قادرمندوخیل کا فردوس عاشق اعوان کے خلاف مقدمہ درج کرانے کا اعلان

نجی ٹی وی کے پروگرام میں ایک سوال کے جواب میں رہنما پیپلز پارٹی قادرمندوخیل نے کہا کہ اپنی روایات کی وجہ سے میں چپ رہا اور خاتون ہونے کے ناطے فردوس عاشق کو جواب نہیں دیا اور اپنے غصے پر قابو کیا، اگر فردوس عاشق اعوان اپنی حرکت پر شرمندہ ہیں تو میں معاف کرنے کے لئے تیار ہوں۔

پیپلز پارٹی کے رہنما قادر خان مندوخیل نے کہا وہ فردوس عاشق اعوان کے خلاف مقدمہ درج کروا کر کریمینل کیس کریں گے ان پر حملہ کیا گیا ہے۔ پروگرام کے دوران فردوس عاشق اعوان نے مجھے گالیاں دیں جس پر چینل کو بریک لینا پڑا لیکن وہ بریک سے واپسی پر بھی دوران پروگرام مجھے گالیاں دیتی رہیں۔

قادر خان مندوخیل کا مزید کہنا تھا کہ جب میں باہر نکل رہا تھا تو فردوس نے مجھے پیچھے سے کالر سے پکڑا جس پر مجھے جلدی سے دوازہ کھول کر گاڑی کی طرف جاکر خود کو بچانا پڑا۔ رہنما پیپلزپارٹی نے کہا کہ نجی چینل کے ملازمین اس تمام واقعے کے گواہ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ صرف اونچی آواز میں بات کرتے ہیں کوئی بدتمیزی نہیں کی، کرپشن پر بات کرنا کونسی بدتمیزی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس واقعہ کی ملک بھر کی تمام معتبر تنظیموں اور ان کے عہدیداروں نے مذمت کی ہے سننے میں آیا ہے کہ فردوس عاشق کو پی ٹی آئی کور کمیٹی کی جانب سے بھی اس رویے پر تنبیہہ کی گئی ہے۔ قادر مندوخیل نے مزید کہا کہ وہ اپنی روایات کی وجہ سے میں چپ رہے اور خاتون ہونے کے ناطے فردوس عاشق کو جواب نہیں دیا بلکہ اپنے غصے پر قابو کیا۔

رہنما پیپلزپارٹی نے کہا کہ وہ سپریم کورٹ کے وکیل اور انسانی حقوق کے عملبردار ہیں، کسی کو گالی نہیں دے سکتے، اگر فردوس عاشق اعوان اپنی حرکت پر شرمندہ ہے تو وہ انہیں معاف کرنے کے لئے تیار ہیں۔ فردوس عاشق اعوان نے قانونی نوٹس بھیجا ہے، اب عدالت میں بات کریں گے، گالیاں دی گئیں اور تھپڑ مارا گیا جسے دنیا نے دیکھا ان کے پاس میرے خلاف کیا ثبوت ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >