مریم نواز کے بعد غریدہ فاروقی اور شہبازگل کے درمیان لفظی جنگ

گزشتہ روز مریم نواز کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے کسی نمائندے نےآرمی چیف سے ملاقات نہیں کی،تمام فیصلے پارلیمنٹ میں ہونے چاہئیں۔

مریم نواز کے اس بیان پر پر غریدہ فاروقی نے اپنے ٹویٹ میں تبصرہ کیا تھا کہ مریم نواز صاحبہ نے کُھل کر شہباز شریف صاحب و دیگر کے آئی ایس آئی میس میں ملاقات کیلئے جانے کی مخالفت کر دی۔ ن لیگ آفیشل اکاؤنٹ سے ٹویٹ۔ جبکہ احسن اقبال صاحب نے کل ہی ہمارے پروگرام میں کہا کہ اِسمیں کوئی حرج نہیں پوری دنیا میں ہوتا ہے۔

جس پر مریم نواز تپ گئیں اور ٹوئٹر پر غریدہ فاروقی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ زیادہ ہوشیار نہ بنو، اور گندہ کھیل نہ کھیلو۔ میں نے ایک اصولی بیان دیا جو ہمارے آئین کے مطابق ہے۔ اسے ایسا مت بولو جس سے لگے کہ ہماری پارٹی کے صدر یا کسی خاص ممبر کی ہدایت پر دیا گیا ہے۔

غریدہ فاروقی کے ٹویٹ کو گندہ کھیل کھیلنا کہنے پر غریدہ فاروقی جو ن لیگ کی حامی سمجھی جاتی ہیں، جواب دئیے بغیر نہ رہ پائی ۔ غریدہ فاروقی نے جواب دیا تو شہبازگل بھی پیچھے نہ رہے اور غریدہ فاروقی کو جواب دیدیا اور ن لیگ کی حامی ہونے کا طنز بھی کردیا۔

اپنے ٹویٹ میں ڈاکٹر شہباز گل نے لکھا کہ آپ ہی دن رات ان کو پاکستان کا نجات دہندہ اور لبرل بنا کر دکھانے کا شوق رکھتے ہیں-ورنہ یہ وہی ہیں جنہیں کیک نہ ملے تو جوتے مارتے ہیں جوتے آپ لوگوں کو (میرا مطلب ہم عام عوام کو) ، کیا مارتے ہیں ؟ جوتے۔ اب آپ نے یہ فیصلہ کر لیا ہوا ہے تو اب ساتھ ساتھ پیاز بھی کھائیں ان سے۔

جس پر غریدہ فاروقی غصہ میں آگئیں اور کہا کہ آپکے الفاظ اسقدر غیراخلاقی غیرمہذب اور خواتین کیلئے معاشرتی ادب آداب سے گِرے ہوئے ہیں کہ اب آپکو کیا جواب دوں۔ لیکن آپ نے سوچا ن لیگ والا "صحافیوں پر حملوں کا کریڈٹ”لینے میں پیچھے کیوں رہا جائے۔ آپ نے ہم خواتین صحافیوں کی 12اگست کی قرارداد کو ایک بار پھر سچ ثابت کر دکھایا۔

جس پر ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ کاش یہ جواب آپ ان کو دیتی جنہوں نے آپکو ناسٹی بولا۔مطلب گندہ بولا اب پتہ چلا آپکے نزدیک ناسٹی قابل قبول ہے کیوں کہ وہ شریفوں کے گھر سے بولا گیا لیکن نہیں بولیں گی آپ،انکی تو آپ کیمرا مین تھیں۔ لیکن ہماری پیاز کھانے کی بات ادب آداب سے گری لگی۔ اور ہاں عورت کارڈ ہر وقت نہیں چلتا۔

جس پر ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ نہایت ادب کے ساتھ محترمہ،تحریک انصاف وہ واحد جماعت ہےجو خواتین کے احترام ،آزادی اور اختلاف رائے پر یقین رکھتی ہے۔جس پر ایک مخصوص حلقے سے ہمیں تنقید بھی برداشت کرنا پڑتی ہے۔ مریم نواز کا آمرانہ رویہ سب کے سامنے ہے ایک خاتون صحافی کے ساتھ ایسا برتاؤ؟ مرد صحافی ہوتا تو نہ جانے کیا ہوتا!

واضح رہے کہ ماضی میں ڈاکٹرشہباز گل اور غریدہ فاروقی کے درمیان ایک پروگرام میں جھڑپ ہوچکی ہے جس کے بعد غریدہ فاروقی نے ڈاکٹرشہباز گل کو اپنے پروگرام میں ہی بلانا چھوڑدیا تھا۔ اس پروگرام میں غریدہ فاروقی اور شہبازگل میں کافی تلخی ہوئی تھی ۔ ایک سوال پر شہباز گل نے کہا کہ آپ اپنے پرسنل موبائل سے شہباز شریف کی تصویر اتارا کرتی تھی اور آپ ان کی پرسنل فوٹو گرافر ہوتی تھی۔ آپ شہباز شریف کے ساتھ ہیلی کاپٹر میں بھی سوار ہوتی تھی۔

شہباز گل نے غریدا غریدہ فاروقی بہت ہی عندہ طریقے سے چھترول کردی لفافہ صحافی ہونے کا احساس بھی دلوایا

Posted by KHAN on Monday, August 26, 2019


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >