اقرارالحسن نے سعید غنی کو چھوٹا انسان قراردیدیا، سعید غنی کے جوابی وار

سعید غنی سے ملاقات کا احوال۔۔اقرار الحسن نے سعید غنی کو چھوٹا انسان قرار دیدیا اور خواجہ سعد رفیق کو بڑا انسان قرار دیدیا۔۔

تفصیلات کے مطابق اقرارالحسن نے صوبائی وزیرتعلیم سعید غنی کو چھوٹا انسان قرار دیا تو سعید غنی نے بھی جوابی حملے کئے اور کہا کہ مجھ آپ سے کسی سند کی نہ ضرورت تھی اور نہ ہوگی۔ نہ میں آپکا شو دیکھتا ہوں اور نہ ہی مجھے آپ کا ماتھا چومنے کا کوئی شوق ہے۔

کچھ عرصہ قبل ایک واقعہ پر سعید غنی اور اقرارالحسن کے درمیان خوب گرماگرمی ہوئی۔ واقعہ کچھ یوں تھا کہ سندھ کے ایک سکول میں گدھے بندھے ہوئے تھے۔ اقرارالحسن نے سکول میں گدھوں کی تصاویر دکھائیں تو سعید غنی سیخ پا ہوگئے۔

اس واقعہ پر سعید غنی اور اقرارالحسن کے درمیان خوب گرما گرمی ہوئی۔ اقرارالحسن نے سعید غنی پر الزام لگایا کہ انہوں نے اس کو دھمکیاں دی ہیں اور شہر بھر میں وال چاکنگ کرادی ہے۔بعدازاں اقرار نے الزام لگایا کہ میری ٹویٹ کے بعد سعید غنی نے پولیس موبائلز کی مدد سے سکول سے گدھے نکلوادئیے ہیں جس کی اقرارالحسن نے ویڈیوز بھی شئیر کیں۔

گزشتہ روز اپنے تفصیلی ٹوئٹر پیغام میں اقرارالحسن نے سعید غنی سے ملاقات کا احوال سنایا۔ اقرارالحسن کا کہنا تھا کہ آج جہاز میں سعید غنی صاحب سے پہلی ملاقات ہوئی۔ میں کئی باتوں میں اختلاف کے باوجود انہیں ایک بڑے باپ کا بڑا بیٹا سمجھتا تھا لیکن آج اندازہ ہوا کہ وہ ایک چھوٹے انسان ہیں۔ میں اپنے دوست کے بتانے پر اپنی نشست سے اُٹھ کر خود ان کے پاس گیا۔ یہ بات میں نے خواجہ سعد رفیق سے سیکھی تھی

اقرار کا مزید کہنا تھا کہ ریلوے کارگو کرپشن پر پروگرام کے بعد ٹیم سرِعام اور اُس وقت کے وفاقی وزیر سعد رفیق کے درمیان اختلافات عروج پر تھے، لیکن لندن میں ایک تقریب میں وہ خود چل کر میرے پاس آئے، ہاتھ ملایا اور کہا اختلاف اپنی جگہ انسان کا اخلاق خراب نہیں ہونا چاہئیے

خواجہ سعد رفیق کی تعریف کرتے ہوئے اقرار نے کہا کہ پی ایس ایل کے لاہور میں ہونے والے ایک میچ میں بھی وہ خود میرے پاس آئے، میرا ماتھا چوما اور لیاری سے لڑکی کو بازیاب کروانے والے پروگرام پر شاباش اور مبارک دی۔ آج جب میں نے خود جا کر سعیدغنی صاحب سے ملنے کا سوچا تو مجھے اندازہ ہوا کہ خواجہ سعد رفیق نے کتنی بہادری کا کام کیا تھا۔

اقرارالحسن کا مزید کہنا تھا کہ بھر پور اختلاف کے باوجود وہ دو بار اپنے سے چھوٹی عمر کے اینکر کے پاس خود چل کر آئے تھے اور اس کے کام کو سراہا بھی تھا، سچ پوچھیں تو مجھے اپنی انا کو مٹا کر سعید غنی صاحب سے ہاتھ ملانے اور اُٹھ کر اُن تک جانے کے لئے بہت ہمت اور اپنے اندر بہت بہادری اکھٹی کرنا پڑی ۔

سعید غنی سے متعلق بات کرتے ہوئے اقرارالحسن نے کہا کہ میرے خلاف سندھ دشمن کا ٹرینڈ چلوانے والے سعید غنی جن کے حلقے کے اسکولوں میں آج بھی گدھے بندھے ہیں میرے اچانک سامنے آ جانے اور ہاتھ ملانے پر یا تو حواس باختہ ہو گئے تھے یا پھر شاید اُن کے چہرے پر تکبر اور غرور تھا۔ ہمارے درمیان جو گفتگو ہوئی اس کا خلاصہ یہ تھا۔

اقرار کے مطابق میں نے ان سےکہا کہ میں آپ کے بارے میں بہت خوش گمان ہوں، جہاں توقع زیادہ ہو وہاں سےکچھ غلط ہو تو تکلیف بھی زیادہ ہوتی ہے اس لئے آپ پر پہلے بھی تنقید کی ہے اور آئیندہ بھی مثبت تنقید کرتا رہوں گا، سعید غنی فرمانے لگے میں نے آپ کے لوگوں سے بھی کہا تھا کہ آپ نے جو کرنا ہےکرتے رہیں

آخر میں اقرارالحسن نے کہا کہ اس رویے اور اس جملے کے بعد میں نے ان سے دوبارہ ہاتھ ملانے اور واپس اپنی نشست پر ہی آنے میں عافیت جانی۔ میں نے ایک شخص کو سمجھنے میں غلطی کی تھی۔ ایسے ہی وزیر ہیں جن کی وجہ سے پیپلزپارٹی اور سندھ آج اس نہج پر ہیں۔ اللہ ان لوگوں کو ہدائیت دے اور سندھ کے عوام پر رحم فرمائے۔ آمین

اقرارالحسن کے الزامات کا جواب دیتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ بڑی مہربانی آپکی کہ آپ میرے پاش تشریف لائے لیکن میں نہیں سمجھتا کہ میں نے آپ سے کوئی غلط بات کہی تھی۔ آپ جب معذرت خواہ ہو رہے تھے اور یہ کہہ رہے تھے کہ میرے دل میں آپ کے لیئے کوئی بد گمانی نہیں ہوگی تو اس پر میں نے آپ سے کہا کہ میں دل میں بات رکھنے والا انسان نہیں ہوں

سعید غنی کا مزید کہنا تھا کہ اگر کسی سے لڑتا ہوں تو کھل کر لڑتا ہوں ورنہ دل میں برائی نہیں رکھتا اور آپ نے جو کچھ کیا وہ آپکا کام ہے آپ کرتے رہیں اور یہی بات میں نے آپ کے ان لوگوں سے بھی کہی تھی جو مجھ سے ملنے آئے تھے کہ آپ اپنا کام کرتے رہیں آپ نے جاتے ہوئے یہ بھی کہا پھر ملیں گے جسکی میں نے حامی بھری

صوبائی وزیر تعلیم نے مزید کہا کہ باقی مجھ آپ سے کسی سند کی نہ ضرورت تھی اور نہ ہوگی۔ نہ میں آپکا شو دیکھتا ہوں اور نہ ہی مجھے آپ کا ماتھا چومنے کا کوئی شوق ہے۔ ویسے میں نے آپکے ملنے کا ایک اچھا تاثر لیا تھا لیکن آپ نے تھوڑی ہی دیر میں میری غلط فہمی دور کرکے بتادیا کہ آپ کے متعلق میری پہلی رائے درست تھی

  • mubasher brook story abaout bhutoo family 8billions dollars in the bank of england he ever wrote letter to expalin but not chase again
    same this family looting and estabisment sit and watch looting sindh


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >