ٹک ٹاک انتظامیہ کاحکومت پاکستان سے رابطہ،غیرقانونی مواد ہٹانے کی یقین دہانی کرادی

ٹک ٹاک انتظامیہ اور پی ٹی اے کے درمیان مذاکرات، ٹک ٹاک انتظامیہ نے غیر قانونی مواد کی شیئرنگ روکنے اور پاکستانی قوانین کے مطابق سوشل میڈیا پر مواد کی شیئرنگ کو یقینی بنانے کی یقین دہانی کرادی۔

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کے مطابق گزشتہ روز چیئرمین پی ٹی اے اور ٹک ٹاک کی اعلیٰ انتظامیہ کے مابین ورچوئل پلیٹ فارم پر میٹنگ ہوئی، میٹنگ میں پاکستانی قوانین کے مطابق غیر اخلاقی مواد کو روکنے سے متعلق معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔

اس موقع پر ٹک ٹاک انتظامیہ کی جانب سے مقامی قوانین کے مطابق ممنوع مواد روکنے کیلئے کی جانے والی کوششوں اور اقدامات سے آگاہ کیا گیا۔

میٹنگ میں قابل اعتراض مواد کو روکنے اور پاکستانی صارفین کو محفوظ مواد فراہم کرنے سے متعلق لائحہ عمل بنانے اور آئندہ رابطہ رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔

پی ٹی اے نے میٹنگ کے حوالے سے اعلامیہ جاری کیا جس میں بتایا گیا کہ ٹک ٹاک کی سینئر انتظامیہ نے مقامی قوانین کے مطابق ٹک ٹاک پر مواد کو معتدل بنانے اور پاکستانی قوانین سے مطابقت رکھنے والے مواد کی آن لائن شیئرنگ بارے مستقبل کی حکمت عملی بارے بھی چیئرمین پی ٹی اے کو آگاہ کیا۔

واضح رہے کہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے 2 روز قبل چینی سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر پابندی عائد کردی تھی۔

پی ٹی اے کے مطابق معاشرے کے مختلف طبقوں کی جانب سے ٹک ٹاک پر غیر اخلاقی اور غیر مہذب مواد کی موجودگی کی شکایات کی گئی تھیں جس کے بعد ایپ پر پابندی کا فیصلہ کیا گیا۔

ٹک ٹاک کی بندش پر پاکستان کی اکثریت نے اس پابندی کی حمایت کی جبکہ کچھ حلقوں کی جانب سے مخالفت بھی دیکھنے میں آئی۔۔ حامیوں کے مطابق ٹک ٹاک بچوں کی تعلیم پر اثر ڈال رہی ہے، اس سے کم عمر بچوں کے اموات میں تیزی دیکھنے میں آرہی ہے اور یہ فحاشی اور عریانی کا ذریعہ بن رہی ہے۔

جبکہ دوسری جانب پابندی کی مخالفت کرنیوالوں کی رائے تھی کہ ٹک ٹاک کی بندش سے ڈیجیٹل پاکستان کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا۔ ٹک ٹاک لوگوں کے روزگار اور تفریح کا ذریعہ ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >