شہبازشریف کی پارٹی صدارت سے استعفیٰ کی دھمکی؟ مریم ایک سال کیلئے خاموش؟

نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ آزاد کشمیر انتخابات میں حکمت عملی نظر انداز کرنے اور مریم نواز کی مزاحمتی الیکشن کمپین پر شہباز شریف سخت ناراض ہوگئے ہیں اور انہوں نے پارٹی کی صدارت کا عہدہ چھوڑنے کی دھمکی دے دی ہے۔

ذرائع کے مطابق پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز نے شہبازشریف کو ایسا کرنے سے روک دیا جس پر شہباز شریف فی الحال خاموش ہیں،‏ حمزہ شہباز نے شہباز شریف کو معاملہ نواز شریف کے سامنے اٹھانے کی یقین دہانی کرائی ۔
نجی چینل کے ذرائع کی جانب سے یہ بھی دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ آزاد کشمیر انتخابات میں شکست کے بعد مریم نواز اب کم از کم ایک سال تک خاموش رہیں گی۔ اس دوران شہبازشریف کے متحرک ہونے کا امکان ہے۔

نجی چینل کے مطابق آزاد کشمیر الیکشن اور سیالکوٹ میں ضمنی انتخاب میں شکست پر مفاہمتی اور مزاحمتی بیانیے والے ایک دوسرے کو اس ناکامی کا ذمہ دار قرار دے رہے ہیں جس پر بعض سینئر مسلم لیگی اس بحرانی صورتحال کو ختم کرنے کیلئے سرگرم عمل ہیں۔

ذرائع یہ دعویٰ بھی کررہے ہیں کہ اگر شہباز شریف صدارت سے استعفیٰ دیتے ہیں تو شاہد خاقان عباسی قائم مقام صدر بن جائیں گے۔

دوسری جانب نجی چینل 92 نیوز کے صحافی رانا عظیم نے دعویٰ کیا ہے کہ نوازشریف نے شہبازشریف پر واضح کردیا ہے کہ مریم نواز مائنس نہیں ہوں گی جو مریم نواز کے بیانئے سے اختلاف کرے گا اسکی پارٹی میں کوئی جگہ نہیں ہوگی۔

ایک اور نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ مریم نواز گروپ نے آزادکشمیر میں شکست پر احتجاج کا اصولی فیصلہ کرلیا ہے جس پر شہبازشریف نے اپنے رہنماؤں سے دھاندلی کے ثبوت مانگ لئے ہیں۔ ایک لیگی رہنما کا کہنا ہے کہ احتجاج سے پہلے دیکھ لیں کہ کیا لوگ اتنے غصے میں ہیں وگرنہ احتجاج کی کال رائیگاں ضائع جائے گی ؟


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >