چڑیا گھر پر پروگرام کرنے پر سوشل میڈیا صارفین کی حامد میر پر جگتیں،حامد میر کاجواب

ایک طرف سیاسی ہلچل۔۔ دوسری طرف حامد میر سیاست کو چھوڑچھاڑ کر چڑیا گھر پروگرام کرنے نکل پڑے۔۔ سوشل میڈیا صارفین کے دلچسپ چٹکلے اور حامد میر پر جگتیں

حامد میر اپنے انکشافات کے حوالے سے کافی مشہور ہیں ، ماضی قریب میں حامد میر نے متعدد دعوے کئے لیکن انکے دعوے سچ ثابت نہ ہوسکے، حامد میر نے کچھ عرصہ قبل دعویٰ کیا تھا کہ نوازشریف کی منتیں ہورہی ہیں کہ باہر چلے جائیں لیکن نوازشریف باہر نہیں جائیں گے۔ نوازشریف کے باہر جانے کے بعد حامد میر نے پھر دعویٰ کیا کہ نوازشریف 4 ہفتوں میں واپس آئیں گے لیکن 10 ماہ ہوگئے نوازشریف وطن واپس نہیں آئے۔

حامد میر نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ جیل والا نوازشریف باہر والے نوازشریف سے زیادہ خطرناک ہے۔

کچھ روز قبل یہ خبریں منظرعام پر آئیں کہ ن لیگی اور پی پی رہنماؤں کی آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی سے ملاقات ہوئی ہے ، اسکے بعد ایک دھماکہ خیز خبر آئی کہ نوازشریف کے نمائندے نے مریم نواز اور نوازشریف سے متعلق آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی سے ملاقات کی جو کئی گھنٹے جاری رہی۔

یہ خبر حامد میر اور ن لیگی رہنماؤں کے لئے شاکنگ تھی جس کے بعد ن لیگ اور انکے حامی صحافیوں کے ٹوئٹر اکاؤنٹس خاموش ہوگئے۔ حامد میر نے بھی گزشتہ روز اس پر کوئی پروگرام نہ کیا بلکہ وہ چڑیا گھر چلے گئے اور وہاں جانوروں پر ہونیوالے مظالم کے حق میں آوازیں اٹھانا شروع کردیں۔

حامد میر کے اس اقدام پر سوشل میڈیا صارفین نے حامد میر کا مذاق بنانا شروع کردیا۔

آزاد منش نے فقرہ چست کرتے ہوئے لکھا کہ حامد میر شریف شدید صدمے میں ہے آج چڑیا گھر پہ اسکا پروگرام بھی بہت پہلے ریکارڈ کیا گیا ہوگا آج ٹینشن میں نیا پروگرام نہیں کر سکا۔

ایک سوشل میڈیا صارف نے حامد میر پر طنز کیا کہ لگتا ہے کہ کیپیٹل ٹاک کے پاس یہی ٹاپک رہ گیا ہے جس پر حامد میر نے کہا کہ کیپیٹل میں اتنا بڑا ہاتھی جیسا مسئلہ کسی کو نظر نہیں آ رہا تھا میں نے آپکو ہاتھی دکھا دیا تو کیا برا کیا؟ اس ہاتھی کو عدالت نے ظلم سے نجات دلائی ہے باقی جانوروں کو بھی جلد ظلم سے نجات ملے گی بس گھبرانا نہیں ہے

حسن بلوچ نامی سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ میر صاحب کیا ہوگیا ہے نواز شریف کے دکھ میں آج پروگرام نہیں کیا ہے کیا؟

جس پر حامد میر نے کہا کہآپکو سمجھ نہیں آئی کہ اسلام آباد کا چڑیا گھر بند کر دیا گیا ہے سب جانوروں کو راولپنڈی بھیجا جا رہا ہے صرف ایک ہاتھی ہے جو راولپنڈی کی بجائے کمبوڈیا جائے گا کیونکہ ہاتھی کو راولپنڈی میں سنبھالنا مشکل ہے جب کوئی بہت بھاری اور بیمار ہو جائے تو اس باہر بھیجنے کی روائت پرانی نہیں ہے

ابرار علی طور نے لکھا کہ جنگ اور دی نیوز نے محمد زبیر کی فوجی قیادت سے ملاقات اور نواز شریف کے لیے ریلیف مانگنے کی خبر نہیں لگائی، جیو نے رپورٹ کارڈ میں بھی اس معاملے پہ بحث نہیں کی اور حامد میر صاحب کو چڑیا گھر کی یاد ستانے لگی۔ لگتا ہے مریم نواز نے ڈوریاں زیادہ کھینچی ہیں۔

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ بھائی ایکسٹرا انٹلیجنٹ صاحب۔۔۔ چڑیا گھر کو چھوڑو اس سے زیادہ اہم ٹاپک ھیں اجکل۔ زبیر کی ملاقاتیں۔۔۔ مریم کو پتا نہیں۔۔۔ رانجھا کی عمر شیح کو گالیاں۔۔۔ کافی ھیں یا اور بتاوں۔۔۔ 2020 میں جتنا حامد میر ایکسپوز ہوا ہے شاید ہی اور کوئی ہوا ہو۔

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ حامد میر کچھ دن پہلے ٹویٹ رہا تھا کہ APC پیچھے رہ گئی ہے اور نواز شریف کی تقریر آگے نکل گئی ۔۔ جب نوازشریف expose ہوا تو اپنی خفت مٹانے کے لئے چڑیا گھر کی سیر پر پروگرام کرتا رہا ۔

  • واقعی شیروں کو اسلام آباد سے دیس نکالا دیا گیا ہے۔ اب سب جانور راولپنڈی جاتے ہیں جب کہ بڑے ہاتھی کو باہر بھیج دیا ہے نان نفقہ اس کا پہلے ہی سے باہر جمع ہے۔

  • حامد میر ایسے تو آ نہین سکتا عوام کے جم غفیر میں اس نے سوچا جہ چلو آج جانوروں کےجم غفیر میں چلتے ہیں تاکہ تھوڑی سی عزت بچ جائے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >