سوشل میڈیا کا مثبت پہلو ، راولپنڈی پولیس اور سوشل میڈیا نے خودکشی کرتے نوجوان کو بچا لیا

سوشل میڈیا پر کی گئی کسی بھی پوسٹ پر فوری ردعمل موصول ہوتا ہے اور اسی وجہ سے تصاویر اور ویڈیو کلپ وائرل ہو جاتے ہیں۔ لیکن حال ہی میں اس کا ایک مثبت پہلو بھی سامنے آیا ہے جس میں راولپنڈی کے ایک نوجوان نے سوشل میڈیا پر خودکشی کرنے جیسے سنگین اقدام کی پوسٹ کی جسے پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے بچا لیا۔

اس نوجوان کے ٹویٹ کے بعد یہ پیغام سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیا اور دیگر صارفین اسے سمجھانے بجھانے میں لگ گئے نتیجے کے طور پر یہ اس انتہائی اقدام سے رُک گیا اور اس کی جان بچ گئی۔

اس صارف نے ذہنی دباؤ اور ذاتی معاملات میں مایوسی کے باعث خودکشی سے متعلق ٹوئٹ کی صارفین نے اسے کوٹ کر کے سمجھانے کی کوشش کی اور محبت بھرے پیغامات بھیجے۔

گلا لئی خان نے کہا کہ باتیں کرو اور زیادہ مت سوچو اگر کوئی منفی خیال آتا بھی ہے تو اسے ذہن سے نکال دو۔ تم بہت مضبوط اعصاب کے مالک ہو جو منفی خیالات اور احساسات پر قابو پا سکتا ہے۔ تم نے یہ سب صرف لوگوں کی توجہ پانے کے لیے نہیں کیا تھا تم تو بہت اچھے بچے ہو۔

سیدہ بریرہ نے کہا کہ زوہیب بیٹا ایسا مت کرنا کیونکہ آگے پوری زندگی پڑی ہے جو کہ بہت خوبصورت ہے۔ ہر کوئی تمہارے لیے پریشان ہے۔ آؤ سب مل کر شغل لگاتے ہیں چائے پیو ابھی تو تمہاری 15 سال عمر ہے۔

عبدالرحمان نے کہا کہ سب لوگ ری ٹویٹ کریں تاکہ پتا چل سکے کہ زوہیب کو لوگ کتنا چاہتے ہیں۔

سومو نے کہا کہ زوہیب خود کو کچھ مت کرنا اس مسئلے کو مات دے کر دوسروں کےلیے مشعل راہ بنو اپنے اندر کےڈر کو مارو اور منفی خیالات کو جانے دو۔

دئیم نے کہا کہ جس حالت سے تم گزر رہے ہو وہ حالات گزر جائیں گے۔ یقین جانو دنیا یہاں ختم نہیں ہوتی ہے تم ابھی بہت بڑے ہو گے اور دیکھنا مستقبل کتنے خوبصورت ہوگا۔

فجر رب نواز نے کہا کہ ہم سب تمہیں بہت پیار کرتے ہیں۔ ہم تمہارے ساتھ ہیں اور ہمیشہ تمہارے لیے یہاں موجود ہیں۔

ایلی نے کہا کہ وہ ہمیشہ زوہیب کے لیے موجود ہے وہ بطور ایک دوست اور کسی بڑے کے طور پر ہر وقت اس کے لیے حاضر ہیں۔ زوہیب تم کمزور نہیں ہو یہ سب گزر جائے گا۔

یہ واقعہ جب پولیس کے علم میں آیا تو راولپنڈی پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے زوہیب کو بچا کر حفاظتی تحویل میں لے لیا۔

بعدازاں زوہیب نے خود ٹوئٹ کیا کہ وہ بخیریت ہے اور بحریہ ٹاؤن آیا تھا اس نے صارفین سے گزارش کی کہ اس کے گھر کے باہر رش مت لگائیں وہ کچھ ہی دیر میں گھر پہنچ جائے گا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>