہنچا سکے۔ ہر کرپٹ و ملک دشمن کو یہ سپورٹ کرتا آیا ھے،چاہے وہ ماما قدیر ھو،نواز و زرداری ہو یا انڈیا و اسرائیل کا پروپیگنڈا ۔

سوشل میڈیا صارفین کا یہ بھی کہنا تھا کہ حامد میر کو حکومت پر تنقید کا جواز چاہئے۔ حامد میر نے یہ نہیں دیکھا کہ کیسے بھارتی ددہشتگردی کو دنیا کے سامنے لایا گیا بلکہ یہ دیکھا کہ معید یوسف کے انٹرویو کے سیاق وسباق کیوں پاکستانی میڈیا پر چلے؟

دلچسپ امر یہ ہے کہ خود حامد میر کا چینل بھی اس انٹرویو کو کوریج دیتا رہا اور گزشتہ رات اس پر پروگرام کرتا رہا۔

  • حامد میر سی آئی اے کا ایجنٹ رہ چکا ہے لوگوں کا حافظہ بڑا کمزور ہے میجر جنرل آصف غفور نے ایک مرتبہ ٹی وی پر بتایا تھا کہ انہوں نے ایک فون کال پکڑی ہے جو پاکستانی صحافی اور بھارتی نیٹ ورک کا حصہ ہے جس میں دہشتگردی کا پلان ڈسکس ہوا ہے بھلا وہ صحافی کون ہو سکتا ہے ؟ وہ یہ ہی حمد میر تھا پہلے میرا شک سلیم صافی پر تھا کیونکہ صافی کسی وقت طالبانوں کے ساتھ رہتا تھا مشرف دور میں اسے تھوڑی شہرت ملی وہ بھی طالبانوں کی بدولت لیکن اب مجھے لگتا ہے وہ شخص حامد میر ہی ہوگا☝

  • حامد میر کا دماغی حالت خراب ہوگئی ھے بڑے افسوس سے کہنا پڑھتا ھے کہ پاکستان کے نام نہاد صحافیوں کا ٹولہ پاکستان کا حرام خور میڈیا اور حرام خور صحافیوں کا ٹولہ پاکستان کا سب سے بڑا دشمن ھے اس میں کوئی شک نہیں ھے

  • پاکستانی فوج نے دہشتگردی کی وجہ سے پوری ساؤتھ ایسیا میں 74 سالوں سے امن نھے ہونی دیا. پاکستان نے دہشتگردی کے وجہ سے جیش ای محمد، لشکر طیبہ، حرکت ال مجھائدین، ال بدر اور ال شاہین جسی دہشتگرد تنظیمیں بنائیں اور پاکستان اپنے ان کرتوتوں کی وجہ سے فیٹف کے ہٹ لسٹ میں ہے, اور اب الزام اوروں پر لگا را ہے، بلوچوں سندھیوں اور پشتونو کے قاتل ہے یہ فوج. پاکستان میں یہ سب واقیات یہ نام نہاد اسٹیبلشمنٹ کرواتی ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >