ڈسکہ ضمنی الیکشن میں ہار پر شہبازگل کی تاویلیں، سوشل میڈیا صارفین کی تنقید

ڈسکہ الیکشن میں ہار پر شہباز گل نے ماڈل ٹاؤن سانحہ کا قصہ دہرانے پر صارفین برہم

ڈسکہ الیکشن میں پی ٹی آئی ناکام ہوئی تو حکمران جماعت کے رہنما دفاعی بیان دینے لگے،معاون خصوصی شہباز گل کہتے پی ٹی آئی لیڈر کیلئے اخلاقیات جیتنےسے زیادہ اہم ہے، ورنہ اس ملک میں جیتنا کتنامشکل ہے؟شہبازگل نے ٹویٹ کیا کہ ہرصورت ہرقیمت پرجیتنےپریقین نہیں رکھتے،ہم جیت کرمعاشرہ ہارنا نہیں چاہتے۔

ٹویٹ پر شہباز گل نے ن لیگ اور پیپلز پارٹی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کبھی ن لیگ،پیپلزپارٹی کی حکومتیں ضمنی الیکشن ہاری تھیں؟ ماڈل ٹاؤن میں بھی ن لیگ جیتی تھی، ان معصوم خواتین کی چیخیں،جیتنےوالوں کی قبروں تک پیچھاکرنیوالی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ماڈل ٹاؤن میں بھی ن جیتی تھی،لیکن ان معصوم عورتوں کی چیخیں، جیتنے والوں کی قبروں تک ان کا پیچھا کرنے والی ہیں،کپتان اس سیاسی انتظامی آلودہ نظام کو تبدیل کرنے نکلا ہے۔اس میں عددی جیت ہار ہوگی-ہم ہر صورت ہر قیمت پر جیتنے پر یقین نہیں رکھتے،کیونکہ ہم جیت کر،معاشرہ ہارنا نہیں چاہتے۔

شہباز گل کے اس بیان پر صارفین نے خوب تنقید کردی،

ایک صارف نے لکھا کہ مسٹر شہباز گل آپکو بات کرنے کی تمیز نہیں ہے. جب بھی بات کرتے ہو ایسے لگتا ہے شدید فرسٹیٹ ہو،وزیراعظم کا معاون خصوصی لوگوں کو نکی باجی وڈی باجی کہہ کر بلاتا ہے،پر بات کرنے کی بجائے جگتیں کرتا ہے.
کل جب الیکشن رزلٹس آرہے تھے آپ کرکٹ ٹیم کے ساتھ جھول رہے تھے۔

حاجی پاشا نے تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کھسیانی بلی کھمبہ نوچے کے زریں مثال۔۔۔

ایک اور صارف نے لکھا کہ ان باتوں کو سن کر انسان روے یا ہنسے ۔ یہ لوگ پی ایم ہاؤس میں بیٹھ کر خان صاحب کے ساتھ ملک چلا رہے ہیں۔

عائشہ شیر نے لکھا کہ اپنی نالائقی اور بری کارکردگی کو چھپانے کے سب سے بھونڈے طریقے ہماری پارٹی کے لوگ کرتے ہیں،مشکل سے پیپلز پارٹی اور پنوتی لیگ کے چمچوں سے جان چھوٹی تھی، لیکن پتہ نہیں تھا اپنی پارٹی میں ڈوئیاں آ جانی ہیں۔

علہ صدیق نےکہا کہ سانحہ ساہیوال تو یاد کرلو

ایک اور صارف نے کہا کہ حکومت میں آنے کے بعد "ایک بار بھی” خان نے ماڈل ٹاؤن کا نام لیا ہو؟آخری سماعت کب ہوئی تھی اس کیس کی؟ کون اس کیس کو چلا رہا؟
اپنی نالائقی پہ پردہ ڈالنے کیلئے ماڈل ٹاؤن کے شہداء کو استعمال نہ کریں۔

گزشتہ روز ڈسکہ میں شیر کی دھاڑ گونجی، این اے پچھتر ڈسکہ ضمنی انتخاب کا میدان ن لیگ نے مار لیا، نون لیگ نوشین افتخار ایک لاکھ دس ہزار پچھتر ووٹ لےکرکامیاب ہوئیں جبکہ تحریک انصاف کے علی اسجد ملہی کو تیرانوے ہزار چار سو تینتس ووٹ مل سکے۔ نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نواز نے کہا جب بھی منصفانہ الیکشن ہوں گےجیت نون لیگ کی ہوگی۔

  • شہباز گل کو فالتو باتوں سے اجتناب کرنا چاہیے ھے کیونکہ پٹواریوں کی کھوپڑیوں میں اخلاقیات کے درس نہیں فٹ بیٹھتے یہ پٹواریوں کا قبیلہ وہ قبیلہ بن چکا ھے جو کہتا ھے کھاتا ھے تو لگاتا بھی ھے ان پٹواریوں کی موٹی عقل میں اب تک یہ بات نہیں بیٹھی ھے کہ اگر کھاتا ھے لگاتا ھے تو قرضوں کا بوجھ پٹواریوں سمیت پوری قوم پر پڑھتا ھے اس نواج گنگلو کے کھائی قبیلے پٹواریوں کی سمجھ میں یہ بات نہیں آئے گی


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >