واٹس ایپ پالیسی پر بحث یا انٹرٹینمنٹ ؟ پاکستان میں میمز کی بوچھاڑ

واٹس ایپ کی پالیسی میں تبدیلی کے عمل نے جہاں صارفین کو ڈاریا وہیں پاکستانیوں نے روایت کے مطابق اس کو بھی انٹرٹینمنٹ کا سامان بنایا، سوشل میڈیا پر میمز کی برسات کردی، واٹس ایپ کی نئی پالیسی کے مطابق کہا جارہا ہے کہ اس سے صارف کی پرائیوسی ختم ہوجائے گی، دو افراد یا گروپ کے درمیان میسجز،ویڈیو، کالز یا جتنا سب کچھ ہورہا ہے وہ سب شیئر کیا جائے گا، پاکستان صارفین نے تو اس بات کو ایسا مذاق میں لیا کہ واٹس ایپ ہیدکوارٹر کا نقشہ ہی کھینچ ڈالا۔

واٹس ایپ ہیڈکوارٹر ٹرینڈ چل پڑا، جس پر مزیدار تبصرے اور میمز شیئر کی جارہی ہیں،رمشا نے ایک مزاحیہ تصویر شییئر کی جس میں واٹس ہیڈ کوارٹر میں بیٹھے ملازم سڑ پکڑ کر بیٹھے ہیں کیونکہ انہوں نے پاکستانی کپل کی ریلیشن شپ گفتگو پڑھ لی ہے۔

حسن علی نے تصویر شیئر کی جس میں ہیڈاکوارٹرز میں بیٹھے افراد خوشیاں منارہے رہیں، وجہ لڑکی نے شادی کیلئے واٹس ایپ میسج پر ہاں جو کردی،اور بچوں نے کل سے پڑھنے کا وعدہ کرلیا۔

 

ایمن نے تصویر شیئر کی جس میں ہیڈکوارٹر میں موجود افراد غور سے سن رہے ہیں، کیونکہ لڑکی نے کہا ہے کہ تمھیں کچھ بتانا۔

جبران احمد نے خوشیاں مناتے ہیڈاکوارٹرز کا منظر شیئر کیا اور بتایا کہ لڑکی نے لڑکوں کو بتایا کہ استخارے میں ہاں آئی ہے۔

عبدالمعیز نے ڈھانچے کی وڈیو شیئر کی جس میں لڑکا بریک اپ کے بعد طویل پیراگراف لکھ رہا ہے۔

دیگر صارف بھی اسی طرح واٹس کی نئی پالیسی پر اپنا ردعمل دے رہے ہیں۔

واٹس ایپ کی نئی پالیسی کے مطابق صارف اپنا نام، موبائل نمبر، تصویر، اسٹیٹس، فون ماڈل، آپریٹنگ سسٹم کے ساتھ ساتھ ڈیوائس کی انفارمیشن، آئی پی ایڈریس، موبائل نیٹ ورک اور لوکیشن بھی واٹس ایپ اور اس سے منسلک دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو مہیا کرے گا،اگر آٹھ فروری تک واٹس ایپ کی پالیسی پر عمل نہیں کیا تو اکاؤنٹ بلاک کردیا جائے گا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >