عامر لیاقت کے زو معنی ٹویٹ کوصارفین نے گھٹیا حرکت قرار دیتے ہوئے کلاس لے لی

عامر لیاقت کے زو معنی ٹویٹ کوصارفین نے 'گھٹیا حرکت' قرار دیتے ہوئے کلاس لے لی

پاکستان کے مشہور مذہبی سکالر اور پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹ پر کراچی سے قومی اسمبلی کے رکن منتخب ہونے والے عامر لیاقت حسین جو آئے روز سوشل میڈیا اور الیکٹرونک میڈیا پر دیے گئے اپنے بیانوں کی وجہ سے سوشل میڈیا صارفین کی تنقید کی زد میں رہتے ہیں۔

اسی تناظر میں عامر لیاقت حسین نے گھٹیا پن اور غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر زو معنی ٹویٹ کیا، جس پر سوشل میڈیا صارفین نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ان کو خوب آڑے ہاتھوں لیا۔

ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹوئٹر پرزو معنی ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ "چار انچ چھ انچ سے زیادہ آرام دہ ہے” ان کا اپنے اس ٹویٹ سے تھوڑا ہی نیچے لکھنا تھا کہ "فون زیادہ بڑا نہیں ہونا چاہیے”۔

ممبرقومی اسمبلی عامر لیاقت حسین کی جانب سے زو معنی  ٹویٹ کرنے پر سوشل میڈیا صارفین برہم ہوگئے اور ان کے مذکورہ ٹویٹ پر ان کو خوب آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے تنقید کا نشانہ بنایا، جبکہ کچھ سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے غیر ذمہ دارانہ رویے کا مظاہرہ کرنے پر حیرانی کا اظہار بھی کیا گیا۔

ام فاطمہ نامی سوشل میڈیا صارف کا عامر لیاقت کے ٹوئٹ پر حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے ان کو جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ "ایک پاکستانی مذہبی سکالر ہونے کے باوجود لوگوں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے اب آپ اس طرح کے ٹویٹ کریں گے؟ مجھے تو یقین ہی نہیں ہو رہا کہ یہ آپ کا اپنا ذاتی اکاؤنٹ ہے، آج آپ نے میرے دل میں اپنی عزت کو مزید کم کر لیا ہے”۔

احسن نام میں سوشل میڈیا صارفین نے عامر لیاقت کے ٹویٹ کے جواب میں "گاندھی کی تصویر شیئر کی جس میں لکھا تھا کہ میں بھی ایسی باتیں کرتا تھا، پھر کسی نے مجھے گولی مار دی”۔

حورین نامی سوشل میڈیا صارف نے عامر لیاقت کو اس کے ٹویٹ کا جواب دیتے ہوئے انہیں "کونٹینٹ چور” کہہ ڈالا، تاہم انہوں نے اپنے جواب میں فیس بک پوسٹ کا سکرین شاٹ بھی اٹیچ کیا، جس میں کسی فیس بک صارف کی جانب سے دو دن پہلے یہی الفاظ پوسٹ کیے گئے تھے جو عامر لیاقت کی جانب سے ٹوئٹر پر پوسٹ کیے گئے ہیں۔

غیور نقوی نامی ٹویٹر صارف کا شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے عامر لیاقت کو ٹیگ کرتے ہوئے لکھنا تھا کہ "‏‎‎عامر بھائی اگر خبروں میں رہنے کا اتنا ہی شوق ہے تو کچھ بھی کر لیتے یہ تو نہ کرتے کم ازکم اس ٹوئیٹر پر ہماری بہن بیٹیاں ہیں”۔

اسی طرح افضل نامی صارف کا عامر لیاقت حسین کو جواب دیتے ہوئے اپنے ٹویٹ میں کہنا تھا کہ "‏‎ویسے بھائی آپ نے اور خان صاحب نے ہمیں یہ بھی سکھا دیا ہے۔ کہ ہر بندے کی گفتگو پر بھروسہ مت کرنا”۔

  • Ye lafanga admi mazhabi scholar nahi mazhabi shobdabaz he.
    Iski ki nangi batein iske nange zehn ki akasi karti hein. Isko apni beti ko samjhana chahye ke 4 inch zyada comfortable he, iska apna tajurba bhi yehi kehta ho ga.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >