ارناب گوسوامی سکینڈل پر پاکستانی میڈیا کے روئیے پر سوشل میڈیا صارفین کی تنقید

گزشتہ روز بھارتی صحافی ارناب گوسوامی کی چیٹ لیک ہوئی جو دیکھتے ہی دیکھتے سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی ۔ اس چیٹ میں پلوامہ حملے اور نام نہاد بالاکوٹ سرجیکل سٹرائیک سے متعلق حیران کن انکشافات کئے گئے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی واٹس ایپ چیٹ سے صاف ظاہر ہو رہا ہے کہ بھارتی اینکر ارنب گوسوامی کو پلوامہ حملہ اور بالاکوٹ ائیر سٹرائیک کا پہلے سے علم تھا تاکہ وہ پہلے سے ہی جنگی ماحول بنا سکے اور لوگوں کو اشتعال دلا سکے۔

واٹس ایپ گفتگو میں اس بات کی بھی نشاندہی ہوئی ہے کہ کس طرح سے سرکار کی نوکری کرنے والوں نے اپنے فوجیوں کو ہی ہلاک کر کے مودی اور اس کی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کو انتخابات جتوانے میں مدد دی۔

بھارتی حکومت نے اپنی فوج کے ہی 40 فوجیوں کو ہلاک کر کے جیت کا جشن منایا تھا جبکہ بھارت نے پلوامہ حملے میں ہلاک ہونے والے 40 فوجیوں کی ہلاکت کا براہ راست ذمہ دار پاکستان کو ٹھہرایا تھا، جس پر پاکستان نے حملے کی آزادانہ تحقیقات کی پیشکش کی تھی، جس سے بھارت آج تک بھاگتا آیا ہے۔

ارناب گوسوامی کی سوشل میڈیا پر چیٹ وائرل ہوئی ،پاکستانی میڈیا پر اسکی بریکنگ نیوز تو بنی لیکن کچھ وقت کیلئے۔۔ دلچسپ امر یہ کہ پاکستانی میڈیا تحریک انصاف فارن فنڈنگ، پی ڈی ایم کی حکومت کے خلاف تحریک، براڈشیٹ، پاکستانی طیارے کی ضبطگی پر پروگرام کرتا رہا لیکن ارناب گوسوامی کی چیٹ اور مودی کے پاکستان کے خلاف مکروہ عزائم میڈیا پر زیربحث نہ آئے

س پر سوشل میڈیا صارفین نے سوال اٹھایا کہ آخر پاکستانی میڈیا کیوں اس پر پروگرام نہیں کرتا؟ کیا انہیں کسی نے روکا ہے؟سوشل میڈیا صارفین نے یہ سوال بھی کیا کہ کرونا ویکسین پر تو مودی سرکار کی تعریفوں کے پل باندھے لیکن ارناب گوسوامی سکینڈل پر کیوں بات نہیں کررہے؟

سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ پہلے پاکستانی میڈیا نے ای یو ڈس انفولیب جس میں یہ انکشاف ہوا کہ کیسے بھارت پاکستان کے خلاف فیک نیوز چلواتا رہا، بے نقاب ہوا تو پاکستانی میڈیا نے اس پر بات نہیں کی بلکہ پی ڈی ایم کی تحریک پر بات کرتا رہا کہ کیسے حکومت کو گھر بھیجا جائے گا؟ کیسے پی ڈی ایم عمران خان کیلئے مشکلات کھڑی کرے گی؟

سوشل میڈیا صارفین نے یہ الزام بھی لگایا کہ پاکستانی میڈیا ن لیگ کے زیراثر ہے اور اس ایشو پر بات کرکے مریم نواز اور ن لیگ کو ناراض نہیں کرنا چاہتا، کچھ سوشل میڈیا صارفین نے تو پاکستانی صحافیوں کو بھارتی ہم نوا قرار دیا اور کہا کہ پاکستانی میڈیا پاکستان اور فوج کو بدنام کرنے میں تو پیش پیش ہے لیکن جب پاکستان کے حق میں یا انڈیا کے خلاف کوئی بات ہو تو پاکستانی میڈیا لمبی تان کر سوجاتا ہے۔

صحافی طارق متین نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ اب جبکہ ارنب گوسوامی مودی بھارت سب بے نقاب ہو گئے ۔ کیا فرماتے ہیں ہمارے وہ جید صحافی جو اپنے ہی اداروں پر چڑھ دوڑے تھے۔

راؤ جی نے لکھا کہ ارباب گوسوامی کے میسج پبلک ہوئے ہیں . مودی سے پیغامات کا تبادلہ ظاہر کرتا ہے کہ پلوامہ اٹیک کا انکو ایک دن پہلے پتا تھا اور پوری پلاننگ کرکے پاکستان پر الزام لگایا ہے. بھارت میں یہ ایک بڑی خبر ہے پاکستان میڈیا پر یہ ایک بہت بڑی بریکنگ نیوز ہونی چاہیے تھی مگر بکاؤ میڈیا سو رہا ہے

بلال ناصر کا تبصرہ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ارناب گوسوامی کی چیٹ لیک ہونے سے وزیراعظم کی بات درست ثابت ہوئی عمران خان نے کہا تھا کہ پلوامہ حملہ بھارت نے خود کروایا الزام پاکستان پر لگایا اس پر تو میڈیا کو واویلا مچا کر بھارت کی اصلیت دنیا کو دکھانا چاہئیے تھی لیکن ایسا کرنے سے خان کا موقف سچ ثابت ہوگا اس لیے سب خاموش ہیں

فہد علی نے لکھا کہ وہ پوچھنا یہ تھا کہ پلوامہ حملہ میں بھارت کے خلاف پاکستان کی عالمی جیت کی خبر مریم صفدر کے علم میں پہنچ گئی ہے یا نہیں؟ یا کنیزوں اور مریم نواز کے منہ کو بھارت کے خلاف بولنے پہ لقوہ ہوجاتا ہے؟

مدثر کا کہنا تھا کہ اُدھر ارناب گوسوامی کے موبائل چیٹ سے انکشاف ہوا کہ نریندرمودی نے پلوامہ حملہ خود پلان کیا اور انتخابات میں جیتنے کیلئے اپنے ہی فوجی مروا دیئے اس پہ بھارت کا اصلی چہرہ اور پاکستان کا مؤقف مضبوط بنانے کے بجائے ہمارے صحافی نریندرمودی کے گُن گا رہے کہ اس نے کووڈ ویکسین منگوائی ہے۔

اکبر نامی سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ پاکستانی صحافیوں کی عجیب حالت ہے جب جب انڈیا زلیل ہوتا یہ لوگ سوگ پر چلے جاتے پہلے انڈیا کی لاک ڈاؤن پالیسی کی تعریف کی جب وہ فلاپ ہوا تو اداس ہوگئے پھر انڈیا کا ڈس انفو سکینڈل آیا یہ سب سوگ میں چلے گئے اب ارناب گوسوامی سکینڈل پر چپ اور بیٹھے بیٹھے ویکسین پر انکی تعریف کررہے

سیدہ گلوش حنا نے لکھا کہ ارناب گوسوامی کی واٹس ایپ چیٹ لیک کے بعد پاکستانی جنرلوں صحافیوں اور عمران نیازی کو اپنی کرتوتوں کے لیک ھونے ڈر ستانے لگا

ایازترین کا کہنا تھا کہ ہمسایہ ملک کے ایک اینکر ارناب گوسوامی کی چیٹ سامنے آنے کے بعد پتہ چل گیا ہے کہ پلوامہ حملہ کس نے کروایا تھا۔ لیکن پاکستانی میڈیا میں بیٹھے کچھ بد بخت صحافت خور اپنی ہی ریاست پر اس کا الزام لگاتے رہے۔ ایسے لوگوں کو اب کیا شرم آنی چاہیے؟

آفاق نامی سوشل میدیا صارف نے لکھا کہ انڈین ارناب گوسوامی کی چیٹ لیک ہونے کے بعد پاکستانی ارناب گوسوامیوں کو اپنی چیٹ کی فکر پڑ گئی ہے۔

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ ارناب گوسوامی کی چیٹ لیک کا بھارت سے زیادہ دُکھ پاکستانی لفافوں کو ہوا ہے اس لیے لقوہ ہو گیا انکی زبانوں کو

جگا نامی سوشل میڈیا صارف نے پاکستانی میڈیا کو ناسور میڈیا کہتے ہوئے لکھا کہ ارناب گوسوامی کے میسج پبلک ہونے پر پاکستانی میڈیا کو، تو تھرتھلی ڈال دینی چائیے تھی لیکن۔۔۔۔۔

یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں 14 فروری کو ایک کار خود کش دھماکے میں 40 بھارتی فوجی ہلاک ہوئے تھے، جس کا الزام حسب روایت بھارت نے بنا کسی ثبوت اور تحقیقات کے براہ راست پاکستان پر لگا دیا تھا۔

بعد ازاں بات یہیں ختم نہیں ہوئی تھی بلکہ بھارتی اینکر ارنب گوسوامی نے 14 فروری کے پلوامہ حملے کو لے کر ماحول کو مزید کشیدہ کرتے ہوئے جنگی ماحول بنا دیا۔

جس پر 26 فروری کی رات بھارتی فضائیہ نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے درختوں پر بمباری کر کے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے جیش محمد کے کیمپ پر حملہ کیا ہے۔ ارنب کو اس حملے کا بھی پہلے سے معلوم تھا اور اس بات کا ثبوت اس کی وائرل چیٹ ہے۔

  • پاکستانی میڈیا کو فنڈنگ را اور انڈیا سے ہوتی ہے پاکستانی حکومت سے نہیں انکے واسطے ہی کامُ۔ کیا جاتا ہے جہاں سے فنڈنگ ہوتی ہے
    کالئے سلیمُ۔ بخاری ایڈز کی بیماری کنجر میراثی مثلی اور چوڑے سکیم بیماری تو ایسے بھونک رہا ہے جیسے اسکی ماں کے خصموں کی چیٹ پاکستان کی حکومت کی نا اہلی دے ہوئی

  • Hamid Mir Jafar, Najam Sethi, Mohd Malick, Asma Shirazi, Salim Safi, Rauf Klasra, Ansar Abbasi, Danish, Salem Bukhari..etc..etc..are the pioneer of LIFAFA culture in Pak media.
    They have destroyed the ethics of Journalism.
    They just server their Local & International Masters in exchange of Lifafa.

  • We have no Pakistani media, nor Pakistani journalist here in Pakistan…almost all of the media is beneficiary od Zardari and Nawaz political corrupt mafia and is on just one job..i.e to defend the corrupt and protect this corrupt system…

  • پاکستانی میڈیا کے کچھ میل اور کچھ فی میل طوائفوں کو اور فضلہ فضل الشیطان نطفہ حرام جیسے کچھ مذہبی طوائفوں کو انڈیا نے صرف اور صرف پاکستان کی فوج پر بھونک کر انڈیا کے سٹانس کو فروغ دینے کو رکھا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >