فرانسیسی سفیر کی ملک بدری کیلئے اجلاس، پیپلز پارٹی کا قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ

فرانسیسی سفیر کو تحریک لبیک پاکستان کے مطالبے پر ملک بدر کرنے کے لیے مذاکرات میں ملک سے باہر بھیجنے کا فیصلہ ہوا ہے جس کیلئے آج قومی اسمبلی کے اجلاس میں قرارداد لانے پر اتفاق ہوا ہے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ کسی معاہدے کو پارلیمان میں نہیں لایا گیا، حکومت نے سڑکوں پر ایکشن کیا اور کالعدم قرار دے دیا، لوگ قتل ہوئے، 500 سے زائد پولیس اہلکار زخمی ہوئے، انٹرنیٹ بند کردیا گیا، مگر وزیراعظم نے قومی اسمبلی میں کوئی بیان نہ دیا۔

حکومت کی جانب سے آج قومی اسمبلی میں فرانس کا سفیر نکالنے کی قرارداد لائی جارہی ہے اور اس سلسلے میں بلائے گئے اجلاس میں پاکستان پیپلز پارٹی نے اجلاس میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پی پی نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت نہ کرنے سے متعلق اپنے ارکان اسمبلی کو بذریعہ فون کال آگاہ کردیا ہے۔ پی پی قیادت نے ارکان کو واضح کیا ہے کہ اس سارے معاملے پر پاکستان پیپلز پارٹی غیر جانبدار رہے گی۔

نجی خبر رساں ادارے کا دعویٰ ہے کہ پیپلز پارٹی کے کچھ ارکان کی اس حوالے سے رائے تھی کہ اجلاس میں اپنا موقف رکھنے کے بعد بائیکاٹ کیا جائے لیکن بیشتر ارکان کی رائے کے پیش نظر قومی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

  • PPP kay leader kitney bahadur hain ye aaj sara Pakistan dekh le ga, Bilawal or Zardari jaiso kay liaey jo jhooti waseiat dikha kar party hijack kartey hain in jaiso kay liaey is tarha ka kaam karna asaan nahi. Aaj sari ki sari PPP waley chohey lug rahey hain

  • چلو جی۔۔۔۔۔ پتلی گلی سے نکل گیا۔۔۔
    یہ اپنے مغربی سپونسرز کے خلاف نہیں جا سکتے۔
    صرف ٹی وی پر آ کر ادھر ادھر کی ہانک کر چلے جاتے ہیں۔

  • This coward Hijra Billo Rani is escaping from crisis.
    Instead of helping the state of Pakistan, PPP has chosen to escape from crisis without thinking the would be fallout from entire EU if wrong decision taken in parliament.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >