”سی سی پی اوکی معافی ناکافی،شہبازشریف کی معافی پر واہ واہ“،سوشل میڈیاپرردعمل

شہبازشریف کی موٹروے واقعہ پر معافی کو اینکرز اور صحافیوں کی جانب سے تحسین کی نگاہ سے دیکھنے پر سوشل میڈیا صارفین نے اینکرز ااور صحافیوں کے تضادات بے نقاب کردئیے۔

کچھ روز قبل سی سی پی او لاہور نے ایک نجی ٹی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس خاتون کو رات 1 بجے گھر سے نہیں نکلنا چاہئے تھا، اگر جانا ضروری تھا تو موٹروے کی بجائے جی ٹی روڈ کے راستے سے جاتی جہاں آبادی بھی ہے اور پٹرول پمپس بھی ہیں۔

اس واقعہ پر سوشل میڈیا پر طوفان برپا ہوگیا اور سی سی پی او لاہور سے معافی کےساتھ ساتھ استعفیٰ کا مطالبہ کیا جانے لگا جس میں اینکر حامدمیر، منصور علی خان، عاصمہ شیرازی، بینش سلیم، ثناء بچہ، نسیم زہرہ اور دیگر صحافی پیش پیش تھے۔ عمر شیخ نے معافی مانگی لیکن ان صحافیوں نے عمر شیخ کی معافی کو رد کردیا۔

جب شہباز شریف نے بھی موٹروے واقعے پر الفاظ استعمال کئے کہ جس موٹروے پر خاتون سے زیادتی ہوئی ہے وہ موٹروے الحمداللہ نوازشریف نے بنوائی ہے تو ان صحافیوں نے نرم الفاظ میں تنقید ضرور کی لیکن شہباز شریف کے استعفے کا مطالبہ نہیں کیا ۔

لیکن جب شہبازشریف نے معافی مانگی تو ان صحافیوں نے شہباز شریف کی بھرپور پذیرائی کی لیکن استعفیٰ کا مطالبہ سامنے نہیں آیا۔ جس پر سوشل میڈیا صارفین نے انکے سکرین شاٹس شئیر کرنا شروع کردئیے کہ یہ عمر شیخ کی معافی پر کہتے تھے کہ ہمیں معافی قبول نہیں ، یہ استعفیٰ دے لیکن شہبازشریف کی معافی پر اسکی تعریفوں کے پل باندھ رہے ہیں۔

حامد میر جو سی سی پی او لاہور کے خلاف ٹی وی پروگرامز کرتے رہے، سی سی پی او کی معافی کے باوجود لوگوں سے پوچھتے رہے کہ سی سی پی او کی معافی قابل قبول ہے لیکن شہبا زشریف کی باری کوئی ایسا سوال نہیں کیا بلکہ معافی مانگنے پر شہبازشریف کا شکریہ ادا کرتے رہے۔

اسی طرح عاصمہ شیرازی بھی پوچھتی رہیں کہ سی سی پی او کی معافی قابل قبول ہے لیکن شہبازشریف کی معافی پر انکی پذیرائی کرتی رہیں۔

غریدہ فاروقی نے سی سی پی او کی معافی قبول کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ اسکی معافی اسلئے قبول نہیں کیونکہ یہ اسکا مائنڈ سیٹ ہے

لیکن شہبازشریف کی معافی پر انکے الفاظ کو انکا مائنڈ سیٹ نہیں کہا اور انکی معافی پر شہبازشریف کو قوٹ کرکے تعریفوں کے خوب پل باندھے۔

منصور علی خان نے شہبازشریف کی معافی پر انہیں خراج تحسین پیش کیا لیکن سی سی پی او کی معافی پر پول شروع کیا کہ کیا سی سی پی او معافی مانگنے کے بعد معافی کا حقدار ہے؟

سی سی پی او کی معافی پر ثناء بچہ نے ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ آپکی معافی ناکافی ہے لیکن شہباز شریف کی معافی پر انکی تعریف کی۔

اینکرز اور صحافیوں کے تضادات پر سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ سی سی پی او کی معافی ناکافی لیکن شہبازشریف کی معافی پر واہ واہ واہ۔۔ کیا یہ کھلا تضاد نہیں؟

مدثر علی نے لکھا کہ سی سی پی او کو معافی مانگنے کے باوجود نکالنے سے کم پہ بات نہیں ہو رہی جبکہ شہبازشریف جس سے استعفیٰ مانگا جا سکتا اسے اپریشیئیٹ کیا جا رہا ہے۔

عنبرین نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ عاصمہ شیرازی بمقابلہ عاصمہ شیرازی ۔۔۔ کیا سی سی پی لاہور کی معافی قبول ہونی چاہیئے ۔ عاصمہ شیرازی ۔۔۔ شہباز شریف کی معافی قابل تعریف ۔ عاصمہ شیرازی

    • ان شیطانوں کا منافقانہ رؤیہ بہت جلد عوام کے سامنے آ جاتا ھےاپنے کرپٹ آقاؤں کے
      سامنے کیسے ہاتھ باندھ کر کھڑے ہیں اور آپنی چاپلوسی کا منافقانہ چہرے پییش کر رھے ھیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >