بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

پختونوں نے پی ایس پی کے جلسے میں شرکت کر کے بتا دیا کہ ملک دشمن عناصر نے لسانیت کی فالٹ لائن پر جو سرمایہ کاری کی تھی وہ ڈوب گئی۔ ظالم بلاتفریق کسی بھی زبان کا بولنے والا ہو عوام اس کا گریبان پکڑے گی۔ سید مصطفی کمال کا سہراب گوٹھ میں پختونوں کے جلسے سے خطاب

پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال نے کہا کہ آج کے عظیم الشان پختون جلسے نے نئی دہلی اور لندن تک صف ماتم بچھا دیا ہے، آج کراچی میں بھارتی سرمایہ کاری تہ تیغ ہونے سے نئی دہلی سے لندن تک آگ لگ گئی ہے، ملک دشمنوں کے سارے عزائم خاک میں مل گئے ہیں۔

انہوں نے کہا اب وقت آگیا ہے کہ ریاست اور ناراض بھائیوں کے درمیان بھی گرینڈ نیشنل میثاق ہو۔ بندوق، گولی اور آپریشن حل نہیں ہے۔ ثابت ہوگیا کہ کوئی سچ بولنے اور دلوں کو جوڑنے والا ہو تو لوگ چالیس سال کی دشمنیوں کو بھول کر یکجا ہوجاتے ہیں۔

انہوں نے کہا ماؤں کے بچے حکمرانوں کی سیاست کی وجہ سے مرتے رہے اور حکمران ایک دوسرے کو وزارتوں کی خاطر قوم کے بچوں کو مروا کر خود ایک دوسرے سے گلے ملتے رہے۔ حکمرانوں نے بھائی کو بھائی سے لڑوا کر شہدا قبرستان آباد کیا۔ آج کے بعد زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا، مصطفی کمال مظلوموں کی آواز اور ظالم کے خلاف سیسہ پلائی دیوار ہے۔

انہوں نے کہا ہم کراچی سے خیبر تک ظلم کا نظام ختم کردیں گے، ہم نے بندوق اور گولی کی سیاست کو پھولوں سے ختم کردیا ہے، یہ حالیہ انسانی تاریخ کا معجزہ ہے۔جب اکیلا تھا تب اس دنیا سے نہیں ڈرا تو اب تو کروڑوں پاکستانیوں کے ہمراہ ہوں، کسی بھی فرعون کے آگے نا جھک سکتا ہوں اور نا کبھی جھکوں گا۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

انہوں نے کہا میری آواز پر لبیک کہہ کر ہزاروں کی تعداد میں پختونوں نے پی ایس پی کے جلسے میں شرکت کر کے بتا دیا کہ ملک دشمن عناصر نے لسانیت کی فالٹ لائن پر جو سرمایہ کاری کی تھی وہ ڈوب گئی۔ بھائی بھائی کے گلے لگ گیا، اب کراچی میں کوئی بھی علاقہ کسی بھی قوم کے لیے نوگوایریا نہیں ہے، پی ایس پی نے کلاشنکوف اٹھائے بغیر کلاشنکوف کلچر ختم کردیا۔

انہوں نے کہا پاکستان کی معاشی شہ رگ کراچی میں امن کے لیے ہماری کوششیں دنیا کے لیے کیس اسٹڈی ہیں۔ آپریشن کے بعد امن ہونا کوئی مثبت خبر نہیں ہے بلکہ محب وطن پاکستانیوں کے لیے شرمندگی کا باعث ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے الآصف اسکوائر سے متصل گراؤنڈ میں پختون برادری کے عظیم الشان جلسے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر پارٹی صدر انیس قائم خانی اراکین سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی و نیشنل کونسل بھی انکے ہمراہ موجود تھے۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

سید مصطفیٰ کمال نے مزید کہا کہ ظلم کی سیاہ رات کٹ گئی، مظلوموں کا دور آنے والا ہے۔ اب مظلوموں سے ان کی ذات اور مسلک کا نہیں پوچھا جائے گا اور ظالم بلاتفریق کسی بھی زبان کا بولنے والا ہو عوام اس کا گریبان پکڑے گی۔ ہم نے پچھلے چالیس سال کی تمام نفرتوں کو دفنا دیا ہے۔

انہوں نے کہا ہم نے دنیا کی نہیں صرف آخرت کی پرواہ کی ہے۔ سیٹیں چھوڑ کر ظالموں کے آگے کھڑے ہوئے۔ قوم کو رک کر سوچنا ہوگا کہ انہوں نے سب کر لیا لیکن تبدیلی کیوں نہیں آ رہی، ظالم صرف وہ نہیں جو ظلم کر رہا ہے بلکہ وہ بھی ہے جوظلم برداشت کر رہا۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

انہوں نے کہا جو نظام پی ایس پی نے پیش کیا ہے وہی تمام مسائل کا حل ہے، ایم این اے اور ایم پی اے کا کام قانون سازی کرنا ہے سڑکیں بنانا نہیں، اختیارات اور وسائل وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ ہاؤس سے نکال کر گلی، محلوں میں نچلی سطح تک لائیں گے۔ سہراب گوٹھ کا نوجوان سہراب گوٹھ کے مسئلے حل کرئے گا۔

پاک سرزمین پارٹی کے تحت 28 آلاصف اسکوائر کے پیچھے گراؤنڈ میں فقیدالمثال عظیم الشان پشتون کا عوامی جلسے کا انعقاد کیا گیا۔ الاصف اسکوائر کے پیچھے گراؤنڈ میں منعقدہ عوامی اجتماع سے پی ایس پی کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال نے انتہائی اہم اور فکر انگیز خطاب کیا۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

گراونڈ لاکھوں شرکاء کی ریکارڈ تعداد میں شرکت کے باعث ٹھاٹھیں مارتے سمندر کا منظر پیش کر رہا تھا، گراونڈ میں پی ایس پی کی جانب سے زبردست انتظامات کئے گئے تھے۔ کارکنان کی دن رات شب روز کڑی محنت و لگن کے بعد آلاصف اسکوائر کے پیچھے گراونڈ میں خوبصورت پنڈال تیار کیا گیا جو آنے والے شرکاء کی توجہ کا مرکز بنا ہوا تھا۔

اجتماع کے سلسلے میں گروانڈ میں 60 فٹ لمبا، 30 فٹ چوڑا اور 10 فٹ بلند خوبصورت اسٹیج تیار کیا گیا۔ جس کے عقب میں 20×40 فٹ کی پینا فلیکس اسکرین لگائی گئی تھی۔ جس پر دائیں جانب سید مصطفیٰ کمال اور بائیں جانب پاکستانی پرچم کی تصویر آویزاں تھی۔ اسکرین کے درمیان میں” کراچی بنایا تھا اور پاکستان بنائیں گے” جلی حروف میں تحریر تھا۔

اسٹیج کے سامنے شرکاء کیلئے کرسیاں لگا کر نشستوں کا اہتمام کیا گیا تھا جبکہ اسٹیج کے دائیں جانب صحافیوں کے لئے پریس گیلری اور معززین کے لئے گروانڈ میں وسیع و عریض پنڈال میں اہتمام کیا گیا تھا جس میں خصوصی پول لگا کر ان پر لائٹیں لگائی گئی تھیں جس سے پنڈال میں رات کے وقت دن کا سماں تھا۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

، باغ جناح گروانڈ کے اطراف میں عمارتوں کو پی ایس پی کے پرچم اور تہنیتی مبنی ہزاروں بینرز آویزاں کرکے سجایا گیا تھا۔ جبکہ سینکڑوں مقامات پر استقالیہ کیمپ لگائے گئے تھے جہاں پی ایس پی کے ترانوں کی دھن پر کارکنان کی جانب سے والہانہ رقص کیا جا رہا تھا۔

گراؤنڈ میں سیکورٹی کے بھی بہترین انتظامات کئے گئے تھے۔ جلسے کا باقاعدہ آغاز ٹھیک چھ بجے حسب روایت تلاوت قرآن پاک اور نعت رسول مقبول صلی اللّٰہ علیہ وآلہ وسلم سے ہوا، اسٹیج پر پی ایس پی کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال، صدر انیس قائم خانی، اراکینِ سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی و نیشنل کونسل موجود تھے۔

جلسے میں پشتون نوجوانوں، بچوں اور بزرگوں کا جوش و خروش قابل دید تھا۔ جلسہ گاہ میں مرکزی کیمپ سمیت پاک سرزمین اسٹوڈینٹس فیڈریشن، لیبر فیڈریشن، طبی سہولیات، میڈیا سیل، سائبر میڈیا سیل و دیگر کے کیمپس لگائے گئے تھے۔

بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا،اب زبان کے نام پر کسی کو خراش نہیں آنے دوں گا،مصطفی کمال

میڈیا سیل کے زمے داران جلسہ گاہ کی لحمہ بالمحہ خبریں دنیا بھر کی عوام کو آگاہ کرنے میں مصروف رہے۔ پی ایس پی کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال کی آمد کا جیسے ہی اعلان کیا گیا تو حاضرین جلسہ نے اپنی نشستوں سے کھڑے ہوکر زوردار تالیوں اور فلک شگاف نعروں کی گونج میں ان کا پر تپاک استقبال کیا۔

اس موقع پر پی کا مشہور ترانہ ’’اب صرف مصطفیٰ کمال‘‘ پشتو زبان میں بجایا گیا جس کا حاضرین جلسہ نے بھرپور ساتھ دیا بعدازاں آلاصف اسکوائر کے پیچھے گروانڈ میں آتشبازی کا خوبصورت مظاہرہ کیا گیا۔

  • Mustafa u was a partner when criminal mqm was destroying our great karachi from last 30 years u people and bastard pppp have destroyed all institutions and karachi need a century to fix up Now u r giving lollipop to public again myb u r jumping up and down on the music of army


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >