کرونا وائرس: عابد شیر علی کی جانب سے افواہیں پھیلاکر خوف وہراس پھیلانے کی کوشش

عابد شیر علی کی بیرون ملک بیٹھ کر کرونا وائرس سے جھوٹی خبریں اور افواہیں پھیلاکر پروپیگنڈا کرنے اور لوگوں میں خوف وہراس پیدا کرنے کی کوششیں۔۔ ڈپٹی کمشنر فیصل آباد اور پنجاب حکومت نے عابد شیر علی کا دعویٰ جھوٹ پر مبنی قرار دیدیا

تفصیلات کے مطابق عابد شیر علی نے دعویٰ کیا کہ فیصل آباد سے 213 افراد جو کہ کرونا وائرس میں مبتلا تھے انھیں جی سی یونیورسٹی جھنگ روڈ کیمپس میں رکھا گیا تھا وہ وہاں سے فرار ہو گئے ہیں۔ پورے شہر میں پریشانی کا عالم ہے۔ اس کے ذمے دار کون ہے؟

عابد شیر علی کے ٹویٹ نے فیصل آباد کے شہریوں میں تشویش پید اکی وہیں حکومت کو بدنام کرنے اور پاکستان کی دنیا میں جگ ہنسائی کروانے کی کوشش کی ۔

لیکن عابد شیر علی چونکہ بیرون ملک بیٹھے ہوئے ہیں اسلئے وہ شہر کے حالات سے بے خبر نکلے۔ عابد شیر علی کو یہ تک معلوم نہیں کہ کیمپ کہاں واقع ہے اور ان میں کتنی تعداد موجود ہے؟ عابد شیر علی نے قرنطینہ سے 213 زائرین کے فرار کا ٹویٹ کیا جبکہ حقیقت میں آئسولیشن وارڈ زرعی یونیورسٹی کے پارس کیمپ میں ہے جبکہ قرنطینہ میں 158 افراد ہیں ناں کہ 213 افراد۔

فرخ حبیب نے عابد شیر علی کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ فیصل آباد قرنطینہ میں213نہیں158 زائرین کو آئسولیشن میں رکھا گیا ہے۔ یہ GC یونیورسٹی نہیں زرعی یونیورسٹی کے پارس کیمپس جھنگ روڈ پر موجود ہے عابد شیر علی مفروری ختم کرکےپاکستان میں واپس آجائےجس طرح الیکشنز میں تسلی کروائی تھی ایسےہی حفاظتی لباس کیساتھ سنٹر میں لیجا کرتسلی کروادےگئے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >