وزیر تعلیم کا نویں اور گیارہویں جماعت کے امتحان نہ لینے کا اعلان

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کرونا وائرس کے باعث سے پیدا شدہ صورتحال میں لاک ڈاؤن کے دوران نویں اور گیارہویں جماعت کے امتحان نہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ اور جن طالب علموں کے پاس نویں اور گیارہویں جماعت کا نتیجہ ہے انہیں اگلی کلاس میں پروموٹ کر دیا جائے گا، تاکہ بچوں کے تعلیمی سال کو بچایا جا سکے۔

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آج ہونے والے اجلاس میں تمام صوبائی وزرائے تعلیم کے ساتھ ملکر اہم بنیادی فیصلے کیے ہیں۔ جن میں طالب علموں کی چار کیٹیگریز بنائی گئی ہیں جن کے نومبر اور دسمبر کے درمیان امتحان لیا جا سکتا ہے۔ان چار کیٹیگریز میں وہ طالب علم ہیں جو 40 فیصد سے زائد مضامین میں فیل ہوئے،جو گیارہویں جماعت میں چند مضامین میں پاس ہوئے اور جن کا نتیجہ غیر مطمئن ہوگا۔جبکہ اگلی کلاس میں پروموٹ کرنے کے باوجود وہ طالب علم جو خصوصی طور پر امتحان دینے کے خواہش مند ہوں گے وہ امتحانات دے سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رواں سال تقریبا چالیس لاکھ بچوں نے نویں، دسویں، گیارہویں اور بارہویں جماعت کے امتحانات دینے تھے۔ تاہم کورونا وائرس کی وجہ سے بچوں کی صحت کو مد نظر رکھتے ہوئے ایسا فارمولا بنانا تھا جس سے بچوں کو اگلی کلاس میں پرموٹ کر دیا جائے اور ان کا تعلیمی سال ضائع نہ ہو۔ انہوں نے بتایا کہ قومی رابطہ کمیٹی نے تمام تعلیمی اداروں کو مزید 15 جولائی تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بچوں کے پچھلی کلاس کے نتائج کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد پتہ چلا کہ نویں کلاس سے بہتر دسویں کلاس کے نتائج ہیں، جب کہ وہ طالب علم جن کودسویں اور بارہویں جماعت میں پروموٹ کیا گیا ہے وہ آئندہ سال صرف دسویں اور بارہویں جماعت کا ہی امتحان دیں گے۔ تاہم گیارہویں کے نتائج سے غیر مطمئن طالبعلم ستمبر، نومبر میں اسپیشل امتحان دے سکتے ہیں۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے بتایا کہ وہ طالب علم جن کو دسویں اور بارہویں جماعت میں پروموٹ کیا جائے گا ان کے نویں اور گیارہویں جماعت کے نمبروں میں مزید تین فیصد نمبروں کا اضافہ کیا جائے گا، تاہم ایسے طالب علم جو سپیشل امتحانات خواہشمند ہیں وہ یکم جولائی سے قبل اپنے متعلقہ بورڈ کو آگاہ کردیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >