حامد میر کی معافی پر سوشل میڈیا پر دلچسپ تبصرے اور میمز

سینئر صحافی و اینکر پرسن حامد میر نے گزشتہ دنوں دیے گئے فوج مخالف بیان پر معذرت کرلی ہے، انہوں نے کہا کہ میرے الفاظ سے پہنچنے والی تکلیف پر میں تہہ دل سے معذرت کرتا ہوں۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی اسلام آبادیونین آف جرنلسٹس (آر آئی یو جے)کی جانب سے جاری کردہ ایک مراسلے میں لکھا گیا ہے کہ سینئر صحافی و اینکر پرسن نے گزشتہ دنوں اپنی ایک تقریر میں ریاستی اداروں کو تنقید کا نشانہ بنانے پر معذرت کرلی ہے۔

مراسلے کے مطابق آر آئی یو جے اور نیشنل پریس کلب کی کمیٹی نے حامد میر سے 28 مئی کی تقریر کے حوالے سے ایک ملاقات کی، ملاقات کے دوران حامد میر نے کمیٹی کے سامنے اپنی تقریر کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنی تقریر میں کسی کا نام نہیں لیا نہ ہی فوج سے میری کوئی لڑائی ہے۔میں فوج کا بحیثیت ادارہ احترام کرتا ہوں، میری تقریر کا مقصد ہر گز کسی کی دل آزاری یا کسی کے جذبات کو ٹھیس پہنچانا نہیں تھا”۔

سوشل میڈیا صارفین کی اکثریت نے حامد میر کا معافی نامہ مسترد کردیا اور کہا کہ حامد میر کو کسی صورت معافی نہیں ملنی چاہئے۔ حامد میر کے معافی نامے پر سوشل میڈیا صارفین حامد میر پر طنزیہ فقرے بازی کرتے اور دلچسپ میمز شئیر کرتے رہے۔

سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ لگتا ہے کہ حامد میر کی اکڑ نکل گئی ہے۔ کوئی محب وطن پاکستانی حامد میر کیساتھ کھڑا نہیں ہوا۔ سوشل میڈیا صارفین نے مطالبہ کیا کہ حامد میر کا معافی نامہ مسترد کیاجائے اور نہ صرف حامد میر بلکہ عاصمہ شیرازی کے خلاف بھی کاروائی کی جائے۔

صدیق جان نے تبصرہ کیا کہ معافی مانگنے کے بعد والا حامد میر ،معافی مانگنے سے پہلے والے حامد میر سے زیادہ خطرناک ہوگا، اعلامیہ

حامد میر کے فیس بک پیج انڈیا سے چلانے کا دعویٰ کرنیوالے بلاگر مخدوم شہاب الدین نے تبصرہ کیا کہ اب وہ انقلابی کہاں جائیں گے جن کو نوازشریف کے بعد حامد میر نے بھی دھوکہ دے دیا؟

زہرہ فاطمہ نے حامد میر پر دلچسپ میمز شئیر کی جس میں حامد میر کان پکڑ کر اٹھک بیٹھک کررہے ہیں اور بیک گراؤنڈ میں آرمی چیف کی مسکراتے ہوئے کی تصویر بھی نظر آرہی ہے۔

وقار ملک نے تبصرہ کیا کہ اے پیا جے انقلاب۔۔۔حامد میر نے معافی مانگ لی مگر میرے پیارو اگر اس کو اب این آر او دیا تو عوام ناراض ہو جائے گی۔

سالار سلطان زئی نے لکھا کہ حامد میر کا معافی نامہ! آخر میں شبنم بننا ہو تو سلطان راہی والے ڈائیلاگ نا بولا کریں بھائی!

محمد اکرم نے لکھا کہ حامد میر نے نیشنل پریس کلب کے سامنے صحافیوں سے خطاب کیا۔ انتہائی تکبر اور رعونت سے پاک فوج کی تضحیک کی جسے ساری دنیا نے سنا۔ یوٹیوب پر ویڈیوز موجود ہیں۔ آر آئی یو جے کی پریس ریلیز مذاق ہے۔ حامدمیر نیشنل پریس کلب کے سامنے پھر صحافیوں سے خطاب کرے اور قوم و پاک فوج سے معافی مانگے۔

عنبرین نے ایک شعر شئیر کرکے تبصرہ کیا کہ حامد میر نے پاک فوج کو خط لکھا ہے اور کہا ہے ۔۔۔۔ یہ میرا پریم پتر پڑھ کر کے تم ناراض نہ ہونا ۔۔۔ کہ تم میری زندگی ہو، کہ تم میری بندگی ہو

علی رضامنگی نے مشورہ دیا کہ حامد میر کمزور ہوگیا ہے۔ اسے معاف کرکے طاقتور نہیں بنانا چاہیے۔ یہ ایسی حرکت پہلے بھی کرچکا ہے. اسے عبرت کا نشان بنانا چاہیے۔

اختر علی نے لکھا کہ میں اختر علی حامد میر کی غیر مشروط معافی نامہ کو مسترد کرتا ھوں۔ کیونکہ اس نے میری جان سے پیاری پاک فوج کو گالی دی ھے۔ میرے پیارے ملک پاکستان کو گالی دی ھے۔

عباس آرائیں نے تبصرہ کیا کہ سانوں نہر والے پُل تے بُلا کے تو خورے ماہی کتھے رہ گیا۔ پی ایف یو جے کے صحافیوں کا حامد میر کیلیے گانا گایا جا رہا ہے

  • اس حرامزادے کے سر اور تشریف پر لتر لگانے کے ساتھ چنونوں کی دوائی دیکر حکیمی جلاب دیں تاکہ اوپر سے نیچے تک مکمل صفائی ہو اور ذہنی خباثت بمعہ جسمانی غلاظت صاف ہو .


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >