ایسے بھارتی فنکار جو پاکستانی فلموں میں بھی کام کر چکے ہیں؟

ایسے بھارتی فنکار جو پاکستانی فلموں میں بھی کام کر چکے ہیں؟

کہتے ہیں فن اور فنکار کی کوئی حد نہیں ہوتی یہ بارڈر پر لگی باڑوں سے باہر نکل کر سوچتے ہیں اور اپنے فن یا اداکاری کی مدد سے ایسا پیغام دے دیتے ہیں جو بڑی بڑی مذاکرات کی میزوں پر بھی بیٹھ کر نہیں دیئے جا سکتے۔ اداکاری کی مدد سے بڑے کٹھن اور سخت موضوع کو بھی اس انداز میں پیش کر دیا جاتا ہے کہ دیکھنے والے کے دماغ تک پیغام پہنچ جائے۔

ہمارے ملک کے بیشتر اداکار ملک کے اندر کام کرنے کے علاوہ دیگر فلم انڈسٹریز جیسے بالی ووڈ اور دیگر میں اپنے فن کا لوہا منوا چکے ہیں مگر بالی ووڈ کے بھی کئی مشہور اداکار اور بڑے نام پاکستانی فلموں میں کام کر چکےہیں۔

اداکار راج ببر کے بیٹے آریا ببر پاکستانی فلم ورثہ میں مہرین راحیل کے ساتھ کام کر چکے ہیں یہ فلم 2010 میں پاکستان میں ریلیز ہوئی تھی۔  مشہور بھارتی اداکار اور کامیڈین جونی لیور پاکستانی فلم "لو میں گُم” میں اداکاری کر چکے ہیں۔ یہ فلم 2011 میں ریلیز ہوئی تھی۔  ونودکھنہ  نے پاکستانی فلم گاڈ فادر میں اداکاری کی تھی۔ یہ فلم 2007 میں ریلیز ہوئی تھی۔

امرتا اروڑا نے بھی فلم گاڈ فادر میں اداکاری کی تھی یہ فلم پاک بھارت فلم سازوں کی مشترکہ پروڈکشن تھی۔ اس فلم کو مشہور انگریزی فلم کے ری میک کے طور پر بنایا گیا تھا۔ معروف اداکارہ اور سیاستدان کرن کھیر بھی مشہور پاکستانی فلم خاموش پانی میں اپنے فن کا مظاہرہ کر چکی ہیں۔ یہ فلم 2003 میں بنی تھی جس نے متعدد عالمی ایوارڈز جیتے تھے۔

شویتا تیواری جنہوں نے کسوٹی زندگی کی سیریل سے شہرت پائی اور پاکستانی فلم سلطنت میں اداکاری کی تاہم یہ فلم بری طرح فلاپ ہوئی تھی۔ نیہا دھوپیا جوکہ معروف بھارتی اداکارہ اور ماڈل ہیں انہوں نے لالی ووڈ کی فلم کبھی پیار نہ کرنا کے آئٹم سانگ میں پرفارم کیا تھا۔

نصیرالدین شاہ جو کہ سینئر اور مشہور بھارتی اداکار ہیں انہوں نے 2007 میں فلم خدا کیلئے میں اداکاری کی اور بعد ازاں 2013 میں فلم زندہ بھاگ میں بھی پاکستانی فلم سکرین پر جلوہ گر ہوئے۔

ارباز خان نے بھی فلم گاڈ فادر میں اداکاری کی، یہ پاکستانی اردو فلم تھی جس کی ہدایت کاری ہریدھے شیٹی نے کی تھی اس فلم میں ارباز خان نے بھی اہم کردار نبھایا تھا۔

چند سال پہلے وفات پانے والے اوم پوری نے فلم ایکٹر ان لاء میں اداکاری کی تھی اور اداکار فہد مصطفیٰ کے ساتھ نظر آئے تھے۔ گو کہ اس فلم پر کریٹکس کی جانب سے تنقید کی گئی تھی مگر اس فلم نے اچھا بزنس کیا تھا۔ یہ فلم 2016 میں ریلیز ہوئی تھی جس پر 100 ملین کا بجٹ خرچ کیا گیا تھا تاہم فلم نے 300 ملین کا بزنس کیا تھا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>