مولانا تنویرالحق تھانوی اب تک کتنی پارٹیاں بدل چکے ہیں؟

کچھ روز قبل کراچی سے تعلق رکھنے والے سابق سینیٹر مولانا تنویر الحق تھانوی نے پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) چھوڑ کر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) میں شمولیت کا اعلان کر دیا۔

مولانا تنویر الحق تھانوی نے پیپلز پارٹی سندھ کے صدر نثار کھوڑو سے ملاقات کے بعد پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔

خیال رہے کہ ایم کیو ایم کے سابق سینیٹر مولانا تنویرالحق تھانوی نے 28 مارچ 2021 میں پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا تھا۔

مولانا تنویر الحق تھانوی چوتھی بار پارٹی بدل چکے ہیں، مولانا تنویرالحق تھانوی اس سے قبل ایم کیوایم کا حصہ تھے اور ایم کیوایم کے ٹکٹ پر سینیٹر بنے ، اسکے بعد اپریل 2018 میں مولانا تنویرالحق تھانوی نے مسلم لیگ ن میں شمولیت کا اعلان کیا تھا، اسکے بعد وہ مسلم لیگ ن چھوڑ کر مارچ 2021 میں تحریک انصاف کا حصہ بنے۔

تحریک انصاف میں شمولیت کے موقع پر مولانا تنویرالحق تھانوی نے کہا کہہ وزیراعظم ہمارے بزرگوں نے جو ریاست مدینہ کا خواب دیکھا تھا اسے پورا اور سچ کر دکھائیں گے وہ ملک کے لئے کسی نعمت سے کم نہیں ۔

مولانا نے مزید کہا کہ ‏وزیراعظم عمران خان، اللہ نے انکو کرپشن سے پاک رکھا ہوا ہے ، سینہ پھُلا کے چل سکتا ہے ، سر اٹھا کے چل سکتا ہے ۔

مولانا تنویرالحق تھانوی نے یہ بھی کہا کہ وزیراعظم نے یواین اسمبلی میں تمام عالم اسلام کی ترجمانی کی ہے۔سیاسی و مذہبی جماعتیں مسئلہ کشمیر کے حل میں تیزی لانے کے لئے وزیر اعظم کے ہاتھ مضبوط کریں۔

تنویر الحق تھانوی کا کہنا تھا کہ یو این او میں کشمیر کا مقدمہ پیش کرنا دنیا میں سب سے بڑی مثال ہے احساس پروگرام انسانیت کی خدمت بہت بڑا جذبہ ہے چالیس سال گزر گئے کراچی کی ترقی کے لئے کوئی کام نہیں ہوا کراچی کی عوام کی توقعات عمران خان سے بہت زیادہ ہے۔

محض 5 ماہ بعد مولانا تنویرالحق تھانوی نے تحریک انصاف کو بھی خیرباد کہہ دیا اور پیپلزپارٹی کا حصہ بن گئے۔ پیپلزپارٹی میں شمولیت کے موقع پر ان کا کہنا تھا کہ وہ تحریک انصاف میں غیرفعال تھے اسلئے انہوں نے پیپلزپارٹی میں شامل ہونا مناسب سمجھا۔

  • باقی سب تو ٹھیک ہے مولانا کے بزرگ تو کانگریس کے ساتھ تھے ۔ اوپر سے پاکستانی سیاست ایک گندے جوہڑ کی طرح ہے جس میں سب باری باری ڈبکیاں لگا رہے ہیں مولانا کی طرح تمام ممبران مختلف پارٹیوں کا مکسچر ہیں اس مکسچر کو کوی ماہر کیمیا جب الگ الگ کرکے دکھاے گا تو پیندے میں جئے بھٹو، میاں ساڈا شیر اے، روشن خیال، اور بیدڑوم سے شروعات کرنے والی آنٹیاں ہی رہ جائیں گی

    • آپکی معلومات درست نہیں ۔۔ اشرف علی تھانوی ان چند دیوبند والوں کے لیڈر تھے جو مسلم لیگی تھے ۔۔ اگرچہ موجودہ پاکستانی علاقوں میں رہنے والے اکثر علما مسلم لیگ میں شامل ہوئے مگر اشرف تھانوی صاحب بھارت میں تھے اور پاکستان کے مطالبےنہ صرف حامی تھے بلکہقائد اعظم کےکے صلاح کار بھی تھے ، اولاد جیسی کم ظرف سہی مگر تاریخ درست رکھیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >