سینیٹ کمیٹی برائے انسانی حقوق کی فلم "زندگی تماشا”کوریلیز کرنے کی اجازت

سینٹ کی انسانی حقوق کی کمیٹی کو فلم” زندگی تماشا” پر بریفنگ دی گئی، جس پر کمیٹی نے سرمد کھوسٹ کی جانب سے بنائی گئی فلم "زندگی تماشا” کی سکریننگ  کے سینسر بورڈ کے فیصلے کی تائید کرتے ہوئے موجودہ کروناوائرس کے بحران کے بعد ریلیز کرنے کی اجازت دے دی۔

سینٹ کی انسانی حقوق کی کمیٹی کے ممبر سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے بتایا کہ فلم "زندگی تماشا” میں کوئی قابل اعتراض چیز نظر نہیں آئی، لہذا سینسر بورڈ کو کمیٹی نے فلم "زندگی تماشا” موجودہ کرونا وائرس کی وجہ سے پیدا شدہ بحران کے بعد ریلیز کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

واضح رہے کہ فلم "زندگی تماشا” 24 جنوری کو نمائش کے لیے پیش کی جانی تھی، جسے سینسر بورڈ سے نمائش کی اجازت ملنے کے باوجود ملک بھر میں ریلیز کرنے سے روک دیا گیا تھا، فلم کی ریلیز ایک مذہبی جماعت کی جانب سے دی گئی مظاہروں کی کال کی وجہ سے روکی گئی تھی، تاہم اب فلم "زندگی تماشا” ملک بھر میں ریلیز کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >