جب تک لوگ کورونا کو سنجیدہ نہیں لیں گے واپس نہیں آؤں گی، بشریٰ انصاری

جب تک لوگ کورونا کو سنجیدہ نہیں لیں گے واپس نہیں آؤں گی، بشریٰ انصاری

اداکارہ بشریٰ انصاری نے کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلنے کے باوجود لوگوں کے اس کو سنجیدہ نہ لینے پر ردعمل دیتے ہوئے اظہار افسوس کیا اور کہا کہ وہ بیرون ملک میں صرف اس وجہ سے پھنسی ہوئی ہیں کیونکہ پاکستانی کورونا کو مذاق سمجھ رہے ہیں اور اس کو سنجیدہ نہیں لے رہے۔

بشریٰ انصاری نے کہا کہ لوگ کورونا کو مذاق سمجھ رہے ہیں اور سنجیدہ نہیں لے رہے اس وجہ سے یہ وبا اس قدر بڑھ گئی ہے کہ اب قابو ہونے کا نام نہیں لے رہی

انہوں نے کہا کہ وہ قوم کے اس رویے پر افسردہ ہیں اور تب تک واپس پاکستان نہیں آئیں گی جب تک پاکستانی اس کو سنجیدہ نہیں لیتے۔ ا

نہوں نے کہا کہ ان کو ہر وقت پاکستان کی یاد آتی ہے مگر لوگ ان کو کہتے ہیں کہ پاکستان میں لوگ کورونا کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے جس سے ان کو دکھ پہنچتا ہے اور یہی سوچ کر وہ ابھی تک واپس پاکستان نہیں آئیں۔

یاد رہے کہ بشریٰ انصاری لاک ڈاؤن کے اعلان ہونے سے پہلے بیرون ملک گئی تھیں اور پھر لاک ڈاؤن اور فضائی سروس معطل ہونے کے باعث وہیں رک گئیں۔ مگر اب پاکستان میں لاک ڈاؤن کے بعد جزوی طور پر معمولات زندگی بحال ہو چکے ہیں اور ملک میں صوبوں کے درمیان ذرائع آمدو رفت کو بھی بحال کر دیا گیا ہے۔

پاکستان میں3 جون کی دوپہر تک کورونا متاثرین کی تعداد80 ہزار400 سے تجاوز کر گئی ہے، 24 گھنٹوں میں 67 مزید افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں جس کے بعد یہ تعداد1688 تک پہنچ چکی ہے۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More