پنجابی فلموں کے بھارتی اداکار ہربی سانگھا عمران خان اور مودی میں فرق بتاتے ہوئے

پنجابی فلموں کے بھارتی اداکار ہربی سانگھا نے مودی کو آڑے ہاتھوں لے لیا اور پاکستانی وزیراعظم عمران خان اور نریندرمودی میں فرق بتادیا

مودی سرکار نے نئے زرعی قوانین متعارف کردئیے ہیں جس بھارتی پنجاب اور دیگر علاقوں کے کسانون نے ان قوانین کو کسان مخالف قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کسانوں کے لیے موت کا پروانہ ثابت ہوں گے اور اس پر بھارت میں احتجاج جاری ہے۔ بھارتی کسانوں نے دہلی کی طرف مارچ کرنے کا بھی اعلان کیا ہے کہ جب تک مودی سرکار یہ قانون واپس نہیں لے گی، ہم نہیں جائیں گے۔

اسکے لئے کسانوں نے دہلی پہنچنے کی کوشش کی تو انکا پولیس سے تصادم ہوا جس میں کئی کسان زخمی ہوئے۔ اس پر کسانوں نے دہلی، ہریانہ بارڈر پر دھرنا دیدیا اور اس دھرنے سے بھارتی پنجاب کے اداکار اور سماجی رہنما خطاب کررہے ہیں۔ اس خطاب میں پنجابی فلموں کے بھارتی مزاحیہ اداکار ہربی سانگھا نے مودی کو خوب آڑے ہاتھوں لیا اور سخت الفاظ استعمال کئے۔

ہربی سانگھا کا کہنا تھا کہ ایک عمران خان ہے جو پاکستان کا وزیراعظم ہے، دوسرا ہمارے ملک کا وزیراعظم مودی ہے۔ دونوں میں فرق کیا ہے؟ عمران خان کپ جیت کر وزیراعظم بنا ہے اور یہ ہمارے والا سالا کپ دھو کر وزیراعظم بنا ہے۔ جو بندہ کپ دھونے والا ہو اس سے آپ کیا امید کرسکتے ہیں؟

ہربی سانگھا نے مزید کہا کہ کسان مزدور ایکتا زندہ باد۔۔ میں آپکو سیلیوٹ کرتا ہوں اور یہ سیلیوٹ اس مودی کے منہ پر بھی مارتا ہوں کہ ہم نے اس قسم کا باندر وزیراعظم چن لیا ہے۔

ہربی سانگھا نے ایک چٹکلہ سناتے ہوئے کہا کہ ایک منتری کا بیٹا جوان ہوگیا تو گھر والوں کو فکر پڑگئی کہ وہ بڑا ہوکر کیا بنے گا؟ منتری صاحب نے گھروالوں سے کہا کہ میں اپنے بیٹے کا پتہ چلالوں گا کہ وہ کیا بننا چاہتا ہے۔ منتری صاحب نے ایک کمرے میں پستول ، دھرم گرنتھ اور نوٹوں کی گڈی رکھ دی۔ منتری صاحب نے کہا کہ اگر یہ پستول کو ہاتھ ڈالے گا تو یہ کریمنل بنے گا، اگر اس نے دھرم گرنتھ پکڑ لیا تو یہ نیک اور سماج سیوک ہوگا۔ اگر اس نے نوٹوں کی گڈی پکڑلی تو یہ بہت تگڑا بیوپاری بنے گا۔

کمرے میں رکھ کر نوجوان کو کسی بہانے اندر بھیج دیا گیا اور گھر والے چھپ کر دیکھنے لگے ۔ اس نے آتے ہی پستول پر ہاتھ ڈالا تو گھر والون نے کہا کہ یہ تو کریمنل بنے گا، پھر اس نے نوٹوں کی گڈی پکڑکر نیفے میں ڈالی تو گھر والوں نے کہا کہ یہ تگڑا بیوپاری بنے گا، پھر اس نے دھرم گرنتھ پکڑ کر جیب میں ڈالا تو ساراخاندان پریشان ہوگیا کہ یہ کیا ہوا؟ وہ لیڈر شرمندہ ہوکر بولا کہ یہ باپ پہ گیا ہے۔

ہربی سانگھا نے مودی کو وارننگ دی اور کہا کہ ہم ٹھنڈے پانی میں مولیاں لگاتے ہیں، تم کس باغ کی مولی ہو؟ تم توپیں ٹینک لے آؤ، ہم اسکے سامنے بھی کھڑے ہوجائیں گے لیکن یہ قانون واپس کروانا ہوں گے۔یہ ملک کیا اسکے باپ کی جاگیر ہے؟


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >