میراثی کہنے پر گلوکار جواد احمد سوشل میڈیا صارفین پر برس پڑے

میراثی کہنے پر گلوکار جواد احمد سوشل میڈیا صارفین پر برس پڑے

گلوکار جواد احمد سوشل میڈیا پر میراثی کہنے کی وجہ سے صارفین پر برس پڑے انہوں نے ٹوئٹر پر کہا کہ پی ٹی آئی کے لوگ باربار میرے لیے لفظ میراثی استعمال کر رہے ہیں جومیں نہیں ہوں۔

گلوکار نے کہا کیونکہ گانا میرا آبائی پیشہ نہیں ہے۔ میرے والدین پروفیسر تھے مگر جن کو فن میراث میں ملا ہے میں ان کی بہت عزت کرتا ہوں۔

چیئرمین برابری پارٹی جواد احمد نے مزید کہا جس طرح یہ لوگ یہ لفظ بول رہے ہیں تو پھر عمران خان بھی میراثی ہے اور پوری تحریک انصاف بھی جو 126 دن دھرنوں میں گاتے اور ناچتے رہے۔ یعنی سلمان احمد، روحیل حیات، عطااللہ عیسیٰ خیلوی، شان اور وہ سب ایکٹر اور سنگر جو عمران خان کو سپورٹ کرتے ہیں وہ بھی پی ٹی آئی کے لوگوں کے مطابق وہ سب کچھ ہوئے جو میں یہاں لکھنا نہیں چاہتا مگر جو لکھا جاتا ہے۔

گلوکار نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ آرٹسٹ عمران خان کے سیاست میں مذہب کے بےجا استعمال کے بارےمیں واضح اور ٹھوس موقف اپنائیں۔

جواد احمد نے کہا پاکستان ایک بہت خوبصورت ملک ہے۔ یہاں سنی، شیعہ، بریلوی، دیوبندی، اہل حدیث، آغاخانی، مسیحی، ہندو، سکھ، پنجابی، سندھی، پختون، بلوچ، کشمیری وغیرہ سب بستے ہیں۔ یہ اپنےاپنے طریقے سے مذہبی بھی ہیں اوریہاں فن، ادب، شاعری، کھیل بھی ہے۔

انہوں نے شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان سیاست میں مذہب استعمال کر کے پاکستان میں انتشار پھیلا رہے ہیں۔

انہوں نے تحریک انصاف کے ڈپٹی سیکرٹری انفارمیشن ہنس مسرور کی ٹوئٹ کوٹ کرتے ہوئے کہا کہ اس آدمی کی حالت دیکھو۔ یہ عمران خان کے دھرنے میں ناچنے والا میرے سے بات کر رہا ہے۔ تم لوگوں کو تو تھوڑی بہت شہرت ہی عمران خان کی خوشامد کر کے ملی ہے۔

انہوں نے تحریک انصاف کے اس کارکن سے کہا کہ اس شہرت کو انجوائے کرو۔ میں نےایک مشن کے تحت20سال اس ملک میں کام کیا ہے تاکہ اس اشرافیہ کے بنائے ہوئے نظام کو چیلنج کیا جائے۔ تم لوگ اب اپنی خیرمناؤ۔

  • پیُ ٹیُ ائی والو بہت بری بات ہے اس جواد احمد کو میراثی کہنا
    بہت زیادتی ہے
    اسکی جگہ کوئی بھی بندہ ہوتا تو پی ٹیُ آئی والوں کو برا بھلا ضرور کہتا
    پی ٹیُ آئی۔ والوںُ کو شرمُ انی چاہئے شرم۔ سے ڈوب مرو
    جو ایک فنکار ایک خاندانی فنکار جدی پشتی فنکار اور کنجر کو آپ میراثی بول کر ایک خاندانی کنجر کی توہینٗ کرتے ہو اسکا رتبہ کنجر سے ہٹا کر صرف میراثی کہنا اس خاندانی کنجر اور فنکار کی توہین ہے
    شرم۔ کرو پی ٹیٗ آئی والو اور میں تمُ لوگوںٗکو وارن کت رہا ہوں جس آئندہ اس خاندانی کنجر کو میراثی کہ کر اس کی توہین کی
    تو مجھ سے بچ کر رہنا

    • جس بات پے رو رہا ہے ٹویٹ کے آخر میں ووہی بات عمران خان
      کے بارے میں کہ بھی رہا ہے پھر تم میں اور تمہیں گالیاں دینے
      والوں میں فرق کیا ہے جواد مینٹل کیس ہے حسد کی بیماری ہے اس کو

    • اج میرا نچنے نو دل کردا۔۔۔۔۔۔۔

      پھر بھی اپنے آپ کو اشرافیہ اور مہذب لوگوں میں شمار کریں، شرم نہیں آتی؟؟؟؟

    • میراثی تو پھر بھی ایک پیشہ ھے لیکن یہ جواد اب میراثی کے رتبہ کو کراس کر گیا ھے اور آج سے یہ ترقی کر کے کنجروں کی لسٹ میں شامل ہوگیا ھے آج سے اس کا پیشہ بڑھ گیا ھے اور اس کے نام کے ساتھ کنجر میراثی اور کمینہ خبیث لعنتی لکھا جائے تو یقیناً اس کو خوشی ہوگی یہ کنجر میراثی بہت بھونکتا ھے کیونکہ اب اس نے اپنی اصلی خصلت کنجر میراثی ثابت کر دی ھے اب اس میں کیا ھے

  • کنجر ُکو میراثی کہنا ایک کنجر کے ساتھ شیادتئ ہے اور پھر جواد احمد جیسے اصلی خاندانی کنجر کو صرف میراثی کہا جواد کے ساتھ زیادتئ ہے

  • ویسے جاہلوں کو پتا نہیں کیوں پی ٹی آی کے لوگ سمجھا جاتا ہے
    جبکہ
    اس نسل کی تربیت نواز چور اور زارداری ڈاکو نے کی ہے
    یہ نواز چور اور زرداری ڈاکو کی قوم ہے پی ٹی آیی کو صرف ووٹ دیتے ہیں
    پی ٹی آی کی نسل ان سے کم از کم بہتر ہو گی کیوں کے عمران خان نے
    کبھی نہ بینظیر کی تصویریں بنائی ہیں نہ کبھی اس کے لوگوں تنظیم سازی کرتے
    ہوے پکڑے گئے ہیں

  • جواد احمد نے سارے مذاہب کا نام لیا. احمدیوں کا ذکر نہیں کیا. محض اتفاق ہے یا کچھ اور؟. ویسے ختم نبوت کے بارے میں ان کا عقیدہ کیا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >