اسحاق ڈار کے بی بی سی انٹرویو پرسوشل میڈیا پر دلچسپ تبصرے، ویڈیوز اور میمز

ساب وزیرخزانہ اور نوازشریف کے سمدھی اسحاق ڈار سے بی بی سی اینکر کے سخت سوالات۔۔ اسحاق ڈار کے پسینے چھوٹ گئے۔۔ اسحاق ڈار کے انٹرویو پر سوشل میڈیا صارفین کے دلچسپ تبصرے

سابق وزیراعظم نواز شریف کے دور کے وزیر خزانہ اسحاق ڈار جو ملکی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا کر ملک سے فرار ہو گئے لندن میں پناہ لیے بیٹھے ہیں نے بی بی سی کے صحافی سٹیفن سیککور کو انٹرویو دیا، جس میں انہیں سخت سوالات کا سامنا کرنا پڑا، صحافی کے سوالات کے اسحاق ڈار کی جانب سے دیئے گئے جوابات پر سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے شدید رد عمل کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ اسحاق ڈار سٹیفن سکر کو بھی پاکستانی صحافی سمجھ کر گئے تھے ۔ جنہوں نے اسحاق ڈار اور نوازشریف کو پناہ دی ، وہی اب اسے ذلیل کررہے ہیں۔ کچھ سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ یہ تو اسحاق ڈار تھا اور اسکی یہ حالت ہوگئی، اگر نوازشریف ہوتا تو اسکی کیا حالت ہوتی؟ کچھ سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ یہاں تو لفافہ صحافیوں کو اپنی مرضی کے سوالات دیکر انٹرویو دیکر بچ جاتے تھے لیکن برطانیہ میں انکے لفافے نہیں چلتے۔

سید فیاض علی نے لکھا کہ اسحاق ڈار سلیم صافی کی تیاری کر کے گیا تھا لیکن پیپر میں سٹیفن سکر آ گیا۔

سوشل میڈیا صارف سلطان رحمت خان کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ "اسحاق ڈار شاہ زیب خانزادہ ، حامد میر ، منصور علی خان ، غریدہ فاروقی کے لئے تیار ہو کر گئے تھے لیکن اسٹیفن سیکور ان کو آوٹ آف سلیبس ملے”

صدف کنول نامی ٹویٹر صارف کا اپنی ٹویٹ میں حساب دار پر ٹرول کرتے ہوئے کہنا تھا کہ "اسحاق ڈار خود کو لفافہ صحافیوں کے لیے تیار کر کے گئے تھے جیسے کہ سلیم صافی، لیکن اسٹیفن سیکور ان کو آوٹ آف سلیبس ملے” صدف کنول نے اپنی ٹوئٹر پیغام کے ساتھ کیپشن میں یار کی جس میں لکھا تھا کہ "مجھے لفافی کے پاس جانا ہے”

https://twitter.com/Dreamaholic1/status/1333858361394257920?s=19

ایان عثمان نامی صارف کا اسحاق ڈار کو ریپلائی کرتے ہوئے کہنا تھا کہ "کیا آپ نہیں جانتے تھے کہ یہ ہارڈ ٹاک ہے، کیپٹل ٹاک نہیں، کیا آپ نہیں جانتے تھے کہ یہ اسٹیفن سیکور ہے سلیم صافی نہیں”

محمد فیصل نامی صارف کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ "ایک سچا صحافی اسٹیفن سیکور کی طرح بات کرتا ہے، ہمارے ملک کے لفافہ صحافیوں کو شرم آنی چاہیے”

زاہد حسین نامی کا ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں اسحاق ڈار اور حامد میر کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہنا تھا کہ "اسحاق ڈار یہ کوئی پاکستانی میڈیا اینکر پرسن نہیں ہے جہاں وہ آپ کی پسند کے سوالات پوچھیں گے۔ اسحاق ڈار، اسٹیفن سیکور سوالات کے سامنے بے بس ہیں۔ اس ہارڈ ٹاک کو دیکھ کر حامد میر آج بہت پریشان ہوا ہو گا”

آزاد منش نے لکھا کہ اسحاق ڈار جیسوں کی موجیں ہوتی ہیں، عمران خان کی اگلی حکومت بھی آ جائے تو ڈار نے لندن ہی زندگی گزارنی ہے، ساری دولت اسکی بیرون ممالک، اور بچوں کے نام پر ہے، دس سال بعد زندہ نہ بھی ہوا تو نقصان کوئی نہیں، جب کوئی اور حکومت آئے گی اسکے بچے آکے اس حکومت میں سینیٹر وزیر لگ جائیں گے

اسحاق ڈار کے انٹرویو پر دیگر سوشل میڈیا صارفین نے بھی دلچسپ ردعمل کا اظہار کیا اور مختلف میمز اور ویڈیوز بنائیں۔

یاد رہے کہ سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے لندن میں بی بی سی کے صحافی اسٹیفن سیکور کو ایک انٹرویو دیا تھا، جس میں بی بی سی کے صحافی نے اسحاق ڈار سے سوال کیا کہ ” اگر آپ کی پاکستان میں یہ پاکستان سے باہر ہے کی جائیداد ہے اور آپ نے ٹیکس بھی ادا کر رکھا ہے تو آپ پاکستان واپس جا کر مقدمہ درج کیوں نہیں کرواتے؟” جس پر اسحاق ڈار کے پسینے چھوٹ گئے اور وہ بی بی سی کے صحافی کے سوال پر بے بس دکھائی دیے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >