آزادکشمیر : تحریک انصاف کے ٹکٹ پر رکشہ ڈرائیور الیکشن جیت کر اسمبلی تک پہنچ گیا

آزادکشمیر کی قانون ساز اسمبلی میں نومنتخب ایم ایل اے جاوید بٹ پیشے کے اعتبار سے رکشہ ڈرائیور ہے جس نے تحریک انصاف کی ٹکٹ پر الیکشن لڑا اور جیت کر ملک کے سب سے بڑے قانون ساز ایوان تک پہنچ گیا۔

نومنتخب ایم ایل اے جاوید بٹ نے ایک انٹرویو میں کہا کہ وہ غریب آدمی ہیں اور اپنے الیکشن پر پیسہ خرچ کرنے کی سکت نہیں رکھتے تھے تاہم ان کے کچھ دوستوں اور عزیزوں نے پیسے لگا کر ان کے لیے بینر اور فلیکسز چھپوائیں۔

جاوید بٹ نے بتایا کہ وہ 3 دہائیوں تک مسلم لیگ ن کے جانثار رہے مگر وہاں ان کو کبھی ٹکٹ نہیں ملا اور سوائے رسوائی کے کچھ ہاتھ نہیں آیا مگر تحریک انصاف کا ٹکٹ ان کو شیخ رشید کے توسط سے ملا انہوں نے کہا کہ شیخ رشید نے ان سے وعدہ کیا تھا کہ وہ جب برسراقتدار آئیں گے تو انہیں ٹکٹ لازمی دلوائیں گے۔

جاوید بٹ نے بتایا کہ ان کو ٹکٹ بغیر پیسوں کے ملا ہے صرف ان کی جدوجہد اور پارٹی کیلئے کیے گئے کام کے نتیجے میں ان کو ٹکٹ ملا، وہ عرصہ 4 برس سے تحریک انصاف کے ساتھ منسلک ہیں اور اللہ کے فضل و کرم سے جیت کر قانون ساز اسمبلی کا حصہ بن گئے ہیں۔

جاوید بٹ نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ وہ کشمیر میں بسنے والے مہاجرین کیلئے کچھ کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں آنے والے مہاجر ایک ایک کمرے میں آٹھ آٹھ لوگ رہتے ہیں جوکہ بہت مشکل کام ہے۔ میرا ارادہ ہے کہ ان مہاجرین کیلئے کوئی سکیم نکالی جائے جس سے یہ اپنی رہائش کے مالک بن جائیں اور کچھ نہیں تو پلاٹ ضرور ان کے نام کیے جائیں تاکہ وہ یہاں آرام اور سکون سے رہ سکیں۔

جاوید بٹ نے بتایا کہ وہ ایم ایل اے بن کر بدلیں گے نہیں بلکہ اپنے دوستوں کے ساتھ اسی طرح اٹھیں بیٹھیں گے، انہوں نے کہا کہ وہ اپنے گھر گئے تھے تو خود سبزی اور پھل خریدنے نکلے تب لوگوں نے کہا کہ اب وہ ایم ایل اے بن گئے ہیں مگر ان کا کہنا تھا کہ وہ سب اپنی جگہ میں آج بھی وہی جاوید بٹ ہی ہوں اور وہی رہوں گا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >