مریم نواز اور لیگی رہنما عمران خان اور انکی اہلیہ پر کیا ذاتی حملے کرتے رہے؟

کچھ روز قبل تحریک انصاف کے وفاقی وزیر نے گلگت بلتستان کے ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مریم نواز بہت خوبصورت ہے اس میں کوئی شک نہیں لیکن اسکی خوبصورتی کا راز ہمارے اور آپکے مال کی وجہ سے ہے۔

علی امین گنڈاپور کے اس بیان پر مختلف صحافیوں نے علی امین گنڈاپور کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جس پر تحریک انصاف کے حامیوں نے سوال اٹھایا کہ جب ن لیگی رہنما اور مریم نواز خود ذاتی حملے کرتی ہیں تب یہ اینکرز کیوں خاموش رہتےہیں؟ جس پر کچھ اینکرز اور صحافیوں کے پاس دینے کیلئے جواب نہیں تھا ، کچھ کہتے رہے کہ ہم نے اس پر بھی آواز اٹھائی تھی۔

ماضی قریب مریم نواز خود بھی وزیراعظم عمران خان پر ذاتی حملے کرتی رہی ہیں۔ مریم نواز کا ایک کلپ شئیر کرتے ہوئے ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ اس بی بی کی زبان اور سوچ کس قدر پست ہے آپ خود ہی دیکھ لیں۔

اس کلپ میں ایک صحافی نے مریم نواز سے سوال کیا کہ عمران خان کہتے ہیں کہ میاں صاحب صادق اور امین نہیں تھے اسلئے نااہل ہوگئے جس پر مریم نواز نے کہا کہ عمران خان کی بیٹی سے پوچھیں کہ وہ کتنے صادق اور امین ہیں۔

ایک اور کلپ میں مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان پر ذاتی حملہ کیا تھا اور کہاتھا کہ ایک نشئی اور سیلیکٹڈ کو کھیل سے میدان سے اٹھاکر ہمارے سروں پر مسلط کردیا گیا۔

جس پر ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ اس بی بی کی اخلاقیات تو بہت ہی گھٹیا ہے۔ زبان بھی گھٹیا ہے۔ لگتا ہے زبان اور سوچ کی پلاسٹک سرجری ہوئی ہوئی ہے۔ ایسی گھٹیا زبان استعمال ہو گی تو لوگ جواب تو دیں گے۔

اسکے علاوہ بھی سوشل میڈیا صارفین اور پی ٹی آئی رہنماؤں نے مریم نواز ، رانا ثناء اللہ، عابدشیرعلی، دانیال عزیز، میاں جاوید لطیف ، شہباز شریف اور دیگر لیگی رہنماؤں کے کچھ کلپس شئیر کئے جس میں وہ وزیراعظم عمران خان اور انکی اہلیہ پر ذاتی اور گھٹیا حملے کررہے ہیں۔

ان کلپس میں ن لیگی رہنما جہاں وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ سے متعلق نازیبا زبان استعمال کرتے دیکھے جاسکتے ہیں وہیں یہ لیگی رہنما شیریں مزاری پر بھی گھٹیا حملے کرتے دکھائی دیتے ہیں، فردوس عاشق اعوان پر بھی نامناسب فقرے بازی کرتے دیکھے جاسکتے ہیں، مراد سعید اور انکی فیملی پر بھی گھٹیا فقرے بازی کررہے ہیں۔

  • اس میں کوئی شک کی بات نہیں ھے مسلم لیگ ن اور ان کے حواریوں کا ٹولہ ہر مخالف سیاست دان کی پرسنل لائف کو ماضی میں بھی ہر جھوٹی تہمتیں خواہ مخواہ جھوٹ بول کر
    لگا تا رہا ھے خواہ وہ خواتین ہوں یا مردحضرات نشانہ بناتا رہا ھے آج بھی ان کی یہ ہی سیاست ھے اور مستقبل میں بھی ان ٹھگوں کا یہ ہی سیاست ھے
    اور جب جواب میں ان نونی مافیاز ٹھگوں کی زندگی کا داغدار ماضی عوام کے سامنے پیش کیا جاتا ھے جو کہ حقائق پر مشتمل ہوتا ھے تو تمام نونی مافیاز کے غلام صحافیوں کا ٹی وی چینلز پر ٹولہ اخلاقیات کا درس دینا شروع کر دیتے ہیں اور پہلے اپنے کرپٹ باپ نواز شریف اور ان کی اولادوں اور حواریوں کے لئے کوئی درس نہیں ھے نونی مافیاز ٹھگوں کی لیگ اور ان کےحواریوں کے ٹولہ جن میں حرام خور صحافیوں کا ٹولہ اور حرام خور میڈیا بھی شامل ھے سب کے کردار ایک جیسے ہی ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >