اداکارہ ماہرہ خان نے بھارت میں پاکستانی فنکاروں پر پابندی کو مایوس کن قرار دیدیا

اداکارہ ماہرہ خان نے بھارت میں پاکستانی فنکاروں پر پابندی کو مایوس کن قرار دیدیا

پاکستانی ٹی وی اور فلم اسکرین کی نامور اداکارہ ماہرہ خان نے بھارت کی جانب سے پاکستانی فنکاروں پر پابندی لگنے کے معاملے پر پہلی بار بات کی ہے اور انہوں نے اسے مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس پابندی نے انہیں غمگین کر دیا تھا۔

اداکارہ نے کہا کہ وہ خود بھارتی فلم انڈسٹری میں کام کرنے کا تجربہ حاصل کر چکی ہیں اور سمجھتی ہیں کہ اس پابندی سے نہ صرف پاکستان بلکہ برصغیر کے فنکاروں کو اکٹھے کام کرنے کا تجربہ حاصل کرنے سے محروم کر دیا گیا ہے۔ کیونکہ اکٹھے کام کرنے سے تجربہ شیئر کرنے کا موقع ملتا ہے جو کہ اب نہیں ہوگا۔

ماہرہ نے کہا کہ ہمارے فنکاروں کی پڑوسی ملک میں پابندی کے باعث انہوں نے بہت سی ویب سیریز میں کام کرنے سے انکار کر دیا ہے کیونکہ ان پراجیکٹس میں کام کرنے پر انہیں خوف محسوس ہو رہا تھا۔

یاد رہے کہ اداکارہ بھارتی کنگ خان شاہ رخ کے ساتھ فلم رئیس میں اداکاری کر چکی ہیں اور اس کے بعد پاکستان میں بھی فلم مولاجٹ 2 کی ریکارڈنگ کرا چکی ہیں مگر کورونا وائرس کے باعث فلم کی ریلیز تاخیر کا شکار ہے۔

  • بھارتیوں کے ساتھ کام کرکے ماہرہ خان پٹھانی کیا تجربہ شئیر کرنا چاہتی ہے؟
    بھارتی فلموں میں چڈیوں کا رواج ہے، رومانوی سینز میں تمام کپڑے اتار کر ایک بیڈ پر لیٹنا دیر تک منہ میں منہ ڈال کر کس کرنا اور تمام کی تمام فلم میں ہالی وڈ کی کاپی کرنا ہوتی ہے فلمیں بھی یورپین یا امریکی فلمون کا چربہ ہوتی ہیں
    اس سے تو بہت ہے کہ تم ڈائریکٹ ہالی وڈ جاو اور جو انڈین نقالی کرتے ہین تم اصلی والی فلم کرلو۔ کس بھی کرو اور سیکس سینز بھی کرو

  • ایسوں کو پاکستانی نیشنلٹی ختم کر کے
    بھارت بھیج دینا چاہیے ان جیسوں کو وہاں کوئی گھاس بھی نہیں ڈالتا سرف ایک دو سین کروا کے مزے لے کے چھوڑ دیا جاتا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >