شادی کرنا ہی کیوں ضروری ہے؟ پارٹنر کیوں نہیں رہا جاسکتا؟ ملالہ یوسفزئی

لڑکیوں کی تعلیم کیلئے آواز بلند کرنے والی سوات کی گل مئی ملالہ یوسفزئی کی شادی اور محبت کے حوالے سے کیا سوچ ہے،انہوں نے برطانوی فیشن میگزین ووگ کو انٹرویو میں دل کی بات بتادی، انٹرویو میں جب تیئیس سالہ کم عمر ترین نوبل انعام یافتہ ملالہ سے شادی اور محبت کے حوالے سے پوچھا گیا تو پہلے انہوں نے کوئی واضح جواب نہیں دیا۔

دوسری بار شادی اور محبت کے حوالے سے سوال پوچھے جانے پر ملالہ یوسفزئی نے، اپنی سوچ اور دل کی بات عیاں کردی، ملالہ نے کہا کہ مجھے ابھی تک سمجھ نہیں آتا کہ لوگوں کو شادی کیوں کرنا ہے؟ اگر آپ اپنی زندگی میں کسی کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں تو نکاح نامے پر دستخط کرنے کی کیا ضرورت ہے؟ صرف پارٹنر بن کر کیوں نہیں رہ سکتے؟

ملالہ نے بتایا کہ ان کی والدہ ہمیشہ انہیں شادی کی خوبصورت رشتے کے حوالے سے بتاتی رہتی ہیں، اور ان کے والد کے پاس ایسے لوگوں کی ای میلز آتی ہیں جو انہیں اپنی جائیداد اور پیسوں کے بارے میں بتاکر مجھ سے شادی کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہیں۔

شادی اور کسی کے ساتھ محبت کے رشتے کے حوالے سے ملالہ نے کہا کہ اس بات کا یقین کرنا مشکل ہے کہ آپ جس شخص کا انتخاب کرتے ہیں وہ قابل اعتماد ہے،خاص طور پر کسی کے ساتھ تعلقات کے بارے میں سوچنا بہت مشکل ہے، آپ جانتے ہیں کہ سوشل میڈیا پر ہر کوئی اپنے تعلقات کی کہانیاں شیئر کررہا ہے، اور آپ پریشان ہوجاتے ہیں کہ آپ کسی پر بھروسہ کرسکتے ہیں یا نہیں؟ اور آپ کو کیسے کسی پر یقین ہوسکتا ہے؟

نوبل انعام یافتہ ملالہ نے کہا کہ آکسفورڈ یونیورسٹی میں وہ ایک ایسی طالبہ کے طور پر رہنا چاہتی تھیں، جو دیگر طلبہ کے ساتھ گھل مل کررہے،کسی ایسی شخصیت کے طور پر نہیں جو ٹی وی پر نظر آتی تھی، اپنی عمر کے لوگوں کے ساتھ وقت گزارنا چاہتی تھی، اسلئے دوران تعلیم وہ دوستوں کے ساتھ گھومتی پھرتی تھیں، وقت گزارتی تھیں کھاتی پیتی تھیں،ملالہ نے کہا کہ وہ اپنے پشتون ثقافت کی مہمان نوازی کو اجاگر کرنا چاہتی تھیں۔

ملالہ یوسفزئی نے ووگ کو انٹرویو میں ثقافتی طور پر اپنے لباس کی اہمیت پر تبادلہ خیال کیا،اپنے اسکارف کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں ملالہ نے کہا کہ یہ ان کے عقیدے سے زیادہ ہے،یہ ہمارے لئے پشتونوں کی ثقافتی علامت ہےلہذا یہ نمائندگی کرتا ہے کہ میں کہاں سے آئی ہوں

ہم مسلمان لڑکیاں، پشتون لڑکیاں یا پاکستانی  لڑکیاں ، جب اپنے روایتی لباس پہنتی ہیں تو ، ہمیں مظلوم ، یا بے آواز ، یا مردوں کی سرپرستی کے تحت زندگی گزارنے والا سمجھا جاتا ہے، لیکن میں ہر ایک کو بتانا چاہتی ہوں کہ آپ اپنی ثقافت کے اندر اپنی آواز بن سکتے ہیں اور آپ کو اپنی ثقافت میں مساوات مل سکتی ہے۔

ملالہ فی الحال ایپل کمپنی کے ساتھ کام کر رہی ہیں،انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ وہ ایپل کپمی کے ساتھ اشتراک سے ایسا مواد تیار کریں گی جس سے لوگوں کو ہنسانے میں مدد ملے اور لطف اندوز ہوں،برطانوی میگزین ووگ کو انٹرویو میں انہوں نے بتایا کہ وہ چاہتی ہیں ان کا شو تفریح ​​بخش ہو،ملالہ یوسفزئی کی پروڈکشن کمپنی ایکسٹرا کریکیولر نے ایپل ٹی وی کے ساتھ شراکت داری کررکھی ہے۔

ملالہ یوسفزئی کے انٹرویو میں ان کے آکسفورڈ یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد ، ان کے مستقبل ، محبت اور شادی کے حوالے سے تفصیلات شامل ہیں، ملالہ یوسفزئی کو ووگ میگزین کے سرورق کا حصہ بھی بنایا گیا ہے، میگزین آئندہ ماہ منظرعام پر آئے گی،انٹرویو میں سابق امریکی خاتون اول مشیل اوباما ، ایپل کے سی ای او ٹم کوک اور ملالہ کے سب سے اچھے دوست کے مختصر بیانات بھی شامل ہیں۔

برطانوی میگزین ووگ کے سرورق پر تصویر کے حوالے سے ملالہ نے ٹویٹ میں لکھا کہ انہیں برطانوی میگزین ووگ کے سرورق پر آکر بہت خوشی ہوئی،وہ جانتی ہیں کہ ایک نوجوان لڑکی جس کا کوئی مشن ہو جس کا کوئی نظریہ ہو اس کے دل میں کتنی طاقت ہوتی ہے اور میں اُمید کرتی ہوں کہ جو بھی لڑکی یہ کور دیکھے گی اس کو اندازہ ہوگا کہ وہ بھی دنیا تبدیل کرسکتی ہے۔

ملالہ یوسفزئی کو دوہزار چودہ میں نوبل انعام سے نوازا گیا، اور وہ اب تک کی سب سے کم عمر نوبل انعام یافتہ ہیں،ملالہ کا مشن ہرطبقے کی لڑکی کیلئے تعلیم عام کرنا ہے، انہوں نے گذشتہ سال آکسفورڈ یونیورسٹی میں فلسفہ ، سیاست اور معاشیات کی ڈگری مکمل کی ہے۔

  • In Islam signing a Nikah nama is not necessary. What necessary is that Male and Female partners announce that they are husband and wife in presence of 2 adult witnesses. It’s absolutely fine but against our culture and local laws that you don’t sign a paper of Nikah.

    But I think what Malala is promoting is not marriage probably she is against islamic concept of marriage and family institution.

  • رسول پاک یا آپ کی اولاد اور آگے انکی اولاد کے نکاح ہوے تھے مگر کسی پیپر پر سائین نہیں ہوے تھے
    شائد ملالہ یہ کہنا چاہرتی ہو کہ کوی پیپر سائین نہ کیا جاے تاکہ میاں بیوی ایک دوسرے کو ناپسند کریں تو چھوڑ کر چلے جائیں، نکاح بہت آسانی سے ہوجاتا ہے دو گواہ اور بس

    • ببر صاحب یہاں ملاله صاحبہ نکاح کی ضرورت پر سوال اٹھا رہی ہیں ، آپ شائد لفظ پارٹنر شپ کے اصل مفھوم سے واقف نہی. نکاح چاہے دستخط کے ساتھ ہو یا اس کے بغیر ، طلاق کے اصول وہی رہتے ہیں ، چھوڑ کے جانے کا تصور کسی نکاح کے بغیر والے معاملے پر ہی فٹ اتا ہے

      • Finally a correct answer, I see these Indians coming up with a picture of general signing surrender papers, but that’s a one instance in over 1200 years or more? Where muslim rulers ruled indo-pak subcontinent and the those rulers allowed them to live in peace, and Yeh kaddu Kuch Na Ker sakay or ghulami kretay rahay. bloody indians.

    • if you speak your mind, you are an indian agent.
      I am a Pakistani, but I tell you the reason Pakistan is in this condition is because of all the comments you see here. this is the mindset of most of the people.

      Malala is my hero, if or when I have a daughter, I hope and pray to God she is as awesome as Malala is.

      #IamMalala

  • ہاہاہا ہاں ناں ؟ شادی کرنا کیا ضروری ہے…پارٹنر بن کر بھی رہا جا سکتا ہے
    لڑکا ہو یا کوئی لڑکی……اب اس میں کیا

  • ye Noble prize winner het aur Pathanoun ki aurat hey……kehtee hey ke Partner rahoo aur shaadi na kerooo…ouper se apney ku Muslmaan bhi kehtee hey……..lagta hey es ki daanni bhi garam hu rahii hey…………aur ye uss ku thundaa kernaa chahtee hey…..

  • بغیر نکاح ساتھ رہنے والی بات کے بارے میں تو بہت لوگوں نے کامنٹس کیے لیکن ایک دوسری بات کی طرف بھی قابل توجہ ہے
    وہ "دوپٹہ یا پردہ” ہے، جسے یہ لڑکی اسلام سے بڑھ کر اپنی ثقافت کے طور پر زیادہ اہمیت دیتی ہے، یعنی یہاں بھی اسلامی ویلیو اتنی اہم نہیں جتنی اہم اپنی "ثقافت” ہے! کوئی اس سے یہ پوچھے پھر وہ تمام ثقافتی روایات جو عورت یا مرد کے حقوق کا استحصال کرتی ہیں وہ بھی یقیناً تمہیں عزیز ہوں گی، کیونکہ آخر وہ بھی تو "ثقافت” کا حصہ ہیں؟ جب خدا دین لیتا ہے تو عقل بھی باقی نہیں رہیتی

  • Terhe mooh wali ko vogue pe lagane se us ka mooh seedha nahi ho jaega. Ugliness of her soul is reflecting on her face. She looks like a wicked old woman even though she is so young.

    • نہ جانے کیوں ملالہ،مریم نانی 420 اور رحم خان کا بچپن ملتا جلتا لگتا ھے ایک جیسی ذہنیت کی یہ خواتین ہیں ایک جیسی خواہشات رکھتیں ہیں اب اس میں کیا ھے

  • She is a wich, and act like a puppet and her Control is those people who are made by Zinnah, because if they are came into life by real birth then they didn’t promote her as like wich against Pakistan and our beloved religion Islam, so I call her a wich who haven’t leave any single issues for controversial our religious and cultural matters

  • پھر جس طرح یورپ میں ہوتا ہے ۔ مرد ٹائم پاس کر کے روانہ ہو جاتا ہے اور پھر ماں بچے سنبھالتے پھرتی ہے۔ نکاح مرد کو احساس ذمے داری دلاتی ہے۔ اور یہی میرے رب کا حکم بھی ہے۔

  • siasat.pk nay bhi bus views lenay k liye misleading kisam k caption aur article likhnay start krdiye hayn, pata nhi usnay kiya kaha hoga, magzine nay kiya print kiya hoga , abhi magzine next month aana hay aur siasat pk walon nay pahlay hi copy nikalwa k yahan post bhi dal di hay, cheap harkat apnay few views k liye,….

  • NOT ONLY 1 BUT 3-4 PARTNERS AT A TIME, ONE FOR MORNING FUCK, 2nd FOR LUNCH IN BATHROOM, 3rd FOR EVENING QUICKE AND 4th FOR NIGHT ROMPING…. THAT’S WHAT SHE THINKS ALL THE TIME??????


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >