ماڈل نایاب قتل کیس میں اہم انکشافات،قتل کے روز مقتولہ کہاں تھی؟کس سے اسکاجھگڑاہوا؟

ماڈل نایاب قتل کیس میں اہم انکشافات۔۔قتل کی رات ماڈل نایاب کہاں اور کس کے ساتھ تھی؟ کس کے ساتھ اسکا جھگڑا ہوا؟

لاہور میں قتل ہونے والی ماڈل نایاب کے کیس کی تفتیش میں اہم انکشافات سامنے آئے ہیں۔پولیس کے مطابق ماڈل قتل کی رات اپنے دوستوں کے ساتھ دعوت پر گئی اور پارٹی میں مقتولہ ماڈل کا کچھ دوستوں سے جھگڑا ہوا تھا۔

قتل کی رات نایاب کہاں گئی کس سے ملی،پولیس نے چھان بین شروع کر دی۔ ماڈل نایاب کا جن دوستوں سے جھگڑا ہوا تھا، جو دوست اس سے رابطے میں رہے، پولیس نے ان سب کو شامل تفتیش کرلیا۔۔

پولیس تفتیش میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ ماڈل نایاب فارم ہاؤس سے واپس گھر آئی اور اپنے سوتیلے بھائی کو فون کیا ، اسی رات ماڈل کا سوتیلا بھائی اس سے ملنے بھی آیا۔مقتولہ کا بھائی اس سے ملنے آیا ، اس نے اسے آئس کریم کھلائی اور کچھ وقت ساتھ گزارکر گھر چھوڑ کر چلا گیا۔

خیال رہے کہ ماڈل نایاب کے سوتیلے بھائی نے ہی پولیس کو اپنی بہن کے قتل کی اطلاع دی تھی اور اسکی مدعیت میں ہی قتل کا مقدمہ درج ہوا تھا۔ پولیس نے شبہ ظاہر کیا ہے کہ نایاب کے قتل میں کوئی قریبی عزیز ملوث ہوسکتا ہے۔

پولیس کے مطابق ماڈل نایاب کو گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا جبکہ قتل کی واردات میں ملوث نامعلوم ملزم گھر کے عقبی راستے سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا تھا۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ نامعلوم ملزم نے ماڈل نایاب کو قتل کرنے کے بعد اس کو برہنہ حالت میں اس لئے چھوڑ دیا تاکہ مقدمے کی تفتیش کا رخ تبدیل کر سکے جبکہ پولیس کا کہنا ہے ماڈل نایاب کے ساتھ جنسی زیادتی کے شواہد نہیں ملے۔ قاتل نے لاش بے لباس کرکے قتل کو زیادتی کا رنگ دینے کی کوشش کی۔

تفتیش میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ مقتولہ نایاب چند روز قبل دبئی سے لاہور پہنچی تھی۔ پولیس کے مطابق نامعلوم ملزم مقتولہ نایاب کا موبائل فون بھی ساتھ لے گیا ہے تاہم پولیس نے مقتولہ کے موبائل فون کا ڈیٹا نکلوا کر اس کے قریبی دوستوں کو شامل تفتیش کرلیا ہے۔

پولیس نے ماڈل کے زیر استعمال گاڑی بھی تحویل میں لے لی گئی ہے جبکہ مقتولہ کے موبائل ڈیٹا بھی حاصل کرلیا ہے۔ جبکہ پولیس نے مقتولہ کے گھر کے ارد گرد لگے سی سی ٹی وی کیمروں کا بھی ریکارڈ حاصل کر لیا ہے۔فوٹیج میں مشکوک شخص کو مقتولہ کے گھر کلے ارد گرد گھومتے بھی دیکھا گیا ہے۔

دوسری جانب ماڈل نایاب کی پوسٹمارٹم رپورٹ بھی سامنے آگئی ہے ، پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق نایاب کو گلا دبا کر قتل کیا گیا، اس کی گردن پر زخموں کے نشان بھی پائے گئے ہیں جبکہ ماڈل نایاب سے زیادتی کے بھی شواہد نہیں ملے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>