سانولے رنگ کے حصول کیلئے کئی جتن کیے:شنیرا اکرم

سوئنگ کے سلطان سابق فاسٹ باؤلر وسیم اکرم کی آسٹریلین نژاد اہلیہ شنیرا اکرم کا گورے رنگ  کی خواہش رکھنے والی لڑکیوں کے لیے خصوصی پیغام۔

تفصیلات کے مطابق سابق فاسٹ بولر وسیم اکرم کی اہلیہ کا اپنے انسٹا گرام پیغام میں کہنا تھا کہ انہوں نے بچپن میں سانولا ہونے کیلئے کئی جتن کیے۔ سانولے رنگ کے لئے کی گئی کوششوں سے متعلق بتاتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ سانولی رنگت سب سے بہترین ہے۔

شنیرا نے سانولے رنگ کی ان تمام لڑکیوں کو جو رنگ گورا کرنے کی خواہش رکھتی ہیں مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ کو بتانا چاہتی ہوں کہ میرے ساتھ بےشمار گوری لڑکیاں اس خواہش کے ساتھ بڑی ہوئیں کہ کاش ان کا رنگ سانولا ہوتا اس خواہش کی حامل لڑکیوں میں سے ایک میں بھی تھی۔ ہمیں یہ بتایا گیا تھا کہ اگر ہماری رنگت سانولی ہوتی تو ہم زیادہ صحت مند ، خوبصورت لگتیں اور لڑکے ہم میں زیادہ دلچسپی رکھتے ۔ ہم رنگت تبدیل کرنے کیلئے کچھ بھی کر سکتی تھیں۔

شنیرا کا انسٹاگرام پر اپنے پیغام میں لکھنا تھا کہ ’’جب میں نوعمری کے دور میں تھی تو ہم اپنے چہرے اور جسموں پر نقصان دہ تیل لگا کر سارا دن سورج کی نقصان دہ شعاعوں میں لیٹے رہتے تھے تا کہ 3 سے 4 دن میں رنگت جھلسنے کے بعد ہم سانولے لگنے لگیں۔ ہم سورج کی مصنوعی روشنی میں گھنٹوں گزارتے تھے جو اسکن کینسر ، جلدی بیماریوں، جھریوں کا باعث بن سکتا تھا۔ سورج کی روشنی دستیاب نہ ہوتی تو ہم اپنے فیس پر ڈائی رگڑتے تا کہ چہرہ سانولا لگے‘‘

سوئنگ کے سلطان کی اہلیہ کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے ہرہفتے براؤن باڈی پینٹ پربےتحاشا رقم خرچ کی، جو بالوں ، کپڑوں، بیڈ شیٹس پر بھی لگ جاتا تھا۔ جلد پر لگا پینٹ کئی دنوں تک نہیں اترتا تھا اور جب اترتا تو جلد کو کٹی پھٹی خشک چھوڑ جاتا۔ میں نے تو ایسا نہیں کیا لیکن بعض لڑکیاں ایسی تھی جو سنتھیٹک ہارمونز کے انجکشن تک لگواتیں تھیں تا کہ میلانن کی مقدار بڑھنے سے ان کی رنگت مستقل طور پر گوری سے سانولی نظر آنے لگے۔

انسٹاگرام پر شیئر کئے گئے پیغام کے آخر میں شنیرا اکرم نے گورے رنگ کے حصول کے لیے جدوجہد کرنے والی تمام لڑکیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ خود کو تبدیل کرنے کی کوشش نہ کریں۔ کیونکہ دنیا کی آدھی خواتین آپ جیسی رنگت کے حصول کے لیے کسی بھی حد تک چلی جاتی ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>