عمران خان سے متعلق میرے اندر اچھے احساسات تھے اور اب بھی ہیں، چودھری نثار

عمران خان سے متعلق میرے اندر اچھے احساسات تھے اور اب بھی ہیں، چودھری نثار

مسلم لیگ ن کے ناراض رہنما اور سابق وزیر داخلہ چودھری نثار نے نجی ٹی وی کے پروگرام جرگہ میں گفتگو کرتے ہوئے میزبان سلیم صافی کے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ پی ٹی آئی میں اس لیے نہیں گیا تھا کیونکہ پی ٹی آئی اور مسلم لیگ (ن) میں سیاسی مخالفت دشمنی کی شکل اختیار کر چکی تھی۔

چودھری نثار نے مزید کہا کہ گالم گلوچ اس طرح ہوتی تھی جس طرح دو دشمنوں کے درمیان ہوتی ہے۔ اب دیکھیں گے کہ حالات کیا ہیں، عمران خان مجھ پر بہت مہربان ہیں، اس وقت بھی عزت دی جب وہ کرکٹر تھے وہ کہا کرتے تھے کہ میرے اسکول کے ایک ہی دوست ہیں اور وہ نثار ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کے حوالے سے میرے جذبات اور احساسات اچھے تھے اور اچھے ہیں۔ سابق وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ میری کوشش ہے کہ کسی ایسی جماعت میں نہ جاؤں جو حکومت میں ہو کیونکہ اگر اقتدار میرا مقصد ہوتا تو میں وزارت داخلہ نہ چھوڑتا، بطور اسمبلی رکن حلف اٹھاتا پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کرتا اور کسی اچھے عہدے پر ہوتا۔

چودھری نثار نے مزید کہا کہ اب حکومت اپنی مدت پوری کرے یا انتخابات کا اعلان ہوتا ہے تو ممکن ہے کہ میں پی ٹی آئی کے متعلق سوچوں۔ ان کا کہنا تھا کہ میرا ارادہ ہے کہ قومی سیاست میں ایک مرتبہ پھر متحرک ہوں، کب ہوں گا یہ کہنا قبل از وقت ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ حلقے کی سیاست میں تین سال سے فعال رہا ہوں لیکن قومی سیاست سے کنارہ کشی اختیار کی، اس کی دو وجوہات ہیں، ایک تو جس جماعت کے لیے میں نے اپنی ساری زندگی دی اس سے اختلاف ہوا تو اس نے زیادہ سنجیدہ نہیں لیا تو میں نے علیحدگی اختیار کر لی۔

سابق وزیر داخلہ نے یہ بھی کہا کہ اس وقت جو سیاست ہو رہی ہے، اس سے میں اتفاق نہیں کرتا یہ سیاست نہیں ہو رہی، آج گالم گلوچ، بےہودگی ہورہی ہے، خواہ اسمبلی ہو یا میڈیا میں ہمارے سیاستدان آتے ہیں، میں اس سیاست کا حصہ نہیں بننا چاہتا تھا، کوشش کر رہا ہوں اگر موقع ملا تو سیاست کی بہتری میں کوئی کردار ادا کروں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>