انٹرنیٹ پر وائرل ویڈیوز کو بختاور اپنی منگنی سے منسوب کیے جانے پر پھٹ پریں

منگنی سے قبل جعلی ویڈیوز وائرل ہونے پر بختاور بھٹو زرداری کا سخت برہمی کا اظہار

15 نومبر کو سابق صدر آصف زرداری نے بتایا تھا کہ 27 نومبر کو وہ اپنی بڑی صاحبزادی بختاور بھٹو کی منگنی ایک کاروباری خاندان کے ساتھ کریں گے۔

اس کے بعد واضح تو ہو گیا تھا کہ منگنی 27 نومبر کو ہی ہو گی مگر اس سے قبل ہی انٹرنیٹ پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جسے بختاور کی منگنی کی ویڈیو کہا جانے لگا۔

اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد بختاور بھٹو میدان میں آ گئیں اور اپنی منگنی سے منسوب کی جانے والی اس ویڈیو پر ردعمل دیتے ہوئے ٹوئٹر پر ویڈیو شیئر کرنے والے شخص انیس جیلانی سے کہا کہ اگر کسی بھی شخص کو پڑھنا نہیں آتا تو وہ کم از کم مذکورہ ویڈیو میں ان کی اور ان کے اہل خانہ کی غیر موجودگی پر تو غور کرے۔

بختاور بھٹو زرداری نے یہ بھی کہا کہ ان کی منگنی کے لیک ہونے والے کارڈ پر منگنی کی تقریب کی تاریخ واضح طور پر 27 نومبر لکھی ہوئی ہے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی بختاور کی منگنی کو لے کر میڈیا میں خبریں چلتی رہیں مگر ان خبروں کو بھی بختاور اورپیپلز پارٹی ترجمان کی جانب سے مسترد کیاگیا تھا۔

ختاور بھٹو زرداری کی منگنی کل مورخہ27 نومبر بروز جمعۃ المبارک کو صنعت کار محمد یونس چوہدری کے بیٹے 32 سالہ محمود چوہدری سے بلاول ہاؤس میں ہوگی اور اس ضمن میں انتظامات کو مکمل کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ منگنی میں شرکت کرنے والے مہمانوں کے لیے کورونا کا منفی ٹیسٹ لازمی قرار دیا گیا ہے جب کہ تقریب کو انتہائی محدود اور سادہ رکھنے کے انتظامات بھی کیے گئے ہیں۔

خبر ہے کہ ان کے بھائی اور چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو بھی کورونا کے شکار ہیں اس لیے وہ بھی تقریب میں شرکت نہیں کریں گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >