خطبہ حج 2020 اردو ترجمہ کے ساتھ

مکہ مکرمہ: شیخ عبداللہ المنیع نے مسجد نمرہ میں خطبہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ امت مسلمہ نفرتوں کو مٹا دے اور مسلمان اپنے آپ کو سیاسی طور پر مضبوط کریں۔ اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھام لے۔

شیخ عبداللہ نے خطبہ دیتے ہوئے کہا کہ اللّٰہ کا شکرادا کرتے ہیں جس نےانسانوں کو بے شمارنعمتیں عطا کیں، جو کچھ زمین اور آسمانوں میں ہے سب اللّٰہ کا ہے۔ تقویٰ اختیار کرنے والے کی ہر تنگ دستی دور کردی جاتی ہے، تقوی انسان کو برائیوں سے بچاتا ہے لیکن آج بڑی تعداد میں لوگ اللّٰہ کی بندگی سے غافل نظر آتے ہیں۔ نجات کا راستہ صرف اللہ کی رسی کو مضبوطی کے ساتھ تھامنے میں ہے، سلام کی حقیقی تصویر اعلیٰ اخلاق ہے، اللہ غرور اور تکبر کرنے والوں کو پسند نہیں کرتا

شیخ عبد اللہ بن سلیمان المنیع نے مسجد نمرہ سے براہ راست خطبہ حج میں کہا کہ وبا پھیل جائے تو انسان کو دوسرے علاقے میں نہیں جانا چاہیئے، جس وقت انسان نماز کیلئے کھڑا ہو تو طہارت اور پاکیزگی کا خیال رکھے، مسلمان کا عقیدہ ہونا چاہیئے کہ اللہ تعالیٰ ہی وبا سے نجات دلائے گا، وبا کے دوران زیادہ سے زیادہ صدقہ اور خیرات کریں۔اسلام صدقہ وخیرات کے ذریعے مشکلات حل کرنے کا درس دیتا ہے، اسلام کسی بھی قسم کے فتنے کو پھیلانے سے روکتا ہے

شیخ عبداللہ کا کہنا تھا کہ کچھ لوگ حرام چیزوں کا استعمال کرتے ہیں، اس وجہ سے بھی وبا آتی ہے، جہاں وبا پھیل جائے وہاں باہر سے کوئی بندہ داخل نہ ہو، جو لوگ اللہ کی حدود کو توڑتے ہیں ان کیلئے دنیا اور آخرت میں عذاب ہے، دنیا میں اللہ تعالیٰ کی طرف سے مشکلات امتحان ہے، وبا اگر آزمائش ہے تو اللہ کی رحمت کے دروازے بھی کھلے ہیں۔

شیخ عبداللہ نے مزید کہا کہ قرآن مجید میں اللہ نے ارشاد فرمایا کہ تم میرے نعمتوں کو گننا چاہو تو گن نہیں سکتے، لہٰذا ان نعمتوں پر اللہ کا شکر ادا کرو۔اللہ کی بارگاہ میں سجدہ ریز رہیں، تلاوت قرآن مجید کی عادت پنائیں، نماز اسلام کا اہم رکن ہے اسلئے فرض نماز کی پابندی کریں۔

شیخ عبداللہ بن سلیمان کا کہنا تھا اپنے بھائی بہنوں اور رشتہ داروں کا خیال کیا جائے، اللہ رب العزت نے قتل کو حرام قرار دیا، اللہ نے صلح کرانے پر زور دیا ہے، بے شک اللہ کی رحمت احسان کرنیوالوں کے قریب ہے، نفرتیں ختم کریں، انسان ہو یا جانور، سب سے رحمت کا معاملہ کریں، جو اللہ سے ڈرتا ہے، اللہ اسے دنیا و آخرت کے ڈر سے نجات دلاتا ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>