قریشی سے منسوب غلط خبر پر ان کو کمIQ لیول کا انسان کہنے پر کلاسرا تنقید کی زد میں

 

وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی کی ذہانت پر سوال اٹھانیوالے معروف صحافی رؤف کلاسرا کی انویسٹی گیشن جرنلزم پر سوالات اٹھ گئے۔ بغیر سوچے سمجھے اور تحقیق کئے بغیر اخبار کا تراشہ شئیر کرکے شاہ محمودقریشی کو کم آئی کیولیول کا شخص قرار دیدیا۔

کچھ روز قبل پاکستان کے دورے پر آئے روسی وزیرخارجہ اور پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی کی ایک تصویر وائرل ہوئی جس میں روسی وزیر خارجہ نے ہاتھ میں چھتری اٹھارکھی تھی جبکہ شاہ محمود قریشی کے پیچھے ایک شخص چھتری لیکر کھڑا تھا جس پر رؤف کلاسرا سمیت صحافیوں اور سوشل میڈیا صارفین نے خوب شاہ محمودقریشی کو آڑے ہاتھوں لیا۔

آج ایک اخبار میں شاہ محمودقریشی سے منسوب ایک بیان شائع ہوا اس بیان کو لیکر رؤف کلاسرا نے وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی کو خوب تنقید کا نشانہ بنایا۔

شاہ محمود قریشی پر تنقید کرتے ہوئے رؤف کلاسرا نے کہا کہ یہ اس ملک کے وزیرخارجہ کی ذہانت اور IQ لیول ہے۔ ہم سب نے وہ تصویر ٹوئیٹ کی۔ کچھ شرمندہ ہونے کی بجائے ہمارے ملتانی پیر نے سب کو بھارتی سازش کہہ دیا۔

رؤف کلاسرا نے مزید لکھا کہ ہمارے اندر شرمندہ ہونے کی صلاحیت یا تو سرے سے موجود نہیں یا کب کی ختم ہوچکی ۔ اب اس چھتری ایشو پر شرمندگی بنتی تھی ڈھٹائی نہیں۔

دراصل یہ بیان شاہ محمودقریشی نے دیا ہی نہیں تھا بلکہ ایک صحافی کا فقرہ تھا کہ "چھتری والی ویڈیو انڈیا کی طرف سے وائرل ہوئی ہے”

ارشاد بھٹی نے بھی غلط رپورٹ ہوئے اخباری بیان کو لیکر شاہ محمود قریشی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ جی بالکل   چھتری والی تصویر وائرل کرنےکی سازش بھارت کی ہے۔ نہ صرف یہ بھارت کی سازش بلکہ روسی وزیرخارجہ سےکہہ دیا کہ اپنی چھتری خودپکڑیں اور یہ بھی بھارت کی سازش کہ آپ سےنظربچا کر ایک سرکاری ملازم کو چھتری دے کر کہا نئی شیروانی والےشاہ جی کو پتانہ چلےکہ انکی چھتری تم نےپکڑ رکھی ہے۔

یادرہے کہ رؤف کلاسرا متعدد مواقع پر ناقص معلومات اور سیاق وسباق کی بنیاد پر کالمز اور ویڈیوز بناچکے ہیں جس کی وجہ سے وہ تنقید کی زد میں رہتے ہیں ۔ ماضی میں رؤف کلاسرا جنگ کے ہی ایک نامکمل بیان پر عمران خان پر پوری ویڈیو کرچکے ہیں جبکہ کچھ سال قبل تحریک انصاف کے سوشل میڈیا صارفین نے ایک ویڈیو وائرل کی جس میں ایسا لگ رہا تھا کہ عمران خان کرونا وبا سے لوگوں کی تکلیف پر پریشان ہیں۔

لیکن یہ ویڈیو کئی سال پرانی نکلی۔ درحقیقت وہ ویڈیو بنی گالہ میں ایک میٹنگ کی تھی جس میں شاہ محمودقریشی تقریر کررہے تھے اور عمران خان کے تاثرات یوں تھے کہ وہ تقریر سے بور ہورہے ہیں۔

رؤف کلاسرا اور ارشاد بھٹی کے بغیر تحقیق کے ان ٹویٹس پر سوشل میڈیا صارفین مذکورہ صحافیوں کو خوب تنقید کا نشانہ بنارہے ہیں۔بعض سوشل میڈیا صارفین نے سوال اٹھایا کہ آخر کیا وجہ ہے کہ رؤف کلاسرا ہمیشہ شاہ محمودقریشی کو بلاوجہ نشانے پر رکھتے ہیں۔

  • Yeah Bhatti tou niri Tatti hay, hamary media nay bhi kesay kesay logo ko analyst bana diya hay, Bhatti nay bhi khud ko establishment say kareeb show kara kara k media myn apni value bana li hay…


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >