پی ٹی آئی کو اسرائیلی کمپنی سے کیسے فنڈنگ ہوئی؟ جانیے کمپنی کے ملازم کی زبانی

پی ٹی آئی کو اسرائیلی کمپنی "بیری سی شنیپس” سے کیسے فنڈنگ ہوئی؟ جانئے کمپنی کے ملازم کی زبانی

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے باہر پی ڈی ایم کے جلسے میں پاکستان تحریک انصاف کو بھارت ، اسرائیل اور امریکہ سے فنڈنگ ملنے کا ذکر کیا تھا، بعد ازاں پی ٹی آئی کو اسرائیلی کمپنی "بیری سی شنیپس” سے کیسے فنڈنگ ہوئی؟ کمپنی کے ملازم نے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی کر دیا۔

اسرائیلی کمپنی "بیری سی شنیپس” کے پاکستانی نژاد ملازم جو اس وقت امریکہ میں مقیم ہیں آصف چوہدری کا سچائی بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ حقیقت میں پی ٹی آئی کو کبھی بھی اسرائیلی کمپنی "بیری سی شنیپس” سے ایک روپے کی فنڈنگ نہیں ہوئی، کمپنی کو نہ تو پی ٹی آئی اور نہ ہی عمران خان کا علم ہے۔

انہوں نے بتایا کہ 2010 میں مینار پاکستان پر ہونے والے پی ٹی آئی کے جلسے کے بعد اوورسیز پاکستانیوں میں ایک امید پیدا ہوئی تھی، جس کے بعد 2012 میں عمران خان امریکہ میں تشریف لائے تھے اور پی ٹی آئی کی جانب سے یہاں پر باقاعدہ پروگرام منعقد کیا گیا تھا جس میں، میں نے بھی اپنے دوستوں سے یہ شرکت کی تھی اور اس موقعے پر میں نے صرف دو سو ڈالر کا چیک بطور فنڈ دیا تھا۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے آصف چوہدری کا ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ جو میں نے دو سو ڈالر کا چیک بطور فنڈ کیا تھا وہ ہماری کمپنی کا چکا تھا جس پر کمپنی کی ایک اعلیٰ عہدیدار کے سائن بھی موجود تھے، لیکن چیک کے اوپر باقاعدہ میں نے اپنا نام لکھ کر دیا تھا کہ میں اپنی طرف سے پی ٹی آئی کو 200 ڈالر بطور فنڈ دے رہا ہوں جبکہ اس ٹرانزیکشن میں کمپنی کا اکاؤنٹ استعمال ہونا تھا جس کی وجہ سے ہماری کمپنی کا نام سامنے آرہا ہے۔

آصف چوہدری کا پاکستان میں آکر سکروٹنی کمیٹی کے سامنے پیش ہو کر گواہی دینے کے سوال کے جواب پر کہنا تھا کہ انہیں جب بھی الیکشن کمیشن یا سکروٹنی کمیٹی گواہی کے لئے طلب کرے گی تو وہ پاکستان آ کر اور ویڈیو لنک کے ذریعے بھی اپنا بیان ریکارڈ کروانے کے لیے تیار ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >