انٹرنیٹ صارفین کیلئے خوشخبری، سپریم کورٹ کا بڑا حکم

سپریم کورٹ کا ایک اور بڑا حکم۔۔۔۔۔ حکومت کو انٹرنیٹ کمپنیوں سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی وصول کرنے سے روک دیا گیا۔۔

عدالت عظمی نے اپنے بڑے فیصلے میں نجی کمپنی سے ٹیکس وصولی کیلئے دائرایف بی آرکی اپیل خارج کردی۔۔ انٹرنیٹ کو سروسزفیڈرل ایکسائزڈیوٹی سے مستثی قرار دے دیا۔

سپریم کورٹ میں نجی کمپنی سےٹیکس وصولی کیلیے ایف بی آر کی درخواست پر سماعت ہوئی۔۔

جسٹس مقبول باقرکے تحریر کردہ پانچ صفحات پرمشتمل فیصلہ میں کہاگیاکہ کہ وٹس ایپ، اسکائپ اوردیگرسروسز ٹیلی کمیونیکیشن کے زمرے میں نہیں آتیں ، واٹس ایپ اور دیگرکمپنیاں صارفین سے کوئی وصولی نہیں کرتیں ، انٹرنیٹ صارف کی مرضی ہے وہ براؤزنگ کرے یا آڈیوویڈیوکالزکرے۔۔

انٹرنیٹ کالزپرٹیلی کمیونیکیشن سروس کی مد میں ٹیکس نہیں لیا جا سکتا کیونکہ کمپنیاں صرف سروس چارجزلیتی ہیں۔ واٹس ایپ و دیگرکال کے چارجز نہیں ۔

نجی کمپنی نے ٹیکس نوٹس اپیلیوں کوٹریبونل میں چیلنج کیا تھا، ٹریبونل نے ٹیکس وصولی سے روکنے پرایف بی آر نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >