پاکستانی شارٹ فلم ’دریا کے اس پار‘ کے نام تین عالمی ایوارڈز

پاکستانی شارٹ فلم  ’دریا کے اس پار‘ کے نام تین عالمی ایوارڈز

چترال میں خواتین کی خودکشیوں اور نفسیاتی مسائل کے حوالے سے آگاہی پر مبنی مختصر دورانیے کی فلم ’دریا کے اس پار‘ نے بین الاقوامی دنیا کی توجہ حاصل کرلی، شارٹ فلم نے تین عالمی ایوارڈز جیت لئے۔

تیس منٹ دورانیے کی اس فلم نے نیویارک انٹرنیشنل فلم فیسٹیول میں بہترین مختصر دورانیے کی فلم، بہترین ڈائریکٹر اور بہترین مرکزی اداکارہ کے ایوارڈز حاصل کئے۔

فلم ’دریا کے اس پار‘ کی فلمساز نگہت اکبر شاہ ہیں اور شعیب سلطان نے فلم کی ہدایتکاری کی،شعیب سلطان نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے بتایا انہوں نے اس فلم سے ہدایتکاری کے میدان میں قدم رکھا، اور اللہ کا شکر ہے عالمی سطح پر ان کی فلم کی اتنی پذیرائی ہوئی۔

انہوں نے کہا یہ ہمارے اور پاکستان کے لیے فخر کی بات ہے کہ ایک پاکستانی فلم نے عالمی مقابلے میں تین ایوارڈز اپنے نام کیے،شعیب سلطان نے مزید بتایا کہ فیسٹیول میں دنیا بھر سے 96 فلمیں مدمقابل تھیں جبکہ پاکستانی فلم نے بھارتی، میکسیکن اور امریکی فلموں کی کیٹیگری میں اپنی جگہ بنائی،مختلف خصوصیات پر مبنی 15 کیٹیگریز تھیں۔

فلم ’دریا کے اس پار کی کہانی گل زرین نامی لڑکی کے گرد گھومتی ہے، جس کا تعلق پاکستان کے شمالی علاقے سے ہے، گل زرین مختلف مسائل کا شکار ہوکر ڈپریشن میں چلی جاتی ہے،لیکن ا سکی پریشانی پر کوئی توجہ نہیں دیتا،ایسے میں معاشرتی روایات اور رویے گل زرین کو زندگی کا خاتمہ کرنے پر مجبورکردیتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >