عدنان صدیقی نے”اے مائیٹی ہارٹ”کے سیٹ پر امتیازی سلوک کی خبر کی تردید کردی

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں عدنان صدیقی نے کہا کہ ان سے متعلق یہ خبر کہ ہالی ووڈ فلم "اے مائیٹی ہارٹ” کے سیٹ پر ان کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا گیا صریحاً جھوٹ پر مبنی ہے۔دراصل سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر شوبز انڈسٹری کی خبریں دینے والے ایک اکاؤنٹ سے خبر شیئر کی گئی تھی کہ عدنان صدیقی نے ثمینہ پیرزادہ کے شو میں خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہالی ووڈ فلم "اے مائیٹی ہارٹ” کی شوٹنگ کے دوران بھارت میں کی جانے والی شوٹنگ میں ان سے امتیازی سلوک کیا گیا۔

پاکستانی شوبز انڈسٹری کی خبریں دینے والے اس انسٹاگرام ہینڈلر نے دعویٰ کیا کہ شوٹنگ کے دوران فلم کی کاسٹ کو تاج ہوٹل میں ٹھہرایا گیا جبکہ عدنان صدیقی کو کریو کے ممبران کے ساتھ دوسری جگہ ٹھہرنے کو کہا گیا۔

اس نے مزید لکھا کہ عدنان صدیقی کو تاج ہوٹل میں ہونے والے ڈنر کے لیے ٹرانسپورٹ کی سہولت بھی نہیں دی گئی حتیٰ کہ ان کو رکشہ میں سفر کرکے تاج ہوٹل پہنچنا پڑا۔

اس خبر کے حوالے سے اداکار عدنان صدیقی نے لکھا کہ "اگر آپ کوئی خبر لگانا چاہ رہے ہیں تو کم از کم اس کی حقیقت اور سچائی کو جانچ کر لکھیں، اور نہیں تو جس سے متعلق لکھ رہے ہوں کم سے کم اس سے ایک دفعہ تصدیق ضرور کریں”۔

اداکار عدنان صدیقی نے مزید لکھا کہ "اس طرح کرنے سے نہ صرف آپ اپنے پڑھنے والوں کو غلط خبریں دے رہے ہیں بلکہ میرے بھی ان لوگوں سے تعلقات خراب کر رہے ہیں جو کہ دوسری انڈسٹریز میں میرے اچھے دوست ہیں”۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >