نوازشریف کی تقریر پر سوشل میڈیا صارفین اور صحافیوں کے دلچسپ تبصرے اور میمز

اپوزیشن کی اے پی سی اور نوازشریف کی تقریر پر سوشل میڈیا صارفین کے دلچسپ تبصرے اور میمز

گزشتہ روز اپوزیشن جماعتوں نے عمران خان حکومت کے خلاف اے پی سی کا انعقاد کیا جسے سوشل میڈیا صارفین نے کرپٹ سیاستدانوں کا اجتماع قراردیدیا۔ نوازشریف نے بھی گزشتہ روز تقریر کی جس میں نوازشریف نے نہ صرف افواج پاکستان پر تنقید کی بلکہ چئیرمین نیب، عاصم باجوہ ، جنرل آصف غفور، سی سی پی او لاہور کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔

اپنی تقریر میں نوازشریف نے ڈان لیکس کا بھی اعتراف کیا اور جسٹس قاضی فائز عیسیٰ، جسٹس شوکت عزیز صدیقی ، میر شکیل الرحمان کے حق میں بھی بولے ۔ نوازشریف کی یہ تقریر سوشل میڈیا پر زیربحث رہی، سوشل میڈیا صارفین نے نوازشریف کی تقریر کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

ناصر خان نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ حکومت کو تو نواز شریف کے خطاب پر خوش ہونا چاہئے حکومت کو تو سیاسی فائدہ ہے نواز کی بیماری expose ہوگی ۔ فضل رحمان ، شہباز شریف اور زرداری وغیرہ اکٹھے ہوں تو اس میں حکومت کو فائدہ ہے جب یہ سارے حکومت کے خلاف اکٹھے ہوں تو سیاسی طور پر حکومت کی پوزیشن بہتر ہوگی

صحافی ارشاد بھٹی نے اپنے تبصرے میں لکھا کہ یہ چوتھی بار آل بچاؤ،مال بچاؤ،کھال بچاؤ اکٹھ،کوئی لندن محل سےویڈیولنک پر،کوئی کراچی محل سےبراہِ راست،کوئی اسلام آبادفائیوسٹارہوٹل میں،سبکےسب ایکدوسرےکےمخالف،سبکےسب ایکدوسرےکی ضدمگر چونکہ سبکامقصد ایک آل بچاؤ،مال بچاؤ،کھال بچاؤ لہذا مجبورًا وہ کچھ کہنا،کرناپڑ رہاجو کبھی سوچانہ تھا

فوادچوہدری نے اپنے تبصرے میں لکھا کہ کل کے خطاب میں جہاں نواز شریف نے یہ تذکرہ ادھورا چھڑا کہ کیسے ماضی میں انھوں نے فوج اور عدلیہ سے ساز باز سے سیاست میں جگہ بنائ وہیں وہ یہ بتانا بھی بھول گئے کہ یوسف رضا گیلانی کیخلاف افتخار چوہدری کے کہنے پر وہ خود کالا کوٹ ہہن کر عدالت جا پہنچے تھے، اوراب یہ مگرمچھ کے آنسو ۔۔

اینکر نادیہ مرزا نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ یاد آتا ہے اب بھی وہ گزرا یوا زمانہ لندن سے لائیو خطاب اور لوگوں کا سر جھکانا

صحافی شاہین صہبائی نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ نواز نے سچ بول دیا : مولانا صاحب خوش ہو گئے ہونگے جب نواز شریف نے کہا سارے پرانے انتخاب پہلے سے فکس کرے جاتے تھے سب لوگ سلیکٹ ہوتے تھے اور فیصلے پہلے ہو جاتے تھے- ظاہر ہے نواز شریف سے زیادہ ان باتوں کو کون جانتا ہے – یہ بھی بتا دیں وہ کتنی بار سلیکٹ ہوۓ – ہم کو تو پتا ہے

اکبرنامی سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ میاں صاحب لگتا ہے ابھی تک 2018 میں ہیں , کیونکہ ن لیگ کی حکومت تک ہم تنہائی کا شکار تھے اور ہماری کوئی بات نہیں سنتا تھا اب تو الحمداللہ ہماری ساری دنیا سنتی ہے جاوید اقبال کو لگانے والے نواز اور زرداری آج اسکے خلاف اے پی سی کررہے

اسکے علاوہ بھی دیگر سوشل میڈیا صارفین نے دلچسپ تبصرے اور میمز شئیر کرتے ہوئے لکھا کہ نوازشریف نے اپنے آپکو ایکسپوز کرلیا ہے۔

  • kis ney MNS ko jali health certificate per NRO diya- kon kis ka sathi hey sab ko peta hey -WHO GAVE FAKE HEALTH CERTIFICATE? WHO APPROVED IT? WHO GAVE NRO? ALL SHOULD BE TRIED. THEY ARE NATIONAL CRIMINALS.

  • کچھ حلقوں کو اس وقت شدید مایوسی ہوئی جب امید تھی کہ نواز شریف ان جعلی اسمبلیوں سے استعفی دینے اور خود فورا وطن واپسی کا اعلان کریں گے مگر افسوس ، زبانی جمع خرچ کے سوا ان کی طرف سے کسی ٹھوس اور عملی فیصلے کا اعلان نہ ہوا۔

  • لوگوں نے اس پٹواری نواز شریف چور مفرور شخص کو صیح جوابات دیئے خود جس نرسری کی پیدوار اور تمام دور سیاست میں فراڈ جھوٹ دھوکے چور دروازوں سے اقتدار میں آنا اور لوٹ مار کرنا اور یہ ڈھیٹ بیشرم بیغرت انسان دوسروں پر الزام لگا رہا ھے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >