”احسن اقبال جیل کے اندر بھی صبح سوٹ پہن کر ٹائی لگا کر بیٹھ جاتے تھے“

احسن اقبال جیل کے اندر بھی صبح سوٹ پہن کر ٹائی لگا کر بیٹھ جاتے تھے، پتہ نہیں کیوں، مفتاح اسماعیل

نجی ٹی وی چینل پر اینکر شہزاد اقبال نے مفتاح اسماعیل سے سوال کیا کہ مریم اورنگزیب اور حناپرویز بٹ میں سے کون زیادہ فیشن ایبل ہے؟ کس کا پہناوا زیادہ اچھا ہے؟

شہزاداقبال کے اس سوال کو مفتاح اسماعیل نے بڑے خوبصورت طریقے سے ہینڈل کیا اور کہا کہ پاکستان میں خواتین کا سیاست میں ہونا بہت مشکل ہے، آپ مجھ سے انکا نہ پوچھیں کسی مرد کا پوچھیں۔ اگر آپ مجھ سے احسن اقبال اور شاہد خاقان عباسی سے متعلق سوال کرتے کہ کون ویل ڈریس ہے تو میں جواب دیتا۔

شہزاداقبال نے کہا کہ آپ تو کہتے ہیں کہ شاہدخاقان عباسی بہت کنجوس ہیں، اپنے اوپر پیسہ خرچ نہیں کرتے

جس پر مفتاح اسماعیل نے کہا کہ میں نے یہ کہا نہیں ہے لیکن حقیقت یہی ہے لیکن شاہد خاقان عباسی اور احسن اقبال میں سے احسن اقبال ویل ڈریسڈ ہے۔

مفتاح اسماعیل نے انکشاف کیا کہ احسن اقبال جیل کے اندر بھی سوٹ پہنتے تھا اور ٹائی لگاکر رکھتے تھے۔

مفتاح اسماعیل کے بیان کا جواب دیتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ ٹائی کا ذکر مفتاح کا ذرا مبالغہ ہے البتہ دن کا آغاز اڈیالہ جیل میں ضرور پینٹ کوٹ میں تیار ہو کر کیا کرتا تھا تاکہ قید میں ڈالنے والوں کو پتہ رہے کہ کوئی پریشانی ہے نہ ڈیپریشن۔

احسن اقبال نے مزید کہا کہ عدالت کی پیشی والے دن ٹائی ضرور لگتی تھی-

  • abbay salay suuor ke moun walay, koi tie pehnayga wo well dressed hoga teri nazar ma…. gutter party ke tissue paper tie pehan ke baith jatay thay ka kiya matlab??? bara acha lagta hai tie wala, behan ka rishta de do isay waise b saray tanzeemsaz ho kuch na kuch kartay rehtay ho …..

  • یہ احسن اقبال فراڈیا شوری زادہ ضیا کی شوری کا ناجائیز اور حرامی نطفہ یک گٹھیا یہ کنجر اور زلیل ٹبر کا حرامی نطفہ احساس کمتری کا مارا ہوا کنجر ہے اس جعلی پروفیسر کا خیال ہے کہ عزت کپڑوں سے ہوتی ہے اس حرامی اور آ ضیا کے گٹر میں پیدا ہوئے کیڑے نے دنیا کے امیر ترین بل گیٹ کا پہناوا نہیں دیکھا یہ حرامی مجھ تا ہے کہ امارت اور قابلیت شاید کپڑوں سے پہچانی جاتی ہے لیکن آ ج کل نجوم اور دلوں کا پہناوا سب سے اچھا ہوتا ہے یہ فراڈیا اپنی احساس کمتری کو چھپانے کی واسطے احساس برتری شو کرتا ہے لیکن اس بجو کی شکل کی کنجر اور اپنی ماں کو ضیا کی دلا گیری اور امب لینے لیجا کر ضیا کے فوجی گٹر کی حرامی پیداوار کی سیاست میں انٹری ہی ماں کا دال بن کر ہوئی

  • احسن اقبال فراڈیا شوری زادہ بجو کی شکل والاشوری زادہ ضیا کی شوری کا ناجائیز اور حرامی نطفہ ایک گٹھیا نیچ کنجر اور زلیل ٹبر کا حرامی نطفہ ہے یہ احساس کمتری کا مارا ہوا لعنتئ بجو ہے اس جعلی پروفیسر کا خیال ہے کہ عزت کپڑوں سے ہوتی ہے اس حرامی کے نطفے ضیا کے فوجی گٹر میں پیدا ہوئے کیڑے نے دنیا کے امیر ترین بل گیٹ کا پہناوا نہیں دیکھا یہ لعنتی سمجھتا ہے کہ امارت اور قابلیت شاید کپڑوں سے پہچانی جاتی ہے لیکن آ ج کل کنجر وں اور دلوں کا پہناوا سب سے اچھا ہوتا ہے ہر وقت سوٹڈ بورڈ رہ کر اپنا احساس کمتری چھپانا اور گاہک گھیرنا یہ فراڈیا اپنی احساس کمتری کو چھپانے کی واسطے احساس برتری شو کرتا ہے لیکن اس بجو کی شکل کے بے غیرت اور اپنی ماں کی دلا گیری کرکے اس کو امب لینے ضیا کے دربار میں لیجا کر ضیا کے فوجی گٹر میں پلا بڑھا حرامی فوجی حکومت کی فوجی شوری کا نطفہ فوجی شوری نثار فاطمہ عرف پھاتاں شوری ناروالی کی حرام کاری جس کی پید سیاست ہی ضیا کا دلا بن کر ہوئی مگر اتنا حرامی کہ ہمیشہ فوج کے خلاف ہی بھونکا جو کہ ایک نطفہ حرام ہونے کی کنفرم نشانی ہوتی ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >