کیا واقعی شاہ سلمان نے نواز شریف کو سعودی عرب میں قیام کی اجازت دیدی؟

وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی طاہر اشرفی کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کی جانب سے نواز شریف کو اپنےملک میں قیام کی کوئی دعوت نہیں دی گئی ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے بین المذاہب ہم آہنگی کا کہنا ہے کہ "مستند ذرائع سے تصدیق ہوئی ہے کہ سعودی عرب کے شاہ سلمان نے نواز شریف کو اپنے ملک دورے پر مدعو نہیں کیا ہے”۔

مولانا طاہر اشرفی کی جانب سے یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا جب یہ افواہیں گردش میں تھیں کہ سعودی عرب کی جانب سے لندن میں مقیم سابق وزیراعظم نواز شریف کو یہ آفر کی گئی ہے کہ اگر انہیں برطانیہ میں کسی بھی قسم کی پریشانی کا سامنا ہے تو وہ سعودی عرب منتقل ہوجائیں۔

طاہر اشرفی نے مزید کہا کہ سعودی عرب کی جانب سے کبھی بھی پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کی گئی ہے، پاکستان کے تمام عرب ممالک کے ساتھ تعلقات مختلف معاملات میں تعاون کےساتھ مزید بہتر ہوجائیں گے۔

معاو ن خصوصی نے مولانا فضل الرحمان پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ ، وہ ہمارے لیے باعث احترام ہیں ہم انہیں حلوہ کھلائیں گے، ان کیلئے پیزا بھی حاضر ہے مگر اسلام آباد کا اقتدار ابھی مولانا سے دور ہے۔

واضح رہے کہ اکتوبر 2019 سے لندن میں مقیم پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کے پاسپورٹ کی میعاد 16 فروری کو ختم ہونے کی اطلاعات سامنے آرہی ہیں، تحریک انصاف کی حکومت نے اعلان کیا ہے کہ وہ نواز شریف کے پاسپورٹ کو ری نیو نہیں کیا جائے گا تاکہ عدالتوں سے سزا یافتہ نواز شریف کو وطن واپس آنے پر مجبور کیا جاسکے۔

  • طاہر اشرفی نے مزید کہا کہ سعودی عرب کی جانب سے کبھی بھی پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کی گئی ہے،
    Kazzaab.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >