وسیم اکرم کی اہلیہ شنیرااکرم کا انگریزی جھاڑنے والی دونوں خواتین کو چیلنج

سابق قومی کرکٹر اور سوئنگ کے سلطان وسیم اکرم کی اہلیہ شنیرااکرم نے اسلام آباد میں ہوٹل کی مالکن دونوں خواتین جن کی اپنے منیجر کا مذاق اڑانے کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے ان کی اس حرکت کی مذمت کی اور اس منیجر کواپنا ہیرو قرار دیتے ہوئے ان دونوں خواتین کو چیلنج کیا کہ وہ آئیں اور ان کے ساتھ انگریزی بولیں۔

اسلام آباد کے ایک نجی ریستوران کی مالکن دو خواتین نے اپنے منیجر کو بلا کر پہلے اپنا اور اپنے منیجر کا انگریزی میں تعارف کرایا اور منیجر سے ان کے متعلق سوال پوچھتی ہیں جس پر منیجر کہتے ہیں کہ وہ تقریباً 9 سال سے اس ریستوران میں کام کررہے ہیں۔

ان میں سے ایک خاتون پوچھتی ہے آپ نے انگلش کی کتنی کلاسیں لی ہیں اور منیجر سے انگریزی میں اپنا تعارف کرانے کے لیے کہا جس پر منیجر ہچکچاتے ہوئے بمشکل ایک جملہ ہی بول پاتے ہیں۔

اس کے بعد خاتون نہایت توہین آمیز انداز میں ہنستے ہوئے منیجر کا مذاق اڑاتی اور کہتی ہے کہ یہ ہمارے منیجر ہیں جو ہمارے ساتھ 9 سال سے ہیں اور یہ وہ بہترین انگلش ہے جو یہ بولتے ہیں۔

ان دونوں خواتین کی اس ویڈیو کے بعد سوشل میڈیا پر انہیں خوب تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور لوگوں نے اس منیجر کی بھرپور سپورٹ کی، دیگر سوشل میڈیا صارفین کی طرح شنیرااکرم نے اس منیجر کی حمایت میں اسے اپنا ہیرو قرار دیا اور یہ ویڈیو اپنے انسٹاگرام کی سٹوری پر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ وہ دونوں آئیں اور شنیرا اکرم کے ساتھ انگریزی میں بات کریں ان کو چیلنج ہے۔

  • I don’t understand. If a manager level employee is with me for 9 years and can’t speak english properly – shame is on me! All of the word hotels and restaurants invest in staff training to improve the experience of their customers.

  • یہ دونوں خواتین چونکہ امیر ہیں اور شاید انگلینڈ وغیرہ میں جاکر ان کو چار لفظ آ گئے ہیں مگر شکل سے یہ دیہاتی اور ان پڑھ لگ رہی ہیں، مجھے تو ان کا معیار کسی طرح بھی میرا سے زیادہ نہیں لگا
    اور ہاں دولت جتنی بھی آجاے شکل صورت پر پھٹکار پڑی ہو تو دور نہیں کی جاسکتی

  • Could you tell me ladies How many Pakistanis can speak English? English is not our native language and English is just a language not a qualification. They pretend to make fake american accent. You don’t need to speak English with anyone. Everyone can understand Urdu and I am sure he is fluent in urdu period. These women are bitches that why I hate upper class or upper middle class women. Showing off.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >