وزیراعلی سندھ اور علی زیدی میں تلخ کلامی، علی زیدی کا اجلاس سے واک آؤٹ

 

کراچی میں ایک اجلاس کے دوران وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ اور وفاقی وزیر علی زیدی کے درمیان تلخ کلامی ہوئی جس کے بعد علی زیدی غصے میں آکر اجلاس سے چلے گئے۔

نجی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کراچی ٹرانسفرمیشن پلان کے حوالے سے ایک اعلی سطح کا اجلاس ہوا جس میں صوبائی اور وفاقی قیادت نے شرکت کی، اجلاس کے دوران کسی معاملے پر وزیراعلی سندھ اور وفاقی وزیرعلی زیدی کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔

رپورٹ کے مطابق اجلاس کے دوران علی زیدی کے وزیراعلی سے سوال کیا کہ کراچی بلڈنگ اتھارٹی اور کراچی سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کا قیام کب تک ممکن ہوگا۔

وزیراعلی سندھ نے وفاقی وزیر کے اس سوال پر جواب دیتے ہوئے کہا کہ اس معاملے میں کام ہورہا ہے، ان کے اس جواب پروفاقی وزیر نے دوبارہ سوال پوچھا اور کہا کہ یہ معاملہ کب تک مکمل ہوگا تاریخ بتائیں۔

دوسری بار سوال پوچھے جانے پر وزیراعلی سندھ غصے میں آگئے اور انہوں نے تلخ لہجے میں جواب دیتے ہوئے کہا کہ میں آ پ کو جوابدہ نہیں ہوں۔

یہ جواب اور لہجہ شائد وفاقی وزیرعلی زیدی کو پسند نہ آیا اور انہوں نے اپنی فائلیں سمیٹتے ہوئے اجلاس سے واک آؤٹ کردیا۔
واضح رہے کہ گزشتہ روز ہونے والے وفاقی کابینہ اجلاس میں بھی وفاقی وزیر علی زیدی کے کابینہ کے سامنے یہ معاملہ رکھتے ہوئے کہا تھا کہ سندھ حکومت عوامی مسائل پر اختیارات کی منتقلی کیلئے سنجیدہ نظر نہیں آرہی۔

  • بدقسمتی سے پیپلز پارٹی آپنی پارٹی اور سندھ کے تباہی کر رہی ھے پیپلز پارٹی سمجھتی ھے کہ سندھ کے عوام ساری عمر پیپلز پارٹی کے غلام رہیں گے سندھ کی عوام اب مزید دھوکے برداشت نہیں کرے گی آئیندہ الیکشنز میں سندھ کی عوام ووٹ صرف اور صرف کارکردگی کی بنیاد پر دے گی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >